خدا کی مدد تو انتظار میں ہے!!!۔۔۔

'اصلاح معاشرہ' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد ارمغان, ‏فروری 10, 2013۔

  1. محمد ارمغان

    محمد ارمغان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,661
    موصول پسندیدگیاں:
    106
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    خدا کی مدد تو انتظار میں ہے!!! ۔ ۔ ۔​

    بِسْمِ اللّٰہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ نَحْمَدُہٗ وَ نُصَلِّیْ عَلٰی رَسُوْلِہٖ الْکَرِیْم، اَمَّا بَعْدُ!​
    نبی کریم ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ ’’لوگوں پر ایک زمانہ آئے گا جس میں اپنے دین پر ثابت قدم رہنے والے کی مثال ایسی ہو گی جیسے کوئی شخص آگ کے اَنگاروں سے مٹھی بھر لے‘‘۔ (ترمذی:۳؍۵۰، عن انس رضی اللہ تعالیٰ عنہ)
    اس حدیثِ مبارکہ کی عملی تصویر موجودہ زمانہ میں دیکھی جا سکتی ہے،آج کے پُر فتن دور میں اپنے ایمان کی حفاظت ایسی ہی مشکل ہو گئی ہے، چہار سو میں بے حیائی، فحاشی، عریانی اور بےدینی کی فضاء قائم ہو چکی ہے۔ اسی لیے اکابرین فرماتے ہیں کہ اوّل توجہ اپنی اصلاح کی طرف رکھئے۔ افسوس! آج ہر کوئی دوسروں کی اصلاح کا بیڑہ اُٹھائے نظر آتا ہے مگر خود اپنی اصلاح سے غافل ہوتے ہیں، یہ بہت فکر والی بات ہے۔
    ٭۔۔۔ہر شخص کے پاس علم ہے اور اتنا علم ہے کہ کچھ حد نہیں، مگر کمی ہے تو صرف عمل کی۔
    ٭۔۔۔ہر شخص اچھی بات کہنا پسند کرتا ہے مگر خود میں حقیقت اور سچ سننے کی برداشت نہیں۔
    ٭۔۔۔ہم حقیقتِ حال بیان کرنے والے کو طنز و تنقید کا نشانہ بنانے اور بُرے القاب سے نوازنے کو اپنا حق سمجھ بیٹھے ہیں۔
    ٭۔۔۔ہم اسلاف کی باتیں پڑھتے ہیں اور اُن کے حالاتِ رفیعہ دیکھتے ہیں مگر کبھی خود سے یہ سوال نہیں کرتے کہ یہ ارشادات اور واقعات ہم سے کیا تقاضا کر رہے ہیں۔
    ٭۔۔۔ہم ظاہراً خلافِ شریعت آزادی کے خلاف آواز اُٹھاتے ہیں، مگر عملاً حمایت میں کھڑے نظر آتے ہیں۔
    تو پھر ارشادِ نبوی ﷺ یاد رکھئے! اعمالکم عمالکم ’’جیسے تمہارے اعمال ویسے تمہارے حکمران‘‘۔ آج جس مجلس یا محفل میں چلے جائیں وہاں آپ کو ہر کوئی اپنے اپنے انداز سے موجودہ حالات پر تبصرے کرتا نظر آئے گا، روشن خیال کالم نگار اور دانشور اصل وجوہات کو جانے بغیر اپنی اپنی تجاویز پیش کرتے ہیں جن پر عمل پیرا ہونے کے باوجود ناکامی کا منہ دیکھنا پڑتا ہے۔ قتل و غارت، عجیب و غریب بیماریاں، رزق میں بے برکتی، مختلف بحران، اختلاف و انتشار، ظالم حکام، محافظین کی ڈاکہ زنی، مہنگائی کا عذاب، وغیرہ یہ سب ہمارے اعمالِ بد کا ہی ثمر ہے، جیسا کہ کلام اللہ میں ہے:
    وَ مَآ اَصَابَکُمْ مِّنْ مُّصِیْبَۃٍ فَبِمَا کَسَبَتْ اَیْدِیْکُمْ وَ یَعْفُوْا عَنْ کَثِیْرٍ (سورۃ الشوریٰ:۳۰)​
    ’’اور تمہیں جو کوئی مصیبت پہنچتی ہے ، وہ تمہارے اپنے ہاتھوں کیے ہوئے کاموں کی وجہ سے پہنچتی ہے، اور بہت سے کاموں سے تو وہ درگزر ہی کرتا ہے‘‘۔
    موجودہ حالات جس نہج پر پہنچ چکے اس کی ذمہ داری دوسروں پر مت ڈالئے، اپنے حکمرانوں کی کرتوتوں پر مت روئیے، ذرا اپنے گریبان میں جھانک کر تو دیکھئے کہ ان حالات کا ذمہ دار کوئی اور نہیں میں خود ہی ہوں، میرے اعمال ہیں۔ یہ حالات تب ہی درُست ہو سکتے ہیں جب اپنے رَبّ کو سچی توبہ سے راضی کریں گے اور اعمالِ بد چھوڑ کر اعمالِ صالحہ کریں گے۔ حضرت خواجہ مجذوب صاحب رحمہ اللہ تعالیٰ نے کیا خوب فرمایا ہے۔۔۔
    نہ صورت ہے مسلمانی نہ سیرت ہے مسلمانی
    بھلا اس حال میں پھر کیا ہو تم پر فضلِ یزدانی
    رہے ناکام گو تم کر چکے ہو ہر سعی امکانی
    مسلمان بن کے دیکھو کامراں پھر ہو بآسانی​
    یہ بات ذہن میں ڈال لیجئے کہ گناہوں کو چھوڑے بغیر حالات درُست نہیں ہو سکتے، یہ راہِ بغاوت چھوڑنا پڑے گی۔ آہ! خدا کی مدد تو انتظار میں ہے مگر ہم ہی دیر لگا رہے ہیں۔
  2. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    نہ صورت ہے مسلمانی نہ سیرت ہے مسلمانی
    بھلا اس حال میں پھر کیا ہو تم پر فضلِ یزدانی
    رہے ناکام گو تم کر چکے ہو ہر سعی امکانی
    مسلمان بن کے دیکھو کامراں پھر ہو بآسانی
  3. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,731
    موصول پسندیدگیاں:
    207
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    بالکل بجاارشادفرمایاہے۔
    عمل سے زندگی بنتی ہے جنت بھی جہنم بھی
    یہ خاکی اپنی فطرت میں نوری ہے نہ ناری ہے
  4. بنت حوا

    بنت حوا فعال رکن وی آئی پی ممبر

    پیغامات:
    4,572
    موصول پسندیدگیاں:
    458
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    نہ صورت ہے مسلمانی نہ سیرت ہے مسلمانی
    بھلا اس حال میں پھر کیا ہو تم پر فضلِ یزدانی
    رہے ناکام گو تم کر چکے ہو ہر سعی امکانی
    مسلمان بن کے دیکھو کامراں پھر ہو بآسانی

اس صفحے کو مشتہر کریں