ناچنے والی بطخ

'علمی و ادبی لطیفے' میں موضوعات آغاز کردہ از مولانانورالحسن انور, ‏جون 16, 2013۔

  1. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء Staff Member رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,537
    موصول پسندیدگیاں:
    144
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan

    ایک مداری مجمع لگائے تماشہ کر رہا تھا۔ اس کے سامنے کھلی کڑاہی میں ایک بطخ بہت سلیقے سے ڈانس کر رہی تھی۔ ایک سرکس کا مالک ادھر سے گزرا۔ اس نے ناچنے والی بطخ دیکھی تو سوچا کہ بطخ خریدی جائے۔ سرکس میں لوگ ناچنے والی بطخ دیکھ کر بہت خوش ہوں گے۔ اس نے مداری والے سے بطخ کی قمیت پوچھی تو اس نے دس ہزار بتائی۔ سرکس کے مالک نے بھاوٴ تاوٴ کر کے بطخ پانچ ہزار میں خریدلی اور خوشی خوشی چلا گیا۔ دوسرے دن وہ آیا تو مداری کا گریبان پکڑ کر بولا۔

    ”اوئے فراڈےئے! تیری بطخ نے ناچنا بند کر دیا ہے میرے پیسے واپس کر۔“

    مداری نے کہا۔ ”جناب! سوال ہی پیدا نہیں ہوتا کہ بطخ نہ ناچے‘ ضرور آپ سے کوئی غلطی ہوئی ہو گی۔“

    سرکس والے نے کہا۔ ”میں نے بھرے سر کس میں بطخ کو کوکڑاہی میں چھوڑا‘ اس نے ایک قدم بھی نہ اٹھایا۔ میری بڑی بے عزتی ہوئی ہے۔“

    مداری نے کہا۔ ”جناب! بے عزتی کو چھوڑیں‘ غلطی کی بات کریں۔“

    سرکس کے مالک نے کہا۔ ”کیا غلطی ہوئی ہے مجھ سے؟

    مداری نے کہا۔ ”آپ نے کڑاہی کے نیچے آگ جو نہیں لگائی تھی بطخ کیسے ناچتی؟
  2. پیامبر

    پیامبر وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    1,245
    موصول پسندیدگیاں:
    568
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
  3. محمدداؤدالرحمن علی

    محمدداؤدالرحمن علی منتظم۔ أیده الله Staff Member منتظم رکن افکارِ قاسمی

    پیغامات:
    6,301
    موصول پسندیدگیاں:
    1,708
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ہاہاہاہاہاہا ۔ بہت خوب جناب []---

اس صفحے کو مشتہر کریں