غیر مقلد کے شیخ الاسلام پر دارالعلوم دیوبند کا علمی فیضان

'بحث ونظر' میں موضوعات آغاز کردہ از احمدقاسمی, ‏دسمبر 19, 2012۔

  1. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,631
    موصول پسندیدگیاں:
    791
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    غیر مقلد کے شیخ الاسلام پر دارالعلوم دیوبند کا علمی فیضان​
    دیوبندیوں کے فورم الغزالی الخ
    خط کشیدہ الفاظ جناب ابن بشیر کے ہیں جن سے کدورت ٹپکتی ہے لیکن انہیں کے شیخ الاسلام مولانا ثناء اللہ امرتسری صاحب دیوبند کے دارالعلوم کے فیضان اور سند کو زندگی بھر باعث افتخار سمجھتے رہے۔
    غیر مقلدوں کی ڈائری سے ایک اقتباس:
    مولانا ثناء اللہ صاحب امر تسری رحمۃ اللہ علیہ جن کا نام لے لے کر آج کل کے غیر مقلدین بہت اچھل کود کرتے ہیں ،شاید بہت کم لوگوں کو معلوم ہو کہ یہ مولانا امر تسری دارالعلوم دیوبند کے فضلاء میں سے تھے ، دورہ حدیث دارالعلوم دیوبند میں پڑھا اور اسی دارالعلوم دیوبند کی سند ان کے لئے زندگی بھر سر مایہ افتخار رہی ، دیوبند ہی میں ان کی مناظرانہ طبیعت کو چار چاند لگے ،اور حضرت شیخ الہند مولانا محمود الحسن ساحب صدر مدرس ، شیخ الحدیث دارالعلوم دیوبند نے وقت رخصت ان سے جو چند کلمات کہے وہ مولانا امر تری کے لئے تازندگی مشعل ہدایت وباعث استقامت بنے رہے ، لیجئے اب پوری حکایت مولانا امر تسری ہی کی زبانی سنئے ۔بڑی دلچسپ یہ حکایت ہے اس سے اندازہ ہو گا کہ دارالعلوم دیوبند نے کیسے کیسے ذروں کو خورشید بنایا ، مولانا امر تسری فر ماتے ہیں !
    “ پھر سہارنپور چند روز قیام کرکے 1307ھ میں دیوبند پہنچا وہاں کتب درسیہ معقول ومنقول ہر قسم کی پڑھیں ۔کتب معقول میں قاضی مبارک، میر زاہد ، امور عامہ صدرا شمس بازغہ ؤغیرہ ، اور منقولات میں ہدایہ ، توضیح ، مسلم الثبوت وغیرہ ،ریاضی میں شرح چغمینیوغیرہ بھی پڑھیں ۔دورہ حدیث میں شریک ہوا ،استاذ پنجاب کا درس حدیث اور اساتذہ دیوبند کا درس حدیث ان دونوں میں جو فرق ہے اس سے فائدہ اٹھایا ۔
    دیوبند کی سند امتحان میرے لئے باعث فخر میرے پاس موجود ہے:
    اس کے بعد مولانا امر تسری ۔ مسرت آمیز واقعہ “ کا عنوان قائم کر کے فر ماتے ہیں :
    ایک واقعہ ایسا مسرت آمیز ہے میں اپنی عمر کی کسی حالت میں نہیں بھولا، اور نہ بھول سکتا ہوں بلکہ جب معاصرین کے نرغے میں ہوتا ہوں تو وہ واقعہ مجھے فورا دل شاد کر دیتا ہے جسکی تفصیل یہ ہے ۔
    “مدرسہ دیوبند می ان دنوں مولانا محمود الحسن اعلی الہ مقام مدرس اعلیٰ تھے درس کی ہر کتاب پڑھتے ہوئے میں بے با کانہ جراءت سے اعتراض کرتا مولانا مرحوم کا بہت وقت خاص مجھ پر خرچ ہوتا ،جب آخری ملاقات کیلئے رخصت چاہی تو فرمایا !
    “طلبا تمہاری شکایتیں بہت کرتے تھے کہ پوچھنے میں وقت بہت ضائع کرتا ہے ، ہم کہتے تھے کہ کوئی طالب علم پو چھنے والا ہو تو پوچھے اس کے سوال صحیح ہوں یا غلط ، چھ پو چھے تو سہی ،تمہیں بھی خوش ہونا چاہئے کہ جسے خدا کچھ دیتا ہے اس کا حسد ہوتا ہے ۔یہ سن کر میری آنکھ آبدیدہ ہو ہوگئیں اور اس شعر کا مضمون زبان پر جاری ہوا ۔
    دیدہ ایم در غنچگی چندیں جفائے باغباں
    بعد گل گشتن نمی دانم چہ گل خواہد شگفت​

    خدا جانے یہ فقرہ اپنے اندر کیا صداقت رکھتا تھا کہ طالبعلمی کے بعد زمانہ بلوغت علمی میں اس کا وہ اثر دیکھا کہ صاحب در مختار کا یہ شعر ہمیشہ ورد زبان رہا۔
    ھم یحسدوننی وشر الناس کلھم
    من عاش فی الناس یوما یر محسود


  2. zakwan

    zakwan وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    73
    موصول پسندیدگیاں:
    2
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    چشم کشااورروح کومعطرکردینے والااقتباس ہے۔جزاک اللہ خیرا
  3. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,631
    موصول پسندیدگیاں:
    791
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    واہ کیا بات ہے ۔بہت بہت شکریہ۔
  4. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    حضرات علماء دیوبند کا فیض ہے کہ ان نے مس خام کو کندن بنایا
    بہت شکریہ حضرت جی
  5. ذیشان نصر

    ذیشان نصر ناظم۔ أیده الله ناظم

    پیغامات:
    634
    موصول پسندیدگیاں:
    28
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    سربکف سر بلند۔۔۔۔۔دیوبند۔۔۔۔دیوبند
  6. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جادو وہ جو سر چڑ ھ کے بولے
  7. qureshi

    qureshi وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    292
    موصول پسندیدگیاں:
    209
    جگہ:
    Afghanistan
    دیو بند کے احسانات،ہر مسلک اور ہر قوم پر ہیں،

اس صفحے کو مشتہر کریں