حضرت فاطمہ زہرا کا جہیز

'اصلاح معاشرہ' میں موضوعات آغاز کردہ از زوہا, ‏جون 8, 2011۔

  1. زوہا

    زوہا وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    138
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    حضرت فاطمہ زہرا کا جہیز

    جہیز اِن کو ملا جو کچھ شہنشاہ وعالم سے
    مِلا ہے درس ہمکو سادگی کا فخرِ آدم سے
    متاعِ دنیوی جو حصۂ زہرا میں آئی تھی
    کھجوریں کھردرے سے بان کی اک چادر تھی
    مشقت عمر بھر کرنا جو لکھا تھا مقدر میں
    ملی تھیں چکّیاں دو تاکہ آٹاپیس لیں گھر میں
    گھڑے مٹی کے دو تھے اور اک چمڑے کا گدا تھا
    نہ ایسا خوشنما تھا نہ بد زیب اور بھدا تھا
    بھرے تھے اس میں روئی کی جگہ پتے کھجوروں کے
    یہ وہ ساماں تھا جس پر جان ودل قربان حوروں کے
    وہ زہرا جن کے گھر تسنیم وکوثر کی تھی ارزانی
    ملی تھی مَشک ان کو تا کہ خود لایا کریں پانی
    ملا تھا فقر وفاقہ ہی مگر اصلی جہیز اُن کو
    کہ بخشی تھی خدا نے اک جبین ِ سجدہ ریز ان کو
    چلی تھی باپ کے گھر سے نبی کی لاڈلی پہنے
    حیا کی چادریں، عفت کا جامہ،صبر کے گہنے
    ردا ئے فقر بھی حاصل تھی توفیقِ سخاوت بھی
    کہ ہونا تھا اس کے سر تاج خاتونِ جنت کی
    اسی کی تربیت میں اُسوہ تھا یمن وسعادت کا
    اسی کی گود سے دریا ابکنا تھا شہادت کا
    وہی غیرت جو مُہر خاتمِ حق کا نگینہ تھی
    امیں کی لاڈلی ہی اس امانت کی امینہ تھی
    علی المرتضیٰ نے آج تاجِ ھلاتیٰ پایا
    دلھن کی شکل میں اک پیکرِ صدق وصفا پایا
    پدر کے گھر سے رخصت ہو کے زہرا اپنے گھر آئی
    توکّل کے خزانے دولتِ مہر وفا لائی
  2. محمد شہزاد حفیظ

    محمد شہزاد حفیظ وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,102
    موصول پسندیدگیاں:
    5
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Saudi Arabia
    جزاک اللہ




    --------------------------------------
  3. أضواء

    أضواء وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,522
    موصول پسندیدگیاں:
    23
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Saudi Arabia
    السلام عليكم و رحمة الله و بركاته

    أحسنتِ و جزاكِ الرحمن الجنه

اس صفحے کو مشتہر کریں