محسن نقوی کی خوبصورت غزل

'بزمِ غزل' میں موضوعات آغاز کردہ از بنت حوا, ‏دسمبر 30, 2013۔

  1. بنت حوا

    بنت حوا فعال رکن وی آئی پی ممبر

    پیغامات:
    4,572
    موصول پسندیدگیاں:
    458
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    محسن نقوی کی خوبصورت غزل

    ﺧﻮﺍﺏ ﺗﮭﺎ ﺩﯾﺪﮦ ﺑﯿﺪﺍﺭ ﺗﻠﮏ ﺁﯾﺎ ﺗﮭﺎ
    ﺩﺷﺖ ﺑﮭﭩﮑﺘﺎ ﮨﻮﺍ ﺩﯾﻮﺍﺭ ﺗﻠﮏ ﺁﯾﺎ ﺗﮭﺎ

    ﺍﺏ ﻣﯿﮟ ﺧﺎﻣﻮﺵ ﺍﮔﺮ ﺭﮨﺘﺎ ﺗﻮ ﻋﺰﺕ ﺟﺎﺗﯽ
    ﻣﯿﺮﺍ ﺩﺷﻤﻦ ﻣﯿﺮﮮ ﮐﺮﺩﺍﺭ ﺗﻠﮏ ﺁﯾﺎ ﺗﮭﺎ

    ﺍﺗﻨﺎ ﮔﺮﯾﮧ ﮨﻮﺍ ﻣﻘﺘﻞ ﻣﯿﮟ ﮐﮧ ﺗﻮﺑﮧ ﺗﻮﺑﮧ
    ﺯﺧﻢ ﺧﻮﺩ ﭼﻞ ﮐﮯ ﻋﺰﺍﺩﺍﺭ ﺗﻠﮏ ﺁﯾﺎ ﺗﮭﺎ

    ﻋﺸﻖ ﮐﭽﮫ ﺳﻮﭺ ﮐﮯ ﺧﺎﻣﻮﺵ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ ﻭﺭﻧﮧ
    ﺣﺴﻦ ﺑﮑﺘﺎ ﮨﻮﺍ ﺑﺎﺯﺍﺭ ﺗﻠﮏ ﺁﯾﺎ ﺗﮭﺎ

    ﻣﺤﺴﻦ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﻣﻘﺪﺭ ﻧﮯ ﺑﻐﺎﻭﺕ ﮐﺮ ﺩﯼ
    ﺟﺐ ﻣﯿﮟ ﺍﺱ ﺷﺤﺺ ﮐﮯ ﻣﻌﯿﺎﺭ ﺗﻠﮏ ﺁﯾﺎ ﺗﮭﺎ​
  2. ڈاکٹر عبداللہ معاویہ

    ڈاکٹر عبداللہ معاویہ وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    3
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    بہت اعلی! محسن نقوی واقعی بہت معیاری شاعر ھے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں