مصلح اورمفتی کے لئے شرائط

'متفرق مسائل' میں موضوعات آغاز کردہ از مفتی ناصرمظاہری, ‏دسمبر 6, 2012۔

  1. مفتی ناصرمظاہری

    مفتی ناصرمظاہری کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی منتظم اعلی

    پیغامات:
    1,731
    موصول پسندیدگیاں:
    207
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    مصلح اورمفتی کے لئے شرائط​
    حضرت مولانا محمدیعقوب صاحب رحمۃ اللہ علیہ کا ایک ارشاد اس باب میں یاد آیا فرمایا تھا الغائب حجۃ معہ شیخ محی الدین ابن عربی رحمۃ اللّٰہ علیہ پر بعض خشک علماء بڑا ہی سب وشتم کرتے ہیں میں کہتا ہوں کہ اس کی کیا ضرورت ہے کہ یہ برا بھلا کہاجائے ،نصوص کو نہ مانئے نصوص کا ماننا فرض نہیں مگر نصوص کا ماننا تو فرض ہے اورنصوص کا حکم ہے کہ بدون دلیل شرعی یقینی کے کسی کوبراکہنا جائز نہیں اس لئے میں کہا کرتا ہوں کہ مصلح اورمفتی میںسب چیزیں ہونا چاہئیں،قرآن بھی، حدیث بھی ،فقہ بھی، تصوف بھی پھر انشاء اللہ تعالیٰ ایسا شخص حدودپر رہ سکتا ہے ،جامع نہ ہونے کی وجہ سے کچھ نہ کچھ گڑبڑہوہی جاتی ہے محقق اورجامع موقع اورمحل کودیکھتا ہے اس لئے ضرورت ہے کہ وہ فقیہ بھی ہو مفسربھی ہو ۔​
  2. محمد ارمغان

    محمد ارمغان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,661
    موصول پسندیدگیاں:
    106
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    یہ بات ہمارے ہر دو مفتی صاحب میں بھی محسوس ہوتی ہے۔ تصدیق خود کریں گے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں