استقلال کا پہاڑ

'حکایات' میں موضوعات آغاز کردہ از احمدقاسمی, ‏دسمبر 22, 2018۔

  1. احمدقاسمی

    احمدقاسمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3,624
    موصول پسندیدگیاں:
    790
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    استقلال کا پہاڑ
    بنی اسرائیل میں ایک نوجوان تھا ،بڑا عابدو زاہد، دنیا سے بے نیاز، ایک پہاڑ کے غار میں عبادت میں مشغول۔ قوم کے دو تجربہ کار حضرات اس کے پاس گئے اور کہنے لگے! صاحبزادے بہت مشکل اور دشوار راستہ تم نے اختیار کیا ہے ہمارے نزدیک اس راستے کی مصیبتوں پر صبر نہ کرسکوگے۔ نوجوان نے جواب دیا میدان حشر میں اللہ کے سامنے کھڑے ہونا اس سے بھی زیادہ دشوار ہو گا۔ ان دونوں نے کہا تمہارے کتنے ہی رشتےدار تمہارے اس فعل سے اس لیے ناراض ہیں کہ تم اس طرح ان کا حق ادا نہیں کر سکو گے، گھر پر رہ کر ان کا حق ادا کرنا کیا عبادت نہیں ہے ؟وہ تو اس سے بھی بہتر عبادت ہے۔
    جوان نے کہا اگر میرا خدا مجھ سے راضی ہو گیا تو وہ ان سب کو راضی کر دے گا۔ وہ دونوں کہنے لگے میاں صاحبزادے ابھی تم نہ تجربہ کار ہو ہمارے بال سفید ہوگئے تم سے زیادہ تجربہ رکھتے ہیں اس ناتجربہ کاری کی عمر میں اس طرح عبادت کرنے سے غرور تکبر پیدا ہوگا جو تمہاری ساری عبادت کو برباد کر دے گا ۔جوان کہنے لگا جس نے اپنے کو خوب پہچان لیا ہو وہ تکبر میں مبتلا نہیں ہو سکتا۔ یہ سن کر دو آپس میں کہنے لگے چلو میں اس پر ہماری باتوں کا اثر نہیں ہوگا یہ جنت کی خوشبو پا چکا ہے ۔
    روضۃ الصالحین۔

اس صفحے کو مشتہر کریں