آج کا شعر۔۔۔۔! (پسندیدہ اشعار لکھیے)

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از راجہ صاحب, ‏اپریل 4, 2011۔

  1. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    آج کا شعر۔۔۔۔!

    اس عنوان کے تحت ہم سب اپنے پسندیدہ اشعار پیش کریں گے۔

    سو میری طرف سے آج کا شعر :


    نہ صاحبانِ جنوں ہیں نہ اہل کشف وکمال
    ہمارے عہد میں آئیں کثافتیں کیسی

    عبید اللہ علیم
    مولانانورالحسن انور اور اشماریہ .نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    چہرے بدل بدل کر مل رہے ہیں لوگ
    اتنا برا سلوک میری سادگی کے ساتھ

    محسن نقوی
    اشماریہ نے اسے پسند کیا ہے۔
  3. قاسمی

    قاسمی خوش آمدید مہمان گرامی

    میرا پسندیدہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔شعر
    یہ وقت کس کی رعونت پے خاک ڈال گیا
    وہ کون بول رہا تھا خدا کے لہجہ میں
    اشماریہ نے اسے پسند کیا ہے۔
  4. اعجازالحسینی

    اعجازالحسینی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3,081
    موصول پسندیدگیاں:
    26
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Afghanistan
    دیپک راگ ہے چاہت اپنی کا سنائیں تمہیں
    ہم خود تو سلگتے رہتے ہیں کیوں سلگائیں تمہیں
    اشماریہ نے اسے پسند کیا ہے۔
  5. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اعصاب سُن رہے تھے تھکاوٹ کی گفتگو
    الجھن تھی ،مسئلے تھے مگر رات ہو گئی

    نامعلوم
  6. قاسمی

    قاسمی خوش آمدید مہمان گرامی

    ہم کو ان سے وفا کی ہے امید
    جو نہیں جانتے وفا کیا ہے
  7. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جاگے ہوئے تھے خواب مگر سو رہا تھا میں
    ہاتھوں میں تھی کتاب مگر سو رہا تھا میں


    (نصیر احمد ناصر)
  8. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    میں تو اک گونج میں زندہ ہوں سرِ ِ بزم رضی
    جن کو ہونا تھا یہاں نغمہ سرا ہو بھی چکے


    خواجہ رضی حیدر
  9. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    شوق آوارگی! ہم کو تیرے لیے
    منزلیں بے نشاں رکھ کے چلنا پڑا
    یاد آتے ہیں وہ شہر وہ بستیاں
    اپنا سب کچھ جہاں رکھ کے چلنا پڑا


    (نصیر احمد ناصر)
  10. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    خود کو خود سے نہاں رکھ کے چلنا پڑا
    فاصلہ درمیاں رکھ کے چلنا پڑا
    دکھ تو یہ ہے زمیں باندھ کر پاؤں سے
    سر پہ اک آسماں رکھ کے چلنا پڑا


    (نصیر احمد ناصر)
  11. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    زخمِ فرقت تو یہ ناچیز بہر طور سہا
    خونِ دل تھا، کہ نئے زخم کھلے، خوب بہا
    ہم کو تو آنکھ کے اشکوں پہ بھی قابو نہ رہا
    وقت رخصت کے مگر آپ نے کچھ بھی نہ کہا


    (فیلصل ودود)
  12. سیما

    سیما وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,131
    موصول پسندیدگیاں:
    2
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    اک رونے سے تو مل جائے تو خداکی قسم
    اس دھرتی پہ ساون کی برسات لگا دوں
  13. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جو بات شرطِ وصال ٹہھری، وہی ہے اب وجہِ بدگمانی
    ادھر ہے اس بات پر خموشی، ادھر ہے پہلی سے بے زبانی

    کسی ستارے سے کیا شکایت کہ رات سب کچھ بجھا ہوا تھا
    فسردگی لکھ رہی تھی دل پر، شکستگی کی نئی کہانی

    عزم بہزاد
  14. اعجازالحسینی

    اعجازالحسینی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3,081
    موصول پسندیدگیاں:
    26
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Afghanistan
    چند کلیاں نشاط کی چن کرمد توں محو یاس رہتا ہوں
    تیرا ملنا خوشی کی بات سہی، تجھ سے مل کر اُداس رہتا ہوں
  15. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    لے دے کے اب یہی ہے نشانِ ضیا قتیل
    جب دِل جلے تو اُس کو دیا کہہ لیا کرو

    قتیل شفائی
  16. سیما

    سیما وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,131
    موصول پسندیدگیاں:
    2
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    یہ شہرِ‌دل نہیں ہے شہرِ‌آثارِ قدیمہ ہے
    سماعت ہو تو یاں‌ایک ایک پتھر بات کرتا ہے

    کوئی سنتا نہیں پیہم صدا ٹکرائے جاتی ہے
    میں باہر چیختا ہوں کوئی اندر بات کرتا ہے
  17. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اس شہر خرابی میں غم عشق کے مارے
    زندہ ہیں ، یہی بات بڑی بات ہے پیارے

    کچھ اور بھی ہیں کام ہمیں اے غم جاناں
    کب تک کوئی الجھی ہی زلفوں کو سنوارے


    حبیب جالب
    ارشاد احمد غازی نے اسے پسند کیا ہے۔
  18. سیما

    سیما وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,131
    موصول پسندیدگیاں:
    2
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    ہر ایک شکل کو دل سے نکال کر رکھا
    یہ آئنہ تری خاطر سنبھال کر رکھا

    جو دل دکھا بھی تو ہونٹوں نے پھول برسائے
    خوشی کو ہم نے شریکِ ملال کر رکھا
    naved Amir nadvi نے اسے پسند کیا ہے۔
  19. راجہ صاحب

    راجہ صاحب وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,379
    موصول پسندیدگیاں:
    358
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    شمعِ تنہا کی طرح، صبح کے تارے جیسے
    شہر میں ایک دو ہی ہوں گے ہمارے جیسے

    عرفان صدیقی
  20. سیما

    سیما وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,131
    موصول پسندیدگیاں:
    2
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    اے غمٍ عشق میری آنکھ کو پتھر کر دے
    ہیں میرے سر پہ تیرے اور بھی احسان بہت

اس صفحے کو مشتہر کریں