لفظ موت

'علمی و ادبی لطیفے' میں موضوعات آغاز کردہ از مولانانورالحسن انور, ‏جون 18, 2013۔

  1. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    یک صاحب موت سے بہت ڈرتے تھے۔ یہاں تک کہ گھر میں اس لفظ کا استعمال بالکل بند تھا اگر محلے میں کوئی مَر جاتا تو کہتے ، پیدا ہو گیا ہے۔
    ایک روز گھر میں مہمان آیا۔ ابھی مہمان اور میزبان کے درمیان باتیں ہورہی تھیں کہ گھریلو ملازم روتا ہوا آیا۔۔۔ مالک نے رونے کی وجہ پوچھی تو وہ نوکر کہنے لگا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ "میرا باپ پیدا ہوگیا ہے۔"

    مہمان نے حیران ہوکر پوچھا۔۔۔۔ "اور تمھاری ماں؟
    "
    نوکر نے روتے ہوئے جواب دیا۔۔۔۔ "وہ تو دو سال پہلے پیدا ہو گئی تھی۔"

    مہمان نے آنکھیں پھاڑتے ہوئے پوچھا۔۔۔ "پھر تم کب پیدا ہوئے؟"

    نوکر نے کہا۔۔۔ "اگر یہی حال رہا تو میں بھی ایک دن پیدا ہو جاؤں گا۔"
  2. محمدداؤدالرحمن علی

    محمدداؤدالرحمن علی منتظم۔ أیده الله Staff Member منتظم رکن افکارِ قاسمی

    پیغامات:
    6,301
    موصول پسندیدگیاں:
    1,708
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ہاہاہاہاہا۔ آپ بھی کمال کے لطیفے لاتے ہیں جناب ۔

اس صفحے کو مشتہر کریں