حضرت نانوتوی کا عزم برائے تحصیل انگریزی

'حکایات' میں موضوعات آغاز کردہ از احمدقاسمی, ‏اکتوبر 24, 2012۔

  1. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,627
    موصول پسندیدگیاں:
    790
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    حضرت نانوتوی کا عزم برائے تحصیل انگریزی​
    اس سلسلہ کی ایک دلچسپ بات وہ ہے کہ جسے براہ راست اس فقیر ( سید مناظر احسن گیلانی) نے مولانا حافظ محمد احمد مرحوم سابق مہتمم دارالعلوم دیوبند سے سنی تھی ،اپنے والد مرحوم حضرت مولانا محمد قاسم نانوتوی رحمۃ اللہ علیہ بانی دارلعلوم دیوبند کے متعلق یہ قصہ بیان کرتے تھے کہ آخری حج میں جب جارہے تھے تو کپتان جہاز نے جو غالبا کوئی اٹالین (اٹلی کا باشندہ ) تھا ،عام مسلمانوں کے اس رجحان کو جسے مولانا کے ساتھ وہ دیکھ رہا تھا یہ دریافت کیا کہ یہ کون صاحب ہیں؟
    حجاج میں کوئی انگریزی جاننے والے مسلمان بھی تھے انہوں نے کپتان سے مولانا کے حالات بیان کئے اس نے ملنے کی خواہش ظاہر کی ،وہاں کیا تھا مولانا بخوشی کپتان سے ملے ،کپتان نے اجازت چاہی ،کہ کیا مذہبی مسائل پر گفتگو کر سکتا ہوں ،مولانا نے اسے بھی منظور فرمالیا ،وہی انگریزی خواں صاحب ترجمان بنے ، کپتان پو چھتا تھا اور مولانا جواب دیتے تھے ، تھوڑی دیر کے بعد مولانا کے خیالات کو سن کر وہ کچھ مبہوت سا ہو گیا،اور مولانا کے ساتھ اس کی گرویدگی اتنی بڑھی کہ قریب تھا کہ اسلام کا اعلان کر دے ،اس نے شاید وعدہ بھی کیا تھا کہ وہ ہندوستان حضرت سے ملنے حاضر ہوگا ،اس واقعہ کا مولانا محمد قاسم نانوتوی رحمۃ اللہ علیہ پر اتنا اثر ہوا کہ آُ پ نے جہاز ہی میں عزم کر لیا تھا کہ واپس ہو نے کے بعد انگریزی زبان خود سیکھوں گا ، کیونکہ مولانا کو یہ محسوس ہو رہا تھا کہ جتنا اثر کپتان پر براہ راست گفتگو سے پڑ سکتا تھاترجمان کے ذریعہ وہ بات حاصل نہیں ہو رہی ہے ،لیکن افسوس ہے کہ اجلِ مسمیٰ واپس ہونے کے بعد فرصت نہ دی ،کاش!یہ صورت پیش آجاتی تو دارالعلوم دیوبند کی علمی تحریک کا رنگ یقینا کچھ اور ہوتا ،لوگوں کو اکابر دیوبند کے خیالات سے صحیح واقفیت نہیں ہے ،ورنہ جن تنگ نظریوں کا الزام ان کی طرف سے عائد کیا جارہا ہے ،ان سے ان بزرگوں کی ذات بری ہے۔(ماخوذ)
  2. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    واہ ۔ بہت خوب ۔ بہت مفید شئیرنگ ہے ۔ واقعی لوگ ان حالات سے ناواقف ہیں ۔ جزاک اللہ خیرا
  3. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    بہت شکریہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
  4. بنت حوا

    بنت حوا فعال رکن وی آئی پی ممبر

    پیغامات:
    4,572
    موصول پسندیدگیاں:
    458
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    بہت مفید شئیرنگ ہے شکریہ
  5. رجاء

    رجاء وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,198
    موصول پسندیدگیاں:
    8
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    بہت مفید شئیرنگ ہے شکریہ
  6. أضواء

    أضواء وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,522
    موصول پسندیدگیاں:
    23
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Saudi Arabia
    جزاك الله كل خير
  7. snalgazali

    snalgazali وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Qatar
    جزاك الله احسن الجزا
  8. محمد ارمغان

    محمد ارمغان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,661
    موصول پسندیدگیاں:
    106
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ماشاء اللہ، بہت خوب ہے۔
    کوئی بھی پڑھنے والا اس سے نفسانی مطلب ہرگز نہ لے، کیونکہ اس میں بطور زبان سیکھنے کی ترغیب و خواہش ہے تاکہ اشاعتِ اسلام ہو۔ جو انگریزوں اور انگریزی سے مرعوب ہیں اُن کے لیے اس میں کچھ نہیں۔ بلکہ ہمارے اکابر کہتے ہیں کہ جو جلد متاثر ہوتا ہے اُسے اس کا سیکھنا مضر ہے کیونکہ ایمان کی حفاظت سب سے زیادہ ضروری اور اولین ترجیح ہے۔ ہمارے بزرگوں نے انگریزی زبان سے نفرت نہیں کی بلکہ اس قوم کے طور طریق اور تہذیب و ثقافت وغیرہ سے بچایا ہے۔ واللہ سبحانہ و تعالیٰ اعلم و اللھم اغفرلی وارحمنی

اس صفحے کو مشتہر کریں