حکایت

'حکایات' میں موضوعات آغاز کردہ از احمدقاسمی, ‏فروری 5, 2012۔

  1. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,627
    موصول پسندیدگیاں:
    790
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    حکایت​

    دو مسافر ایک آنکھ والا اور دوسرا اندھا ایک جنگل میں اترے ۔ صبح کو جب چلنے لگے تو اندھے کا کوڑا گم ہوگیا ۔اس نے ٹٹول کر ایک سانپ کہ سردی سے سُکڑا ہوا پڑا تھا اٹھا لیا اور اس کی نرمی اور چکنا پن معلوم کر کے بہت خوش ہوا کہ خدا نے اس کے عوض ایک اچھا کوڑا عنایت کیا ۔ جب دن نکلا تو آنکھ والے مسافر نے سانپ دیکھ کر کہا ۔اے دوست جس کو تونے کوڑا خیال کیا ہے وہ سانپ ہے جلدی سے پھینک دے ۔اندھے نے جا نا شاید یہ فریب کرتا ہے کہ اس دھوکے سے یہ کوڑے کو پھینک دے اور میں اٹھا لوں ۔اندھے نے کہا کہ یہ اپنی قسمت ہے اگر خدا کو منظور ہوتا تو اس کوڑے سے اچھا کوڑا بخشتا ،میں احمق نہیں ہوں کہ تیرے دام میں آجاؤں ۔اس نے ہر چند سمجھایا لیکن اندھا کب ما نتا ہے ۔آخر جب دھوپ نکلی اور گرم ہوا چلی اور سانپ کی سردی دور ہوئی ۔ تب یکا کی سانپ نے اس کو کا ٹ کھایا اور اندھا مر گیا ۔
    حاصل یہ ہے کہ دوست کے کہنے پر عمل کرو اور دنیا کی خوبصورتی اور نقش ونگار پر فریفتہ نہ ہو ، حرص وطمع کو دل میں جگہ نہ دو ۔ورنہ یہی نتیجہ ہو گا۔
  2. اسداللہ شاہ

    اسداللہ شاہ وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    5,318
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    بہت خوب جناب
    لیکن بات اس پر ہے کہ دوست واقعی دوست ہو
  3. اعجازالحسینی

    اعجازالحسینی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3,081
    موصول پسندیدگیاں:
    26
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Afghanistan
  4. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    حاصل یہ ہے کہ دوست کے کہنے پر عمل کرو اور دنیا کی خوبصورتی اور نقش ونگار پر فریفتہ نہ ہو ، حرص وطمع کو دل میں جگہ نہ دو ۔ورنہ یہی نتیجہ ہو گا۔
    واہ ۔ بہت خوب

اس صفحے کو مشتہر کریں