تھانیدار

'مزاحیہ مضامین' میں موضوعات آغاز کردہ از مولانانورالحسن انور, ‏نومبر 30, 2011۔

  1. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    141
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    [size=x-large]پولیس کی نوکری بڑی بارعب نوکری ہے اور پھر تھانیداری کی کیا بات ہے تھانیدار اور بادشاہ ایک جیسا مزاج رکھتے ہیں اور آجکل زنانہ پولیس اور مردانہ پولیس دوحصے ہیںاس صنف نازک کو معلوم نہیں کیا سوجھی اور پولیس میں بھرتی ہونا شروع ہو گی اب تو اندھا دھند تھانیدارنیاں بھرتی ہورہی ہیں ایک تھانیدارنی کے پاس ڈکیٹی کا ملزم براے تفشیش لایا گیا
    تھانیدارنی نے چوچھا تم نے ڈکیٹی کیوں کی
    ملزم میں نردوش ہوں محض دشمنی کی وجہ سے ملوث کردیا گیا ہوں مجھ جیسا بے بس انسان کیسے وردات کر سکتا ہے میرے گھر میری ماں کینسر کی مریضہ ہے چھوٹے چھوٹے بچے نصف درجن کے قریب ہیں جو بڑے ہونے کانام نہیں لیتے بیوی ہمیشہ پر امید رہتی ہے کیو نکہ دنیا امید سے قائم ہے ان مخدوش حالات میں کس کو ڈاکہ ڈالنے کا ہوش ہو سکتا ہے میں تو نقلی پستول خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتا اگر گنجائش ہوتی تو کلو گھی مرچ مصالحہ خریدتا بچے کھالیتے یہ تو آسودہ حال لوگوں کا کام ہے جن کے پاس بے شمار وسائل ہوں جدید اسلحہ ہو میں تو پٹاخے کی آواز سن کر ڈر جاتا ہوں تھانیدارنی کادل پسیچ گیا اور ملزم بری ہو گیا اور اگر اسکی جگہ مہابت خان تھانیدار ہوتا ملزم کی کم سنتا اور اپنی سناتا چھترول کے ذریعے تھانیدار ہر جگہ تھانیدار اگر بننے کی کوشش کرے تو پھر نقصان بھی ہو جاتا ہے
    ایک تھانیدار کو کسی دوست نے دعوت پر بلایا ادھر تھانیدار کو ایک مقدمے کی تفشیش کے سلسلہ میں جاے وقع پر حاضر ہونے کی کال آگی
    بیوی سے کہا تم تیار رہنا میں مغرب تک آجاوں گا ادھر تفشیش لمبی ہوگئی اور ایک فریق سے تھانیدار کی جھڑپ ہوگی تو ایک منچلے نے غصے میں کہا تو تھانیدار ہوگا تو گھر میں
    ادھر گھر میں بیگم انتظار کرتے کرتے تھک کے سوگی گھر پہنچے تو بیگم بے غم ہوکر سورہی تھی اٹھا کے کہنے لگا دعوت پہ نہیں جانا بیوی نے غصے میں کہا تم تھانیدار ہوگے تو تھانے میں
    تھانیدار کی ہنسی نکل گی
    اب اسکے پاس ایک ہنسی ہی تھی وہ بھی نکل گئی
    [/size]
  2. سارہ خان

    سارہ خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,568
    موصول پسندیدگیاں:
    15
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    بہت اچھی شئیرنگ ہے شکریہ حسن خان صاحب :->~~ :->~~
  3. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ادھر گھر میں بیگم انتظار کرتے کرتے تھک کے سوگی گھر پہنچے تو بیگم بے غم ہوکر سورہی تھی اٹھا کے کہنے لگا دعوت پہ نہیں جانا بیوی نے غصے میں کہا تم تھانیدار ہوگے تو تھانے میں
    تھانیدار کی ہنسی نکل گی
    اب اسکے پاس ایک ہنسی ہی تھی وہ بھی نکل گئی


    بہت خوب جناب
  4. محمد طیب قاسمی

    محمد طیب قاسمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    445
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    واہ واہ جناب گھر والی تھانیدارنی سے بری ہونا اوکھا ای کم اے کی خیال اے ۔۔۔۔
  5. سیفی خان

    سیفی خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    4,554
    موصول پسندیدگیاں:
    71
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    :-(||> :-(||> :-(||> :-(||> []---[]---[]--- ۔ ۔ ۔ میرا تو ““ ہاسا ““ ای نکل گیا
  6. سارہ خان

    سارہ خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,568
    موصول پسندیدگیاں:
    15
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    جو جس کے پاس ہوتا ہے وہی نکلتا ہے ،،،،،[]==[]:->~~ %||:-{
  7. اسداللہ شاہ

    اسداللہ شاہ وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    5,318
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    شرم کے ساتھ


    کیو نکہ دنیا امید سے قائم ہے

اس صفحے کو مشتہر کریں