درس حدیث

'افکارِ قاسمی شمارہ 6: مئی 2013' میں موضوعات آغاز کردہ از پیامبر, ‏مئی 14, 2013۔

  1. پیامبر

    پیامبر وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,245
    موصول پسندیدگیاں:
    568
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    <div style="direction:rtl;"><TABLE border="1" width="800">
    <table border="1" width="600" align="center">
    <tr>
    <td style="text-align:center; font-size:36px; padding:20px;">
    درس حدیث
    </td>
    </tr>
    <tr>
    <td style="text-align:center; font-size:26px; padding:20px;">
    احمد قاسمی
    </td>
    </tr>
    <tr>
    <td style="text-align:justify; font-size:22px; padding:20px;">
    عن ابی قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم مِنْ دَعَا اِلٰی ھُدًی کَانَ لَہ‘ مِنَ الْاٰجْرِ مِثْلَ اُحُوْرِ مَنْ تَبِعَہ‘ لَاَیَنْقُصُ ذٰلِکَ مِنْ اُجُوْرِھِمْ شَیْئًا وَمَنْ دَعَا اِلٰی ضَلَالَۃٍ کَانَ عَلَیْہِ مِنَالْاِثْمِ مِثْلَ اَیَّامٍ مَنْ تَبِعَہ‘ لَا یَنْقُصُ ذٰلِکَ مِنْ اٰثَامِھِمْ شَیْئًا( رواہ مسلم)
    ترجمہ:اور حضرت ابو ہریرہؓ راوی ہیں کہ سرکار دو عالم ﷺ نے ارشاد فرمایا ،جس شخص نے( کسی کو)ہدایت کی طرف بلایا اس کو اتنا ہی ثواب ملے گا جتنا کہ اس کی پیروی اخٹیار کرے،اور (اس پیروی کرنے والے)کے ثواب میں کچھ بھی کچھ بھی کم نہ ہوگا۔اور جو (کسی کو) گمراہی کی طرف بلائے اس کو اتنا ہی گناہ ہوگا جتنا کہ اس کی اطاعت کریں اور ان کے گناہ میں کچھ بھی کم نہ ہوگا ۔
    تشریح: یعنی جو شخص کسی بھلائی کا باعث اور ذریعہ ہوگا اس کو بھی اتنا ہی ثواب ملے گا جتنا کہ اس بھلائی پر عمل کرنے والے کو ،لیکن ہدایت وراستی کی طرف بلانے والے کو جو ثواب ملے گا اس کی وجہ سے اس کی پیروی کرنے والے کے ثواب میں کوئی کمی نہیں ہو گی ، کیونکہ اطاعت کرنے والوں کو جو ثواب ملے گا اور ان کے عمل صالح کی بنا پر ہو گا اور جو ثواب بھلائی کی طرف بلانے والوں کو ہوگا وہ اس کی دعو ت وتبلیغ کی بنا پر ہوگا ۔یہی حال ان لوگوں کے گناہ کا ہے جو لوگوں کو غلط عقائد وااعمال کی طرف بلاتے ہیں اور خلاف شرع طریقہ پر عوام کو چلاتے ہیں
    </td>
    </tr>
    </table></div>

اس صفحے کو مشتہر کریں