شہر والوں کو کہاں یاد ہے وہ خواب فروش

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از سیفی خان, ‏نومبر 15, 2011۔

  1. سیفی خان

    سیفی خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    4,554
    موصول پسندیدگیاں:
    72
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan



    شہر والوں کو کہاں یاد ہے وہ خواب فروش

    پھرتا رہتا تھا جو گلیوں میں غبارے لے کر

    -*-

    وہ جو آجاتے تھے آنکھوں میں ستارے لے کر

    جانے کس دیس گئے خواب ہمارے لے کر

    -*-

    شہرِ محبت ہجر کا موسم، عہد و وفا اور میں

    تُو تو اِس بستی سے خوش خوش چلا گیا اور میں؟

    تُو جو نہ ہو تو جیسے سب کو چپ لگ جاتی ہے

    آپس میں کیا باتیں کرتے، رات ، دِیا اور میں​
  2. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
  3. سیفی خان

    سیفی خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    4,554
    موصول پسندیدگیاں:
    72
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    شکریہ کا شکریہ '@^@|||

اس صفحے کو مشتہر کریں