جتنے تم کھا سکو

'ختم نبوت' میں موضوعات آغاز کردہ از محمدداؤدالرحمن علی, ‏اگست 25, 2014۔

  1. محمدداؤدالرحمن علی

    محمدداؤدالرحمن علی منتظم۔ أیده الله Staff Member منتظم رکن افکارِ قاسمی

    پیغامات:
    6,301
    موصول پسندیدگیاں:
    1,708
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    1974ء کی تحریک ختم نبوت میں واہ کینٹ میں ایک جلوس نکلا۔پولیس نے جلوس کے بہت سے شرکاء کو گرفتار کرلیا،گرفتار شدہ افراد میں ایک سات سال کا بچہ بھی تھا۔ ڈی ایس پی نے بچے کو مرغا بنا کر پوچھا:
    ’’ بتاؤ تماری پیٹھ پر کتنے جوتے ماروں‘‘
    بچے نے ایمانی جرات اور بہادری کے ساتھ جواب دیا:
    ’’اتنے جوتے مارنا جتنے تم قیامت کے دن کھا سکتے ہو‘‘
    ۔ یہ سننا تھا یہ ڈی ایس پی مارے خوف کے پسینہ ،پسینہ ہوگیا۔ بچے کو سینے سے لگایا، پیار کیا،گھر لے گیا، کھانا کھلایا،رقم دی،پاؤں پکڑ کر بچے سے معافی مانگی اور اس کو گھر چھوڑ دیا۔
    (تحفظ ختم نبوت اہمیت و فضیلت، صفحہ نمر: 276)
    محمد یوسف، شاہد نذیر اور محمد نبیل خان نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    سبحان اللہ !
    محمد یوسف اور محمدداؤدالرحمن علی .نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں