از حضرت خواجہ عزیز الحسن مجذوب رحمہ اللہ

'پسندیدہ کلام' میں موضوعات آغاز کردہ از مفتی ناصرمظاہری, ‏مارچ 14, 2013۔

  1. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,731
    موصول پسندیدگیاں:
    207
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    رہنے دو چپ مجھے نہ سنو ماجرائے دل
    میں حال دل کہوں تو ابھی منہ کو آئے دل

    سمجھے کون کس سے کہوں راز ہائے دل
    دل ہی سے کہہ رہا ہوں ماجرائے دل

    کب تک یہ ہائے ہائے جگر ہائے ہائے دل
    کر رحم اے خدائے جگر، اے خدائے دل

    دو لفظوں ہی میں کہدیا سب ماجرائے دل
    خاموش ہوگیا ہے کوئی کہہ کے ہائے دل

    آتے نہیں ہیں سننے میں اب نالہائے دل
    سنسان کیوں پڑی ہے یہ ماتم سرائے دل

    ہوتا ہوں محو لذت دید قضائے دل
    باغ و بہار زیست ہیں یہ داغ ہائے دل

    اب ہوچکی ہے جرم سے زائد سزائے دل
    جانے دو بس معاف بھی کردو خطائے دل

    ہر ہر ادا بتوں کی ہے قاتل برائے دل
    آخر کوئی بچائے تو کیونکر بچائے دل

    اتنا بھی کوئی ہوگا نہ صبر آزمائے دل
    سب سے لگائے تم سے نہ کوئی لگائے دل

    اک سیل بے پناہ ہے ہر اقتضائے دل
    ایسا بھی ہائے کوئی نہ پائے جو پائے دل

    مجذوب تو بھی غیر خدا سے لگائے دل
    عشق بتاں ہے بندہ حق ناسزائے دل
    بنت عبد الحميد اور محمد نبیل خان .نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اے دل ابھی دیکھی ہے کہاں ان کی تجلی
    اس نور کے پردے میں چھپا اور بھی کچھ ہے
    اہل نظر اس حسن کو پو چھیں مرے دل سے
    ہر ناز مین اک طرفہ ادا اور بھی کچھ ہے
    از کلام مجذوب
  3. محمد ارمغان

    محمد ارمغان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,661
    موصول پسندیدگیاں:
    106
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جزاک اللہ خیرا
    اللہ تعالیٰ حضرت خواجہ مجذوب صاحب پر کروڑہا رحمتیں فرمائے۔
  4. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,697
    موصول پسندیدگیاں:
    775
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
  5. محمدداؤدالرحمن علی

    محمدداؤدالرحمن علی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ Staff Member منتظم اعلی رکن افکارِ قاسمی

    پیغامات:
    6,367
    موصول پسندیدگیاں:
    1,736
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
  6. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,731
    موصول پسندیدگیاں:
    207
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    حضرت خواجہ عزیزالحسن مجذوب کامقام حضرت تھانوی کی مجلس میں وہی تھاجوحضرت نظام الدین اولیاکی مجلس میں امیرخسروکا،حضرت خواجہ معین الدین چشتی کی مجلس میں حضرت ناگوری کا،حضرت مصلح الامۃ کی مجلس میں حضرت عبدالرحمن جامی کا۔
    اللہ ان سبھی حضرات کی قبورکوروضۃ من ریاض الجنۃ بنائے۔
  7. محمد یوسف صدیقی

    محمد یوسف صدیقی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    159
    موصول پسندیدگیاں:
    146
    صنف:
    Male
    آئینہ بنتا ہے رگڑے لاکھ جب کھاتا ہے دل
    کچھ نہ پوچھو بڑی مشکل سے بن پاتا ہے دل
    عشق میں دھوکے پہ دھوکے روز کیوں کھاتا ہے دل
    ان کی باتوں میں نہ جانے کیوں ہی آجاتا ہے دل
    فصل گل میں سب تو خنداں ہیں مگر گریاں ہوں میں
    جب چمک جاتی ہے بجلی یاد آ جاتا ہے دل
    ایک وہ دن تھے ،محبت سے تھا لطف زندگی
    اب تو نام عشق سے بھی سخت گھبراتا ہے دل
    کچھ نہ ہم کو علم رستے کا نہ منزل کی خبر
    جا رہے ہیں بس جدھر ہم کو لے جاتا ہے دل
    لاکھ کر لیتا ہوں عہد ان کو نہ دیکھوں گا کبھی
    کچھ نہیں چلتی ہے اپنی جب مچل جاتا ہے دل
    پھیر لیتا ہوں نگاہیں روک لیتا ہوں خیال
    اور یہاں اتنے میں ہاتھوں سے نکل جاتا ہے دل

    (گفتہء مجذوب)​
    بنت عبد الحميد نے اسے پسند کیا ہے۔
  8. محمد یوسف صدیقی

    محمد یوسف صدیقی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    159
    موصول پسندیدگیاں:
    146
    صنف:
    Male
    آئے تھے کہنے حالِ دل بیٹھے ہیں لب سئے ہوئے
    نیچی نظر کئے ہوئے اپنا سا منہ لئے ہوئے

    چھیڑو نہ ہم کو زاہدو بیٹھے ہیں ہم پئے ہوئے

    چاہتے ہو جو لَوٹنا زہد کو تم لئے ہوئے

    کیسے گئے تھے شوق سے لینے اس آشنا کو ہم

    ویسے کے ویسے آگئے اپنا سا منہ لئے ہوئے

    جان سے عزیز کیوں مجھ کو نہ ہوں یہ داغِ دل

    ہائے کسی کو کیا خبر کس کے ہیں یہ دئے ہوئے

    کہنے کو ہجر ہے مگر دل کی کسی کو کیا خبر

    پھرتے ہیں اُس نگار کو پہلو میں ہم لئے ہوئے

    ہوگئے زندہ مردہ دل جب یہ سنا کہ وہ آئیں گے

    جب یہ سنا نہ آئیں گے مر گئے پھر جئے ہوئے

    چاہتے ہیں نہ فاش ہو اُن کو جو مجھ سے ربط ہے

    رہتے ہیں سب کے سامنے خود کو جو وہ لئے ہوئے

    (گفتہء مجذوب)​
    محمد یوسف نے اسے پسند کیا ہے۔
  9. محمد یوسف صدیقی

    محمد یوسف صدیقی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    159
    موصول پسندیدگیاں:
    146
    صنف:
    Male
    نازل بہت ہیں پاؤں مرے نونہال کے
    آنکھیں بچائے حور تو پلکیں نکال کے
    وہ سو رہے ہیں منہ پہ دوپٹہ جو ڈال کے
    کن حسرتوں سے تکتے ہیں ارماں وسال کے
    کیا کیا تھے شوق آج عروسِ جمال کے
    اندھیر تو نے کر دیا گھو نگھٹ نکال کے
    برسات میں یہ اُن کی ادا دے گئی مزا
    چلنا اٹھا کے پائنچے دامن سنبھال کے
    کم سِن ہیں ڈر نہ جائیں وہ شکل اس کی دیکھ کر
    شب آئے منہ پہ چادرِ مہتاب ڈال کے
    ہالہ میں چاند دیکھ کے یاد آگیا مجھے
    کھڑکی سے جھانکنا وہ ترا منہ نکال کے
    آیا جو چاند ابر میں آنکھوں میں پھر گیا
    آنا وہ شب کو رُخ پہ نقاب اُن کا ڈال کے
    یوں کوندتی ہیں ابر میں رہ رہ کے بجلیاں
    یاد آئیں جیسے ہجرکی شب ،دن وصال کے
    ابر سیہ میں برق منور نہیں حسن
    آیا ہے مانگ کوئی پریرو نکال کے

    (گفتہء مجذوب)​
    محمد یوسف اور احمدقاسمی .نے اسے پسند کیا ہے۔
  10. محمد یوسف صدیقی

    محمد یوسف صدیقی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    159
    موصول پسندیدگیاں:
    146
    صنف:
    Male
    ترک دنیا کر نہ ہر لذت کو چھوڑ
    معصیت کو ترک کر غفلت کو چھوڑ
    نفس و شیطاں لاکھ در پے ہوں
    تو نہ ہر گز ذکر اور طاعت کو چھوڑ

    (گفتہء مجذوب)​
    محمد یوسف نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں