عالم اسلام کی چند جلیل القدر عالمات

'فخر خواتین' میں موضوعات آغاز کردہ از احمدقاسمی, ‏اکتوبر 31, 2012۔

  1. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,724
    موصول پسندیدگیاں:
    818
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    عالم اسلام کی چند جلیل القدر عالمات​

    امّ عمر بنت حسان بغدادیؒ: امّ عمر بنت ابو الغص حسان بن زید ثقفی بغدادیؒ نے اپنے والد ابو الغض اور اپنے شوہر سعید بن یحیٰ بن قیس سے حدیث کی روایت کی اور ان سے حضرت امام احمد بن حنبل ؒ ،ابو ابراہیم ترجمانیؒ ، محمد بن صباح جرجانی ؒ ،ابراہیم بن عبد اللہ ہر ویؒ اور حضرت علی بن مسلم بن مسلم طوسیؒ نے روایت کی ۔ حضرت خطیب بغدادیؒ کہتے ہیں کہ میں نے ام عمر سے حدیث کی سماعت کی ہے ۔ وہ بغداد میں معاذ بن مسلم کے مکان کے پاس رہتی تھیں اور ان سے ہمارے کئی اصحاب نے راویت کی ہے۔

    زینب بنت سلیمان بدادیہؒ : زینب بنت سلیمان بن علی بن عبد اللہ بن عباس بن عبد المطلبؒ کا شمار فاضل نساء میں تھا ۔انہوں نے اپنے والد سلیمان بن علی ؒ سے حدیث کی تعلیم حاصل کی اور ان سے عاصم بن علی واسطی ، قاضی جعفر بن عبد الواحد ، عبد الصمد بن موسیٰ ہاشمی ،امام احمد خلیل بن مالکؒ نے راویت کی ۔ ایک مرتبہ خلیفہ مامون کے یہاں اس حال میں گئیں کہ سواری پر تھیں بدن پر سفید قیمتی طیلسان تھا۔ عدن کی سیاہ زرق برق چادر میں ملبوس تھیں ۔ان کو دیکھتے ہی نائب حاجب عطاء نے حریم کا پردی اٹھایا اور بڑھ کر ان کے پیر کو بوسہ دیا ، اسی حال میں حاجب علی نے ان سے ایک حدیث روایت کی ۔

    خدیجہ ام محمد بغدادیہؒ: خدیجہ ام محمد حضرت امام احمد بن حنبلؒ کی خدمت میں جاکر ان سے حدیث پڑھتی تھیں ۔اس کے بعد انھوں نے یزید بن ہارون ،اسحاق بن یوسف ارزقل ، ابو نصر ہاشم بن قاسم ؒ نے روایت کی ۔ان کا بیان ہے کہ ۲۲۶ھ میں خدیجہ ام محمدؒ نے مجھ سے حدیث بیان کی ۔ وہ میرے والد کے یہاں آتی تھیں ،ان سے حدیث سنتی تھیں اور حدیث بیان کرتی تھیں۔
    زینب بنت سلیمان بغدادیہؒ: زینب بنت سلیمان خلیفہ ابو جعفر منصور کی پوتی اور سلیمان کی لڑکی تھیں ۔انہوں نے اپنے والد سے حدیث کی روایت کی اور سماعت کی اور ان سے ان کے بھائی ابو یعقوبؒ روایت کی۔

    مضغہ، مخہ ،زاہدہ اخوات بشر حافیؒ : مضغہ ، مخہ اور زاہدہ تینوں مشہور عابد وزاہد حضرت بشر حافیؒ کی بہنیں عبادت وتقویٰ میں مشہور تھیں ۔مضغہ سب سے بڑی تھیں ۔زاہدہ کی کنیت ام علی تھی ۔امام احمد بن حنبلؒ کے صاحبزادے عبد اللہؒ کا بیان ہے کہ ایک دن میں والدہ کے ساتھ مکان میں موجود تھا کسی نے دروازہ کھٹکھٹایا ۔والدہ کے حکم پر میں نے دروازہ کھولا تو ایک عورت کھڑی تھی ۔اس نے کہا کہ میں امام صاحبؒ سے ملنا چاہتی ہوں ، تم اجازت لو اور اجازت کے بعد اندر آکر سلام لہا کہ ابو عبد اللہ ! میں چراغ کی روشنی میں سوت کاتتی ہوں ۔ بعض اوقات چراغ بجھ جاتا ہے تو چاندنی میں کاتتی ہوں ۔ تو ایسی حالت میں مجھ کو چراغ اور چاندنی کی روشنی میں کاتتے ہوئے دھاگے کی اُجرت میں فرق کرنا چاہئے؟ امام صاحبؒ نے کہا :اگر تم کو فرق معلوم ہوتا ہو تو ظاہر کردو ۔ پھر اس عورت نے پوچھا کہ مریض کا تکلیف کی وجہ سے رونا کیا شکوہ ہے؟ امام صاحبؒ نے کہا کہ میرے خیال میں یہ شکوہ نہیں ہے ۔ اس کے بعد وہ چلی گئی ۔عبد اللہ کہتے ہیں کہ والد صاحب ؒ نے کہا کہ میں نے کسی شخص سے اس قسم کا مسئلہ معلوم کرتے ہوئے نہیں سنا ۔ تم جاؤ دیکھو یہ عورت کہاں جاتی ہے اور میں نے دیکھا کہ وہ بشر بن حافیؒ کے مکان میں گئی ہے اور وہ ان کی بہن تھی ۔واپس آکر والد صاحبؒ کو بتایا تو فرمایا کہ بشر حافیؒ کی بہن کے سوا ایسی عورت ہو نا محال ہے۔

    عباسیہ زوجہ امام احمد بن حنبلؒ: عباسیہ بنت فضل امام احمد بن حنبل ؒ کی زوجہ اور ان کے صاحبزادے صالح کی ماں ہیں ۔ان سے صرف صالح پیدا ہوئے ۔ بڑی نیک اور بزرگ عورت تھیں ۔ امام صاحبؒ کہتے ہیں کہ میرے اور اس کے درمیان کبھی ایک بات میں اختلاف نہیں ہوا ۔امام صاحب ؒ کی زندگی میں انتقال ہوا۔
  2. بنت حوا

    بنت حوا فعال رکن وی آئی پی ممبر

    پیغامات:
    4,572
    موصول پسندیدگیاں:
    459
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    جزاک اللہ خیرا
  3. سیفی خان

    سیفی خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    4,553
    موصول پسندیدگیاں:
    72
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    بہترین معلوماتی اور مسلم خواتین کے لئے مشعل راہ مضمون ہے
    جزاک اللہ
  4. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,697
    موصول پسندیدگیاں:
    775
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
  5. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,724
    موصول پسندیدگیاں:
    818
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    ]میمونہ اخت ابراہیم خواصؒ:میمونہ مشہور بزرگ حضرت ابراہیم بن احمد خواصؒ کی بہن تھیں۔ تقویٰ وتوکل ،زہد وعبادت اور دنیا سے بے نیازی میں اپنے بھائی کی پیرو تھیں۔ ایک مرتبہ کسی نے حضرت ابراہیم خواصؒ کا دروازہ کھٹکھٹایا ۔ بہن میمونہ نےپوچھا تم کس کی تلاش ہے ؟اس نے ابراہیم خواصؒ کا نام لیا تو میمونہ نے کہا کہ وہ باہر گئے ہیں ۔اس نے پوچھا کب آئیں گے ؟ میمونہ نے جواب دیا کہ جس کی جان کسی دوسرے کے قبضے میں ہو کون کہہ سکتا ہے کہ وہ کب لوٹے گا۔

    حواریہ اخت ابو سعید خرازہؒ: حواری شیخ ابو سعید بن عیسیٰ خزاز کی بہن تھیں ۔انہوں نے اپنے بھائی سے حدیث پڑھی اور ان سے فاظمہ بنت احمد سامریہ نے پڑھا۔

    عبدہ بنت عبد الرحمٰن انصاریہؒ: عبدہ بنت عبد الرحمٰن بن مصعب بن ثابت احمد انصاریہؒ نے اپنے والد سے حدیث کی روایت کی اور ان سے محمد بن مخلد دوری اور سلیمان بن احمد طبرانی نے روایت کی ۔ان کا مکان بغداد میں مربعہ الخرسی ( خرسی چوک) میں تھا ۔بڑی عابدہ ،عاقلہ ، فصیحہ خاتون تھیں۔

    سمانہ بنت حمدانؒ: سمانہ بنت حمدان محمد بن موسیٰ انباریہ وضاح بن حسان کی نواسی ہیں۔انہوں نے اپنے والد سے حدیث کی تعلیم حاصل کی اور اپنے نانا وضاح بن حسان کی کتاب سے بھی استفادہ کیا۔ ان سے ابو بکر شافعی اور ابو القاسم طبرانی نے حدیث کی روایت کی ۔ سمانہ انباریہ بھی رہتی تھیں۔
  6. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    بہت شکریہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
  7. أضواء

    أضواء وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,522
    موصول پسندیدگیاں:
    23
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Saudi Arabia
    جزاك الله كل خيرو نفع الله بك الإسلام و المسلمين۔۔۔۔

اس صفحے کو مشتہر کریں