عرب مسلمانوں کے آٹھ سو بلین ڈالرز یہودی بینکوں میں کیوں؟

'تاریخ اسلام' میں موضوعات آغاز کردہ از مفتی ناصرمظاہری, ‏فروری 4, 2013۔

  1. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,731
    موصول پسندیدگیاں:
    207
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    عرب مسلمانوں کے آٹھ سو بلین ڈالرز یہودی بینکوں میں کیوں؟
    اللہ تعالیٰ نے آج بھی مسلمانوں کوبڑی دولت سے نوازاہے ،مگرافسوس یہ دولت جہاد فی سبیل اللہ اوراسلام اوراہل اسلام کے دفاع میں صرف کرنے کے بجائے عیاشی اورفحاشی پرخرچ ہو رہی ہے اورجوبچ جاتی ہے وہ یہودی وعیسائی بنکوں میں جمع کردی جاتی ہے جس سے یہودونصاریٰ اپنی حکومت چلارہے ہیں اور اسی رقم کے کچھ حصہ سے مسلم ممالک کو قرضے دئے جاتے ہیں اسی میں سے نہایت ہی قلیل مقدار سے غریب مسلم ممالک میں رفاہی ادارے کھول کر فحاشی پھیلانے ،چاسوسی کرنے، مسلمانوں کو مرتدبنانے اورغریب مسلمانوں کواپنے حکمرانوں سے متنفر کرنے کی ناپاک کوششوں میں مصروف ہیں آج صرف عرب کروڑپتی مسلمانوں کا(800)آٹھ سو بلین ڈالر (8000,000,000,000) ڈالر (آٹھ کھرب ڈالر) (Rs. 44,000,000,000,000= Rs.55x) سرمایہ اغیارکے یہودی بنکوں میں موجودہے۔سعودیہ کے اٹھتر ہزارمسلمانوں کے دوسو اکتالیس (241)بلین ڈالر،امارات کے(59)انسٹھ ہزار مسلمانوں کے (160)ایک سوساٹھ بلین ڈالر، کویت کے (36)چھتیس ہزارافراد کے(98)اٹھانوے بلین ڈالر ذاتی سرمایہ امریکہ، برطانیہ ،فرانس، اورسویزرلینڈ کے یہودی بنکوں میں موجودہیں بین الاقوامی مالیاتی کمیٹی کے چیرمین مایکل جیلز کے بیان کے مطابق رپورٹ میں صرف ان افراد کولیا گیا ہے جن کا جاری بنیادی سرمایہ پاکستانی کرنسی میں تین کروڑ یا اس سے متجاوز ہو۔(روز نامہ الاتحاد 8مارچ 1997) گویا ڈھائی کروڑ کے مالکان اس کے نزدیک مالدار یا کروڑپتی ہی نہیں اگران کو بھی شامل تفتیش کیا جائے تو یہ اعداد شمارکہیں زیادہ ہوجائیں گے، آج مسلمانوں کی حالت زار کے مقابلہ میں خود مسلمانوں کے پاس مال ودولت کے یہ انبار درحقیقت قرآن وحدیث کے اس اعلان کی تصدیق کرتے ہیں کہ جب تم دنیا سے دل لگا بیٹھو گے اورجہاد چھوڑدوگے توتم پراللہ تعالیٰ ذلت مسلط فرمادیں گے یہاں تک کہ تم جہاد کی طرف لوٹ آئو۔
    مسلمانو! جومال جہاد فی سبیل اللہ میں،دین کے دفاع اور اس کی نشرواشاعت میں،غریب مسلمانوں کی حاجت برآری میں صرف نہ ہو تو یادرکھو وہ وبال ہے اور اگروہ الٹا یہود ونصاریٰ کودئے دیا جائے تو اس سے بڑھ کر اورکیا ظلم ہوگا ،مشرقی وسطیٰ کے ناعاقبت اندیش مسلمانوں سے عبرت پکڑو جن کو اللہ نے دینی اعتبار سے وہ خطہ عطا فرمایا جس میں تینوں مقدس مقامات واقع تھے اوردنیوی اعتبارسے پیٹرول، گیس، سونا،اوردیگر معدنیات عطافرمائیں جس کے تمام محتاج ہیں مگرآج اسی کے خطے کے مسلمان کافروں کے آگے سب سے بے بس اورذلت ورسوائی سے دوچار ہیں بیت المقدس چھن چکا ہے دیگرمقدس مقامات خطرے میں ہیں تو کیا تم اب بھی اللہ کے نبی کی آوازپرلبیک نہیں کہوگے؟دنیاکی محبت اورترک جہاد کے گناہ کو پھربھی دہراتے رہوگے؟ (حزب المؤمن)
  2. محمد ارمغان

    محمد ارمغان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,661
    موصول پسندیدگیاں:
    106
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    کیا تم اب بھی اللہ کے نبی کی آوازپرلبیک نہیں کہوگے؟
    دنیاکی محبت اورترک جہاد کے گناہ کو پھربھی دہراتے رہوگے؟
    نیندِ غفلت سے جاگو مسلمانو!

اس صفحے کو مشتہر کریں