روزہ کی اہمیت وفضیلت

'اِسلامی تعلیمات' میں موضوعات آغاز کردہ از احمدقاسمی, ‏مئی 30, 2017۔

  1. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,524
    موصول پسندیدگیاں:
    724
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    روزہ کی اہمیت وفضیلت​
    اہل شرع کے نزدیک کھانے پینے اور جماع سے باز رہنے کا نام ہے ۔لیکن شرط یہ ہے کہ اس میں نیت بھی روزہ کی ہو اور روزہ میں ان رکا وٹوں میں ایک وجہ یہ بھی ہے کہ ان اشیا ء کو نفس خوب چا ہتا ہے اس کی مخالفت کی بنا پر ان اشیاء سے روکا گیا یہ عوام کا روزہ ہے
    خواض کے نز دیک تمام منہیات سے رکنے کا نام روزہ ہے ۔
    اخص الخواض کا روزہ ترک ما سوا للہ کا نام ہے ۔
    نکتہ: اللہ تعالیٰ نے ہمیں ماہِ رمضان کے روزوں کا حکم اس لئے دیا کہ بندے کو سال کی گنتی کے مطابق ثواب نصیب ہو اور یہ اس کا وعدہ ہے کما قال من جاء با لحسنۃ فلہ عشر امثالھا اور ما ہ کامل تیس دنوں کا ہوتا ہے اس حساب سے تین سو روزوں کا ثواب ملا ۔ پھر اس کے ساتھ شوال کے چھ روزے ملا لئے جو ساٹھ روزے بنے اس طرح بندے کو سارے سال کے تین سو ساٹھ روزے نصیب ہو ئے ۔
    حدیث شریف: حضور سرور عالم ﷺ نے اپنی زندگی مبارک میں کل آٹھ ما ہ رمضان کے روزے رکھے ان میں پانچ روزے انتیس دنوں کے اور تین تیس دنوں کے ۔
    نوٹ: رمضان کے روزے کا حکم نبوت کے پندرہ سال اور ہجرت کے تین سال بعد ہوا ۔
    احا دیث شریفہ​
    (۱) میں ہے کہ جس نے تین چیزوں کی حفاظت کی وہ یقینا ولی اللہ ہے اور جو ان تین چیزوں کو ضائع کر دیتا ہے ۔ یقین جانو وہ اللہ کا دشمن ہے ۔
    ۱۔ نماز ۲۔ روزہ ۔ ۳ ۔ جنابت کا غسل
    حدیث۲ ۔اللہ تعالیٰ کی تمام بہشتیں چار آدمیوں کی مشتاق رہتی ہیں ۔
    ۱۔ رمضان کے روزے رکھنے والا ۲۔ قرآن پاک کی تلاوت کر نے والا ۳۔ زبان کی حفاظت کر نے والا ۴۔ بھوکے ہمسایوں کو کھانا کھلانے والا ۔
    فائدہ: اللہ تعالیٰ اپنے اس بندے کے تمام گنا ہ بخش دیتا ہے جو روزہ افطار کراتا ہے خواہ اس نے وہ گناہ پاؤں سے چل کر کئے یا ہاتھوں یا آنکھوں سے کئے اور کانوں سے سنے اور زبان سے کئے یا اس کے قلب سے صادر ہوئے ۔
    حدیث شریف : جب قیامت میں اللہ تعالیٰ اہل قبور کو قبروں سے اٹھنے کا حکم دے گا تو اللہ تعالیٰ ملا ئکہ کو فر مائے گا کہ اے رضوان میرے روزے داروں کو آگے چل کر ملو کیونکہ وہ میری خاطر بھوکے پیاسے رہے اب تم بہشت کی تما اشیاء کو لے کر ان کے پاس پہنچ جاؤ اس کے بعد وہ رضوان زور سے پکار کر کہے گا اے جنت کے غلمان وولدان نور کے بڑے بڑے تھال لاؤ اس کے دنیا کے ریت کے قطرات اور بارش کی بو ندوں کے اور آسمان کے ستاروں اور درختوں کے پتوں کے برابر میوہ جات اور کھانے پینے کی لذیذ اشیاء جمع کر کے رو زے داروں کے سامنے رکھ دی جائیں گی اور ان سے کہا جائے گا جتنا مرضی کھاؤ پیو یہ ان روزوں کی جزا ء ہے جو تم نے دنیا میں رکھے۔
    ایک عجیب الخلقت فرشتہ : حضور اکرم ﷺ نے فرما یا کہ میں نے شب معراج سدرۃ المنتہیٰ پر ایک فرشتہ دیکھا جسے میں نے اس سے قبل نہیں دیکھا تھا اس کے طول وعرض کی مسافت لا کھ سال کے برابر تھی اس کے ستر ہزار سر تھے اور ہر سر میں ستر ہزار منہ اور ہر منہ میں ستر ہزار زبانیں اور ہر سر پر ستر ہزار نورانی چوٹی تھی اور ہر چوٹی کے سر پر بال میں لا کھ لاکھ موتی لٹکے ہوئے اور ہر موتی کے پیٹ پر لکھا ہوا ہے لا الہ الا اللہ محمد رسول اللہ اور اس فرشتے نے اپنا سر اپنے ایک ہا تھ پر رکھا ہےاور دوسرا ہا تھ اس کی پیٹھ پر اور وہ حظیرۃ القدس یعنی بہشت میں ہے جب وہ اللہ کی تسبیح پڑھتا ہے تو اس کی خوش آواز سے خوشی سے عرش الٰہی کا نپ جاتا ہے میں جبرئیل امین سے ان کے متعلق پو چھا تو انہوں نے عرض کیا کہ یہ وہ فرشتہ ہے جسے اللہ تعالیٰ نے آدم علیہ السلام سے دو ہزار سال پہلے پیدا کیا تھا ۔ پھر میں نے کہا اس کی لمبائی وچوڑائی کہاں سے کہاں تک ہے ؟ انہوں نے کہا اللہ تعالیٰ نے بہشت میں ایک چرا گاہ بنائی ہے اور یہ اسی میں رہتا ہے اس جگہ کو اللہ تعالیٰ نے حکم دیا ہے کہ وہ آپ کے اور آپ کی امت کے ہر شخص کیلئے تسبیح پڑھے جو روزہ رکھتے ہیں ۔حضور ﷺ نے اس فرشتہ کے آگے دو صندو ق دیکھے اور ہر صندوق پر ہزار نورانی تالہ تھا میں پو چھا اے جبرئیل یہ کیا ہے؟ انہوں نے کہا اس فرشتہ سے پو چھئے میں نے اس سے پو چھا یہ صندوق کیسے ہیں اس نے کہا اس میں آپ کی
    روزہ رکھنے والی امت کی برأت کا ذکر ہے آپ کو آپ کی روزہ رکھنے والی امت مبارک ہو روح البیان)
    روزے کے مستحبات میں سے یہ ہے کہ اپنے ظاہری اعضاء کو گناہوں سے بچائے اور خواطر با طنہ کی نگرانی کرے اور اللہ تعالیٰ کا قرب ہر گز حاصل نہیں ہو سکتا جب اللہ تعالیٰ کی حرام کردہ اشیاء کو ترک نہ کرے۔
    حضرت شمس الدین دارانی ؒ فر ماتے ہیں کہ میں دن کو روزہ رکھوں اور رات کو حلال لقمہ سے افطار کروں مجھے زیادہ محبوب ہے کہ رات دن نوافل پڑھتے گزاروں۔
    Last edited: ‏جون 1, 2017
    محمدداؤدالرحمن علی نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. محمدداؤدالرحمن علی

    محمدداؤدالرحمن علی منتظم۔ أیده الله منتظم رکن افکارِ قاسمی

    پیغامات:
    5,973
    موصول پسندیدگیاں:
    1,558
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan

اس صفحے کو مشتہر کریں