خشوع و خصوع کہاں گیا؟

'بزمِ طلبہ و طالبات' میں موضوعات آغاز کردہ از مظاہری, ‏دسمبر 21, 2015۔

  1. مظاہری

    مظاہری نگران ای فتاوی ای فتاوی ٹیم ممبر رکن

    پیغامات:
    211
    موصول پسندیدگیاں:
    202
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    ایک مرتبہ استاذمحترم حضرت مفتی مظفر حسین صاحب نوراللہ مرقدہ نے دوران سبق فرمایا:
    لوگ نمازوں میں خشوع نہ ہو نے کی شکایت کرتے ہیں،وہ خشوع کو نمازمیں تلاش کرتے ہیں ،جبکہ خشوع تو پیچھے ہی چھوڑ آئے ہیں ،میں تمہیں بتاتا ہوں کہ خشوع کہاں تھا،کہاں سے غائب ہوا ہے؟اب کہاں ملے گا؟
    لوگ وضو کرتے ہیں تو ان کا ارادہ صرف یہ ہو تا ہے کہ نماز پڑھنی ہے اس لئے وضو کر رہے ہیں ،پوری پوری جماعت سے معلوم کر لیجئے ،یا تو سرے سے کوئی نیت ہی نہ ہوگی اور یا زیادہ سے زیادہ نماز کی نیت ہوگی،حالانکہ خود وضو ایک مستقل عبادت ہے ،جب اس کو عبادت کی نیت سے نہیں کیا تو اس کی مکمل برکات ملنے کا تو سوال ہی نہیں ،اب نماز میں نورانیت آئے تو کہاں سے آئے ،خشوع آئے تو کیونکر ؟
    اپنا خشوع وضو میں سے اٹھا لاؤ،وہیں گم ہوا ہے وہیں ملے گا۔
    محمد یوسف، احمدقاسمی اور اشماریہ نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,655
    موصول پسندیدگیاں:
    792
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    زبردست پوائنٹ ہے سبحان اللہ
  3. محمد یوسف

    محمد یوسف منتظم۔ أیده الله منتظم

    پیغامات:
    220
    موصول پسندیدگیاں:
    185
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    بڑوں کی باتیں بڑی ہوتی ہیں
    احمدقاسمی نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں