معذرت کا انداذ

'حکایات' میں موضوعات آغاز کردہ از مولانانورالحسن انور, ‏ستمبر 29, 2012۔

  1. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ایک بادشاہ نے دستر خوان لگانے کا حکم دیا اور اپنے خاص لوگوں کا کھانے کی دعوت دی جب دسترخوان لگ گیا تو خادم اپنے کندھے پر کھانے کی رکابی لے کر آیا لیکن جب بادشاہ سے قریب ہوا تواس پر ہیبت طاری ہوگی چنانچہ اس کا پاؤں پھسل گیا اور رکابی سے تھوڑا سا شوربا گر کر بادشاہ کے کپڑے کے کنارے پر لگ گیا بادشاہ غصے سے آگ بگولہ ہو گیا اور خادم کو قتل کرنے کا حکم دے دیا خادم نے جب بادشاہ کا طیش دیکھا اور بادشاہ کا عزم اس پر اچھی طرح واضح ہوگیا تو رکابی میں موجود سارا شوربا بادشاہ کے سر پر انڈیل دیا بادشاہ نے غرا کر آواز دی ارے تیری بربادی ہو یہ کیا کررہا ہے خادم نے عاجزانہ انداز میں عرض کیا بادشاہ سلامت میں نے یہ حرکت آپ کی عزت وشان اور غیرت کے تحفظ کے لیے کی ہے بادشاہ نے پوچھا وہ کیسے خادم کہنے لگا مجھے ڈر ہے کہ لوگ میرے قتل پر یہ نہ کہیں کہ ہمارا بادشاہ بھی عجیب جلالی ہے کہ معمولی سے غلطی پر خادم کو قتل کروادیا حالانکہ خادم نے جان بوجھ کر یہ غلطی نہیں کی تھی پھر لوگ بادشاہ کو ظالم وجابر گرداننے لگیں گے لہزا میں نے یہ دوبارہ جان بوجھ کر بھاری غلطی کرنے کی جرات کی تاکہ لوگوں کو پتا چلے تو اسے معمولی غلطی نہ سمجھیں آپ کو بھی معزرت کی ضرورت نہ ہوگی اور آپ کی عزت اور ہیبت بھی لوگوں کے دلوں میں باقی رہے گی خادم کی گفتگو سن کر بادشاہ تھوڑی دیر سر جھکائے رہا پھر سر اٹھایا اور گویا ہوا اے فعل قبیح کا ارتکاب کرکے بہترین اسلوب میں معزرت کرنے والے ہم نے تیرے فعل قبیح اور گناہ عظیم کو تیری اچھی معزرت کے سبب معاف کردیا جا تو اللہ کے لیے آزاد ہے
  2. اسداللہ شاہ

    اسداللہ شاہ وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    5,318
    موصول پسندیدگیاں:
    48
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جزاک اللہ فی الدارین
  3. أضواء

    أضواء وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,522
    موصول پسندیدگیاں:
    23
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Saudi Arabia
    جزاك الرحمن الجنة

اس صفحے کو مشتہر کریں