غزل ۔۔ایک لمحے کو ٹھہر کر سوچیں ۔۔ والد گرامی جناب نصراللہ مہر صاحب

'پسندیدہ کلام' میں موضوعات آغاز کردہ از ذیشان نصر, ‏اپریل 4, 2012۔

  1. ذیشان نصر

    ذیشان نصر ناظم۔ أیده الله ناظم

    پیغامات:
    635
    موصول پسندیدگیاں:
    28
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ایک لمحے کو ٹھہر کر سوچیں
    کھو گئی ہے کہاں سحر سوچیں

    کن علاقوں سے ہو کے آتی ہیں
    یہ ہوائیں ذرا شجر سوچیں

    ہاتھ تھامے گذشتہ لمحوں کا
    گھومتی ہیں نگر نگر سوچیں

    سرد لہجوں کے برف زاروں پر
    منجمد ہیں تمام تر سوچیں

    کوئی نزدیک آتا جاتا ہے
    ہوتی جاتیں ہیں معتبر سوچیں

    ایک لمحے کی بھول ہوتی ہے
    پھر ستاتی ہیں عمر بھر سوچیں

    والد گرامی جناب نصراللہ مہر صاحب​
  2. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,929
    موصول پسندیدگیاں:
    969
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    ایک لمحے کو ٹھہر کر سوچیں
    کھو گئی ہے کہاں سحر سوچیں

    بہت خوب
  3. Ameen Asim

    Ameen Asim وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    محترم ذی شان نصر صاحب !


    کن علاقوں سے ہو کے آتی ہیں
    یہ ہوائیں، ذرا شجر سوچیں

    کوئی نزدیک آتا جاتا ہے
    ہوتی جاتیں ہیں معتبر سوچیں
    واہ واہ
    بہت خوب۔۔۔ عمدہ کلام ہے۔
    دلی داد قبول فرمائیے۔
    والسلام
    امین عاصم
  4. پیامبر

    پیامبر خوش آمدید مہمان گرامی

    اچھا کلام ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں