دوگدھے

'اردو نثر' میں موضوعات آغاز کردہ از مولانانورالحسن انور, ‏دسمبر 10, 2012۔

  1. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    141
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ایک انگریز ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سیاح جنوبی فرانس میں بلند پہاڑی پہ چڑھ رہا تھا کہ راستے میں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    اسے ایک سبزی فروش ملا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جو گاڑی میں جتے ہوئے گدھے کو ہانک رہا تھا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔مگر گدھا بہ مشکل قدم اٹھارہا تھا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سیاح نے ایک ہاتھ سے گاڑی کو دھکیلنا شروع کیا ۔۔۔۔۔۔۔۔ اس طرح سیاح کی مدد سے گد ھا گاڑی پہاڑی کے اوپر پہنچ گئی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سبزی فروش نے سیاح کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میں جناب کا بہت ممنوں ہوں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    دراصل صرف ایک گدھے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کی مدد سے یہاں تک پہنچنا ممکن نہ تھا
  2. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,731
    موصول پسندیدگیاں:
    207
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    اوراس طرح سبزی فروش کودوسراگدہاوہ بھی دوپاؤں والامفت میں مل گیااورکام بن گیا۔بہت خوب جناب عالی!
  3. سیفی خان

    سیفی خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    4,554
    موصول پسندیدگیاں:
    71
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    بہت خوب جناب :->~~ :->~~ :->~~
  4. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اس کا مطلب ہے کہ دو پاؤں والے کتوں کے بعد اب گدھا ساب کی باری ہے یعنی نئی پسوڑی
  5. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,731
    موصول پسندیدگیاں:
    207
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    کتوں سے پیچہاچہڑاناممکن نہیں جناب؟
  6. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اور گدھوں کے بارے میں کیا خیال ہے حضور ؟؟؟
    وہ کیا کہتے ہیں کہ دھوبی کا کتا نہ گھر نہ گھاٹ کا مگر اس میں گدھے کا کردار بھی بہت اہم ہے سارا بوجھ تو وہی (گدھا) اٹھاتا ہے
  7. سیفی خان

    سیفی خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    4,554
    موصول پسندیدگیاں:
    71
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    حسن خان کی ایک پوسٹ الغزالی میں نظر سے گزری جو کتے اور گدھے پر مشتمل ہے مفتی صاحب اب کتوں کیساتھ گدھوں کا بھی ذکر ہو جاے حسن خان کی یہ دلچسپ پوسٹ مفتی صاحب کی نظر۔۔۔۔ کرتا ہوں
    ایک کسان کے گھر میں ایک کتا ایک گدھا رھتا تھا کتا رکھوالی کرتا گدھا بوجھ
    اٹھانے کیلے ھر کوئی اپنی اپنی حد مین رھ کر اپنا کردار ادا کرتا
    ایک دن چور گھر مین داخل ھوا ڈیوٹی کتے کی تھی کہ آواز سنکر بھو نکنا شروع کردےمگر کتا آرام سے سویا رھا گدھے نے کتے کو جگاکر اسکے فرائض سے اسے آگاہ کرنا ضروری سمجھا اور بتایاچور آیا ھے کتے نے ایک آنکھ کھولکر کہا میرا گلا خراب ھے اور کتا مست ھو کے سو گیا
    گدھے کو اپنے باپ کی نصیحت یاد آگی جسکا کھاو اسی کا گاو اسنے سوچا آج مالک کی ھمدردی حاصل کرنے کا بھتر مو قعہ ھے اسنے زور سے آوازیں نکالنیں شروع کردیں چور اس آوازی ڈرون حملے سے گھبراکر بھاگ گیالیکن مالک اس بے وقتی راگنی سے پریشان ھوکر اٹھ بیٹھا اورگدھے سے کہا او بوقوف گدھے کیون سونے نیہن دے رھا گدھے نے سینہ تان کر کہا جناب چور
    آگیا تھامیں نے آپکو خبردارکرنا ضروری سمجھا
    مالک نے موٹا ڈنڈا پکڑکے گدھے کی پٹائی شروع کردی یہ تیری ذمیداری نیہں
    کتا آرام سے سویا ھوا ھے جسکا مطلب ھے چور نیہن آیا کتا مزے سے کانی آنکھ سے گدھے کی مرمت دیکھتا رھا جب مالک چلا گیا گدھا رو رھاتھا
    کتے نے اس سے کہاآج کل کاانسان بھت بے رحم ھے روز تجھ پر تیری طاقت سے زیادہ بوجھ لادتا ھے اور کھانے کو سوکھا گھاس سونے کے لیے یہ گندی جگہ دیکھ میں کچھ بھی نھیں کرتا کھانا بھی اچھا رھنا بھی اچھا مجھے معلوم تھا چور آیا ھے پررات سونے کےلے ھے یا جاگنے کے لے ارے گدھے میاں مالک کی وفاداری میں اتنی انتہا پسندی ٹھیک نھیں۔۔
    ھمیشہ گدھے پن کا مظاھرہ ھی نہ کیا کر کبھی کتے پن کا مظاھرہ بھی کیا کر
    مجھے دیکھ میں صرف مالک کے آگے دم ھلاتا ھوں مالک مجھے رستم کہ کر پکارتاھے اورتجھےگدھا
    ایسے رھو جیسے ایک نئے دلھن آی اور میہنہ گزرجانے پر بھی اسنے گھر کاکام کاج شروع نہ کیا بوڑھی ساس سارے کام کرتی دولھا اس بات پر پریشان ھوااور اسنے ترکیب سوچی ایکدن اسکی ماں جھاڑو دینے لگی تو دولھا میاں کھنے لگے مآن تو بیٹھ جامیں جھاڑو دیتا ھون اور جھاڑو پکڑنے لگا اسکا خیال تھا میں جھاڑو پکڑوں گا تو دولھن شرم کے مارے کہ دے گی لاو جی میں صفائی کر دیتی ھوںمگر یہاں معاملہ تھا الٹ تھا اسکی ماں نے سمھجا کر بھیجا تھا دیکھنا بیٹی ساس سسر کی ماننے کی جرورت نھیں ھے بس اپنی منواو اور شوھر کو خوب قابو میں رکھیو میں جب دلہنیا بن کے گی تو دوسرے دن ھی ہنڈیا چولھا علیحدہ کروادیا تھا کیا مجال میری اجازت کے بغیر ماں کی طرف آنکھ بھی اٹھا سکے لیکن یہاں گدھے میاں ،،، ارے کتا جی مجھے گدھے میاں نہ کہا کرو مجھے میاوں سے ڈر لگے رے ارے گدھے میاوں تو بلی بولے اور تم اتنے بڑے ہوکر بلی سے ڈرتے ھو ،،لو،، کرلی ،،،کمائی تم نے،،، ارے اب درمیان میں نہ بولنا بات سن ،،، ہاں ،،، میں کہ رھا تھا بیٹے نے کہا ماں تو بیٹھ جامیں جھاڑو لگادیتا ھوں ماں کہتی ھے ارے بیٹا مردوں کاکام نیہں ھےبیٹے نے
    اصرارکیا ماں انکار،،، دولھن غور سے یہ تکرار دیکھتی رھی جب تکرار وانکار بڑھ گیا تو دولھن کہنے لگی ،،جی جھگڑا کاھےکا ماں بیٹا صفائی کی باری مقررکرلین کسنے کسدن صفائی کرنی ھے یہ لطیفہ سنکر گدھا ھنس پڑا .،،،،،،،،،،،،مگر الغزالی والے محتاط رھین

اس صفحے کو مشتہر کریں