الغزالی

جنوری
12
by محمدداؤدالرحمن علی at ‏9:04 PM
(183 مناظر / 1 پسند کردہ)
7 تبصرہ جات
ایک چراغ اور بجھا!!!!!
موت العالم موت العالم
ملک پاکستان کی مشہور علمی وروحانی شخصیت،فاضل جامعہ مظاہرالعلوم،شاگرد رشید حضرت مولانا زکریاکاندھلویؒ
حضرت مولانا حمداللہ جان 105 برس کی عمر میں انتقال فرمائے۔
اناللہ وانالیہ راجعون
جنوری
12
by احمدقاسمی at ‏7:07 PM
(99 مناظر / 1 پسند کردہ)
0 تبصرہ جات
بسم اللّٰہ الرحمن الرحیم​
حدود حرم کی پہچان:یعنی حرم کے قریب قرآن کی نشانی کا گیٹ بنا ہوا ہے ، وہاں سے حرم شروع ہو جاتا ہے۔یہ دعا پڑھیں"اے اللہ! تو ہم سے راضی ہو جا یہ تیرے اور تیرے رسول اکرم ﷺ کا حرم ہے ، یہاں کی حاضری کی برکت سے میرے گوشت ،میرے خون، میری جلد، اور میری ہڈیوں کو دوزخ کی آگ حرام کر دے اور قیامت کے دن اپنے عذاب سے مجھے امن میں رکھ دے "۔اے اللہ! اپنے ولیوں اور اطاعت گذار بندوں میں شامل کر دے اور میری طرف تو جہ فرما ۔ بیشک تو توبہ قبول کر نے والا بڑا کریم ہے کرم کر نے والا بڑا رحم کر نے والا ہے۔
مکہ معظمہ شہر میں داخلہ کی دعا: اے اللہ ! مجھے اپنے پاک شہر میں اطمینان سے رہنا نصیب فر ما ،یہاں کے حقوق اورآداب کی تو فیق دے۔اے اللہ ! میں تیری بندی ہو ں ، تیرا فرض ادا کر نے تیری رضا اور رحمت کا طالب بن کر آئی ہوں ،اپنی رحمت کے دروازے کھول دے اس عمرہ کو اور حج کو صحیح طریقے سے ادا کرادے قیامت کی معافی اور بخشش میرے لئے مقدر فر ما ،آمین اب لَبَّیْک پڑھتے جا ئیں اور بار بار "لَبَّیْک" پڑھیں۔ وضو کر کے مسجد حرم میں سیدھا پاؤں اندر رکھئے اوربسم اللّٰہ الرحمن الرحیم...
جنوری
12
by احمدقاسمی at ‏10:39 AM
(91 مناظر / 0 پسند کردہ)
0 تبصرہ جات
امام غزالی کی ایک مفید نصیحت​
امام غزالی رحمۃ اللہ فرماتے ہیں کہ عہد ماضی میں عوام کی گمراہی کا باعث بعض مرتبہ خود اہل حق کا تعصب بن گیا ہے۔ انہوں نے حق کی حمایت میں ناحق جماعت کو بنظر حقارت اور نفرت دیکھا ،جاہلوں نے صرف ان کی ضد میں اپنے جہل و عناد میں اور تشدد اختیار کیا ۔شدہ شدہ یہ وقتی ضد دائمی عقائد بن گئے حتیٰ کہ کلام اللہ کے حدوث و قدم کے مباحث میں یہاں تک مبالغہ آمیز یاں ہوئیں کہ جو آواز انسان کے حلقوم سے نکلتی ہے، اس کو بھی قدیم کہہ دیا گیا۔کاش اگر یہ مقابلے ومناظر نہ ہوتے تو یہ بے معنیٰ کلمات جو بعد میں عقائد بن گئے شاید کسی مجنوں کی زبان سے بھی نہ نکلتے (ترجمان السنۃ)
جنوری
07
by احمدقاسمی at ‏11:10 PM
(121 مناظر / 0 پسند کردہ)
1 تبصرہ جات
گذشتہ لکھنؤ کی شادیاں(شان اودھ) 1​
نئے گھروں میں جب پیام جاتا ہے تو اکثر لڑکا اپنے چند عزیزوں اور مخصوص دوستوں کے ساتھ بر دکھاوا کے نام سے دلہن والوں کے ہاں بلایا اور ایسی جگہ بٹھایا جاتا ہے جہاں سے عورتیں بھی اسے تاک جھانک کے دیکھ سکیں۔ گھر والے مرد جمع ہو کےاس سے ملتے اور حسب حیثیت خاطرمدارات کرتے ہیں۔ اسی طرح لڑکے کی ماں بہن ایک مقررہ تاریخ پر دلہن کے گھر جاتی اور مٹھائی کھلانے یا کسی اور بہانے سے دلہن کا چہرہ دیکھتی ہیں جوعام طور پر ان سے چھپائی اور پردے میں رکھی جاتی ہے مگر بلبعض شریف گھر والوں میں دل نہیں بلایا جاتا بلکہ خاندان کے مرد کسی نہ کسی عنوان سے لڑکے کی لا علمی میں اسے دیکھتے اس کا حال دریافت کر لیتے ہیں اور یوں ہی لڑکی کی حالت کا بھی پتا لگایا جاتا ہے ان طریقوں سے لڑکے والے لڑکی کو لڑکی والے لڑکے کو پسند کرلیتے ہیں۔ جس میں صورت شکل ،حالت وحیثیت کے علاوہ شرافت خاندان کو بھی بہت کچھ دخل ہوتا ہے، تو منگنی کی رسم عمل میں آتی ہے جس میں دولہا کی طرف سے مٹھائی جاتی ہے، پھولوں کا گہنا جاتا ہے اور ایک سونے کی انگوٹھی جاتی ہے جسے بعض گھرانوں میں...
جنوری
05
by احمدقاسمی at ‏4:27 PM
(4 مناظر / 1 پسند کردہ)
0 تبصرہ جات
خواب کی حقیقت​
بعض علمائے تعبیر نے کہا ہے کہ انسان خوابوں کوروح کے ذریعے دیکھتا ہے اور عقل سے سمجھتا ہے۔ روح کا مستقر وسطِ قلب ہے اور قلب کا تعلق دماغ سے ہے۔ روح نفس کے ساتھ معلق ہے۔ چنانچہ انسان جب سو جاتا ہے تو روح چراغ یا آفتاب کی طرح ممتد ہوتی ہے اور اللہ کے نور اور ضیا کی مدد سے فرشتے کی جانب سے دکھائے جانے والے خواب کو دیکھتی ہے اور واپس اپنے نفس کی طرف آنا ایسا ہے جیسا کہ سورج سے بادل چھٹ جائے۔ اور بیداری کی صورت میں خواب میں دیکھا جانے والا واقعہ اسے یاد رہتا ہے۔
اور بعض کی رائے ہے کہ حسِ روحانی حسِ جسمانی کے مقابلے میں ارفع اور اشرف ہے اس لئے کہ حسِ روحانی سے انسان آئندہ ہونے والی اشیاء کو دیکھتا ہے اور حسِ جسمانی سے جو سامنے موجود ہو اسے دیکھتا ہے۔
خوابوں پر مامور فرشتے کے متعلق تفصیل:
حضرت دانیال علیہ السلام نے فرمایا اس فرشتے کا نام جو امور رویا پر مقررہے’’صدیقون‘‘ ہے’ (اس کی قوت کا اندازہ اس سے لگا سکتے ہیں کہ) اس کے کانوں کی لو سے گردن تک 700 سال کی مسافت ہےـ وہی اشیاء کی صورت مثالیہ خیر...