حضرت یوسف علیہ اسلام کی پاک دامنی کا گواہ

'حکایات' میں موضوعات آغاز کردہ از سارہ خان, ‏نومبر 1, 2011۔

  1. سارہ خان

    سارہ خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,568
    موصول پسندیدگیاں:
    17
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    حضرت یوسف علیہ اسلام کی پاک دامنی کا گواہ

    حضرت یوسف علیہ اسلام جب مصر کے بادشاہ بن گئے تو آپ نے قحط سے نمٹنے کے لیے سات سال کے لئے غلہ اکٹھا کر لیا قحط کے سالوں میں آپ یہ غلہ سستے داموں فرخوخت کرتے تھے اور فقراء اور مساکین کو غلہ مفت تقسیم کرتے تھے اور یہ سارا کام اپنی نگرانی میں فرماتے تھے ایک دفعہ اسی طرح فقراء میں غلہ تقسیم ہو رہا تھا فقراء اور مساکین کی لائن لگی ہوئی تھی باری باری سب اپنا حصہ وصول کررہے تھے اور گھروں کو جا رہے تھے آپ علیہ اسلام نے دیکھا کہ ایک نوجوان انتہائی غریب اور خستہ حالی کے ساتھ حاضر ہوا اپنے حصہ کا غلہ وصول کیا اور اسے ایک طرف رکھ کر دوبارہ لائن میں لگ گیا آپ نے سوچا کہ ہو سکتا ہے کہ اسکی ضرورت زیادہ ہوں چلو لینے دو دوسری دفعہ لینے کے بعد وہ پھر لائن میں لگ گیا آپ علیہ اسلام نے پھر بھی چشم پوشی فرمائی چوتھی دفعہ جب وہ نوجوان قطار میں جا کر کھڑا ہوا تو آپ علیہ اسلام نے اسے بلوالیا اور اسپر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے فرمایا کہ تو بار بار ایسا کیوں کرتا ہے وہ کہنے لگا کہ حضرت اگر آپ کو پتہ چل جائے کہ میں کون ہوں تو یقیناً آپ ایسا نہ کہیں آپ علیہ اسلام نے پوچھا کہ تو کون ہے مجھے اپنا تعارف کرا وہ کہنے لگا میں وہی بچہ ہوں جس نے آپکی پاکدامنی کی گواہی دی تھی جب کہ آپ پر زلیخا نے جھوٹا الزام لگا دیا تھا،،(قرآن مجید کی آیت(
    وشھد شاھد من اھلھا الخ[
    میں اسی گواہی کا تذکرہ ہے حضرت یوسف علیہ اسلام اس نوجوان کو دیکھ کر بڑے خوش ہوئے اسکا انتہای اکرام کیا اسے اپنے پاس شاہی مہمان بنایا اور اپنی طرف سے اسے کپڑوں کا قیمتی جوڑا بھی دیا سواری کے لیے اعلی نسل کا گھوڑا بھی دیا کئی من غلہ اور کتنے دراہم وغیرہ دیکر رخصت کیا اللہ تعالی نے آپ علیہ اسلام پر وحی فرمائی کہ اے یوسف جس شخص نے تیری پاکیزگی کی گواہی ایک دفعہ دی تو اسپر کتنا خوش ہوا اور کتنا انعام واکرام دیا بھلا جو شخص میری توحید کی گواہی دیتا ہے میں اسپر کتنا خوش ہوتا ہوں گا وہ کس طرح میری عنایات سے محروم رہ سکتا ہے اور ایک موذن یا ایک داعی پر میں کتنا لطف وکرم کرونگا
    ----نتائج----
    (1-لاالہ الا اللہ کی گواہی دینا بہت بڑا عمل ہے
    (2-اپنے حق میں گواہی دینے والے سے جب مخلوق خوش ہوتی ہے تو خالق کتنا خوش ہوتا ہو گا
    (3-حضرت یوسف علیہ اسلام بھی غیب کا علم نہیں رکھتے تھے
  2. اسداللہ شاہ

    اسداللہ شاہ وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    5,318
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جزاک اللہ فی الدارین
  3. احمدقاسمی

    احمدقاسمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3,624
    موصول پسندیدگیاں:
    790
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India


    بہت ہی زبر دست
    ترے جشمہ کرم کا نہ مل سکا کنارہ

    بعض ایسی پوسٹ ہوتی ہیں .دل چاہتا ہے لکھنے والے کو ہر رکن دل کھول کے داد دے.
    خدا جانے یہ ''چشم پوشی کا مرض'' الغزالی سے کب دور ہو گا.

    میری طرف سے اس پوسٹ پر 100 پوائنٹ دیئے جاتے ہیں . والسلام
  4. اعجازالحسینی

    اعجازالحسینی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3,081
    موصول پسندیدگیاں:
    26
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Afghanistan
    :->~~ :->~~

    بہت خوب ام احمد صاحبہ

    بہت بہت شکریہ
  5. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اسلام علیکم ام احمد صاحبہ
    میں آپ کو آپ کی خوبصورت تحریر پر مبارک باد پیش کرتا ہوں
    جزاک اللہ خیرا
  6. أضواء

    أضواء وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,522
    موصول پسندیدگیاں:
    23
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Saudi Arabia
    مفيدشئیرنگ پر آپ کا بہت بہت شکریہ......

اس صفحے کو مشتہر کریں