بڑے لوگوں کوہردم سوجھتی ہے ،دال ارہرکی

'آپ کی شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از مفتی ناصرمظاہری, ‏دسمبر 7, 2017 at 12:27 AM۔

  1. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری میں نہیں مانتاکاغذپہ لکھاشجرہ نسب منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,684
    موصول پسندیدگیاں:
    171
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    بڑے لوگوں کوہردم سوجھتی ہے ،دال ارہرکی​
    مفتی ناصرالدین مظاہری
    سنبھالاہوش جب سے، سنتاآیااپنی امی سے
    بڑے لوگوں کوہردم سوجھتی ہے ،دال ارہرکی
    خموشی جب بھی چھائی دیکھی، میں نے اپنی امی پر
    وجہ معلوم ہوئی ان سے ،کہ پکتی دال ارہرکی
    مرے بھائی، مرے والداورمری بہنیں
    اچھلتی کودتی ہرسوکہ پکتی دال ارہرکی
    محلہ والے مجھ سے پوچھتے کیارازہے اِس کا
    تمہارے گھرمیں ہردم اورہمہ دم دال ارہرکی
    طفیلی بن کے بڈھے بھی ہمارے گھرمیں آدھمکیں
    انھیں معلوم ہوجب کہ یہاں ہے دال ارہرکی
    گلابی ہے ،عنابی ہے،طنابی اوراَصفربھی
    خدانے ہرصفت سے یوں نوازادال ارہرکی
    خموشی میں،مدہوشی میں ،جنون وکیف ومستی میں
    ہوئے مجنوں صفت وہ بھی جوکھائیں دال ارہرکی
    سجاوٹ میں ،بناوٹ میں، حلاوت میں ،طراوٹ میں
    بہررنگے کہ خواہی خورہمہ تن دال ارہرکی
    ارے ناصرؔ یہ جوتم نے لکھی ہے نظم ارہرکی
    یہ خواہش ہے ملے جنت میں ہرسودال ارہرکی
    اشماریہ اور احمدقاسمی .نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں