بیس رکعت تراویح سنت موکدہ ہے

'بحث ونظر' میں موضوعات آغاز کردہ از مسلک حنفی, ‏اگست 6, 2012۔

  1. مسلک حنفی

    مسلک حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    جگہ:
    Nepal
    بیس رکعت تراویح سنت موکدہ ہے

    سوال:اگر کوئی شخص بہ سبب شکایت ضعف جسمانی یا دیگر امراض تراویح کی بیس رکعت نہ پڑھ سکے اور صرف آٹھ یا بارہ پڑھ لے تو گنہ گار تو نہ ہوگا؟
    جواب: بیس رکعت کوسنت موکدہ لکھا ہے ،اس سے کم پڑھنا سنت موکدہ کا ترک کرنا ہوگا ، پس جو عذر ترک سنت موکدہ کے لئے معتبر ہے وہ اس میں بھی معتبر ہے ورنہ کھڑے ہوکر دشوار ہو تو بقدر دشواری کے بیٹھ کرپڑھ لے ۔
    ( 8رمضان 1333 امداد الفتاویٰ جلد اول ص 495)

    سبحان اللہ کیا حکمت کی بات ہے حکیم الامت کی اللہ ان کی قبر کو منور اور ٹھنڈی کرے۔
    آٹھ اور بارہ رکعت کے کوڑھ مغزقائل کیا سمجھیں ۔وہ تو اہل سنت کے ایمان کے ڈاکو ہیں۔
  2. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جزاک اللہ خیرا

اس صفحے کو مشتہر کریں