نماز تراویح آٹھ رکعات سنت یا بیس رکعات؟

'بحث ونظر' میں موضوعات آغاز کردہ از اصلی حنفی, ‏مئی 9, 2012۔

  1. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    نماز تراویح آٹھ رکعات سنت یا بیس رکعات؟


    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

    ماہ مبارک دھیرے دھیرے رواں ہے۔چند مہینوں کے بعد ماہ مبارک اپنا آغاز کردے گا۔جس کی رحمتوں سے ہر مسلمان لطف اندوز ہوتا ہے۔ مزید اللہ تعالی سے دعا بھی ہے کہ اللہ تعالی ماہ مبارک سے ہر مسلمان کو صحیح طرح فائدہ اٹھانے کی توفیق دے اور اس ماہ مقدس میں کی گئی نیکیوں کے بدلے جنت الفردوس عطا فرمائے۔آمین
    اس ماہ میں ایک عمل قیام اللیل کے نام سے بھی کیا جاتا ہے۔جس کو تراویح کا نام دیا گیا ہے۔رکعات تراویح میں اہل الحدیث اور مقلدین کا موقف ایک نہیں ہے۔اہل الحدیث کہتے ہیں کہ آٹھ رکعات تراویح سنت ہیں اور مقلدین کہتے ہیں کہ بیس رکعات تراویح سنت ہیں۔

    اس موضوع پر ہم دو طرح سے گفتگو کریں گے

    1۔سنت کتنی رکعتیں ہیں آٹھ یا بیس (کیونکہ مجھے بعض مقلدین نے کہا ہے کہ سنت تو آٹھ رکعتیں ہی ہیں)۔ یعنی جس پر لفظ سنت کا اطلاق کیا جاسکے وہ کتنی رکعتیں ہیں۔
    2۔تعداد تراویح آٹھ صحیح یا بیس؟


    نوٹ:
    رفع الیدین والے تھریڈ میں پیش معروضات کو سامنے رکھنا ضروری ہے۔اس لیے 20 رکعات سنت کہنے والوں سے گزارش ہے کہ کوئی ایک صحیح حوالہ قرآن وحدیث سے پیش کریں کہ جس سے یہ ثابت ہوتا ہو کہ نماز تراویح بیس رکعات سنت ہیں؟
  2. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اس گفتگو کا فیصلہ کیسے کیا جائیگا۔ یہ بھی لکھ لیں۔ کہیں تقلید سمجھانے والے تھریڈ جیسا میں نہ مانوں والا معاملہ نہ ہو جائے۔
    بہتر ہے کہ پہلے اصول متعین کیا جائے۔ جس سے فیصلہ کیا جا سکے؟ کیا خیال ہے اصلی خفی صاحب!!!
  3. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ایک مسلمان کا دوسرے مسلمان پر یہ حق ہے کہ اس کے سلام کا جواب دے۔

    محترج جناب عامی آدمی بھائی فیصلہ نہ آپ کریں گے اور نہ میں۔ اور نہ کبھی اس طرح فیصلہ ہوسکتا ہے۔ اور نہ کبھی ہوا ہے۔ اور نہ ہوسکتا ہے جب تک اللہ کی توفیق یعنی ہدایت شامل نہ ہو۔ فیصلہ تو قارئین کریں گے کہ کس طرف دلائل قوی ہیں اور کس طرف صرف تاویلات وباتیں کی گئی ہیں۔
    اور پھر یہاں تو قارئین بھی مقلد ہیں۔ تو جناب کس فیصلہ کی بات کررہے ہیں۔؟

    وضاحت تو بیان کردی ہے۔ چلیں اگر آپ کچھ لکھنا چاہتے ہیں تو پھر لکھیں۔

    الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے۔ اور پھر آپ کی اس بات کی حقیقت غیر جانب نظر رکھنے والا آدمی خود ہی پڑھ لے گا۔ کسی کو کہنے، سمجھانے کی ضرورت نہیں۔ اور ان شاءاللہ آہستہ آہستہ تقلید کی سانسیں اکھٹرتی جارہی ہیں۔ آپ مانیں یانہ مانیں لیکن جو تعصب کی عینک اتار کر پڑھے گا وہ ضرور قبول کرلے گا۔ اور میرا مقصد بھی یہی ہے نہ کہ آپ جیسوں کومنوانا۔
    اور اگر ہمت ہے تو بادلائل وہاں کچھ لکھو یا پھر میرے سوالات کے جوابات دو۔بے موضوع غیر محل باتوں پر لمبی لمبی پوسٹ لکھ کر یہ باور کرانا کہ ہم بھی جواب دے رہے ہیں۔ واہ بہت خوب

    جی بھائی اگر اس شوق سے بات کرنا چاہتے ہیں تو پھر اصول متعین کردو۔

    اچھا ہے محترم
  4. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    وعلیکم السلام

    آپ سے فیصلہ کرانا بھی نہیں []--- اور میرا فیصلہ تو آپ نےویسے ہی نہیں ماننا جناب۔اسی لئے کہتا ہوں پہلے کسوٹی متعین کرتے ہیں۔ جو آپ کو بھی قبول ہو اور ہمیں بھی۔ اسی کسوٹی پر دلائل کو پرکھیں گے یہی کسوٹی فیصلہ کریگی '+_+

    اس طرح سے آپ کی کیا مراد ہے۔ ابھی کوئی طریقہ کار متعین ہی نہیں ہوا؟ اصول اس لئے طے کرا رہا ہوں تاکہ اصول ہی وہ کسوٹی ہو جو فیصلہ کردے۔ آپ دعا کرو اور میں بھی دعا کرتا ہوں کہ اللہ آپ کو اصول طے کرانے کی توفیق دے۔

    تقلید سمجھاتے ہوئے ایک ایسا ہی فٰیصلہ ہمارے حق میں 100 فیصد قارئین کر چکے ہیں۔ پھر نا کہنا میں نا مانوں []---

    اچھا۔۔!! دیکھتے ہیں آپ اپنی بات پرکب تک قائم رہتے ہیں

    بقول شاعر
    کس قدر جلد بدل جاتے ہیں انساں جاناں ~^o^~

    خود فریبی، دل بہلانے والے خیالات، فیصلہ صادر کرنے اور مشورہ فراہم کرنے کا شکریہ۔

    توآپ کی اجازت سے بسم اللہ کرتے ہیں
    اختلاف کی صورت میں فیصلہ جن اصولوں پر کیا جائیگا میں انھیں لکھ رہا ہوں۔ اگر آپ ان سے اتفاق کرتے ہیں تو بات آگے بڑھائی جائیگی۔ بصورت دیگر آپ اعتراض نقل کردیں اور اصول کا نقص بتا دیں۔
    اصول 1۔ زیر بحث مسئلہ میں ہمارے مشترکہ دلائل 3 ہیں
    1 قرآن ۔ 2 سنت، 3 اجماع

    کیا آپ اس سے اصول سے اتفاق کرتے ہیں؟ ان میں سے جو دلیل آپ کے ہاں مردود ہو اسکی نشاندہی کردو۔

    اصول 2۔ اختلاف کی صورت میں مسئلہ پہلے قرآن سے حل کیا جائگا۔ اگر قرآن میں حل نا ملا تو پھر سنت رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف رجوع کیا جائے گا۔ جیسا کہ قرآن بھی یہ کہتا ہے۔
    فَإِن تَنَازَعْتُمْ فِي شَيْءٍ فَرُدُّوهُ إِلَى اللَّهِ وَالرَّسُولِ إِن كُنتُمْ تُؤْمِنُونَ بِاللَّهِ وَالْيَوْمِ الْآخِرِ
    سورہ نساء 59
    کیا آپ اس اصول سے اتفاق کرتے ہیں جسکا حکم نص قرآنی دیتی ہے؟

    اصول 3۔ اگر سنت رسول صلی اللہ علیہ وسلم میں بھی مسئلہ کا صریح حل نا ملے اور اختلاف بر قرار رہا تو پھر سنت خلفاء راشدین کی طرف رجوع کیا جائے گا۔ جیسا کہ اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کا حکم ہے
    عَلَیْکُمْ بِسُنَّتِی وَ سُنَّۃِ الْخُلَفَائِ الرَّاشِدِیْنَ وَ عَضُّوْا عَلَیْہَا بِالنَّوَاجِذِ۔

    الجامع للترمذی، ابواب العلم ، ۲/۹۲
    السنن لابی داؤد، السنۃ ، ۲/۶۳۵
    الستدرک للحاکم ، کتاب الایمان ، ۱/۹۷
    السنن لا بن ماجہ، المقدمہ ، ۱/۵
    التفسیر للبغوی، ۲/۲۰۶
    المعجم الکبیر للطبرانی، ۱۸/۲۴۶
    تلخیص الحبیر لابن حجر ، ۴/۱۹۰
    نصب الرایۃ للزیعلی، ۱/۱۲۶
    اتحاف السادۃ للزبیدی، ، ۳/۴۱۸
    الشفا للقاضی، ۲/۲۴

    کیا آپ نص سے ثابت اس اصول سے اتفاق کرتے ہو؟

    اصل 4۔ جب مذکورہ بالا اصولوں سے سے بھی و ضاحت نہ ہوجائے تواختلاف کا آخری فیصلہ اجماع سے کیا جائے گا۔

    اگر آپ ان اصولوں سے متفق ہیں تو انشاء اللہ بات منطقی انجام تک پہنچنے میں دیر نہیں لگا ئی گی۔ والسلام
    محمد یوسف صدیقی نے اسے پسند کیا ہے۔
  5. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    دیکھیں محترم اصول طے کرتے ہوئے صرف یہ کہہ دیتے کہ ماخذ شریعت سے دلائل دیئے جائیں گے۔(کیونکہ یہ ایک شرعی مسئلہ ہے) اور ان ہی دلائل کی روشنی میں فیصلہ کیا جائے گا تو بات مکمل سمجھ آجاتی۔ کیونکہ جس طریقہ سے آپ نے اصول مقرر کیئے ہیں مجھے اس میں کچھ کالا کالا سا دکھائی دے رہا ہے۔ چلو میں ہی اصول طے کردیتا ہوں اور پھر آپ اس اصول کی روشنی میں دلیل ذکر کردینا۔

    اصول:
    ’’ دلائل ماخذ شریعت (قرآن،حدیث،اجماع، قرآن وحدیث سے مستنبط قیاس) سے بحوالہ صحت وضعف کاخیال رکھتے ہوئے پیش کیے جائیں گے۔ اور پھر اسی پر ہی قارئین خود فیصلہ کرلیں گے۔ کہ حق پہ کون ہے۔‘‘

    مجھے امید ہے کہ اس پر آپ کو کوئی اعتراض نہیں ہوگا۔ اگر اعتراض ہے تو وضاحت فرمادینا (اور ہاں پوسٹ کے نیچے جو نوٹ لکھا ہے۔ اس کو بھی اس میں شامل کرلیں۔تاکہ بات موضوع پر ہی رہے۔) اگر اعتراض نہ ہو تو پھر دلیل پیش کردینا کہ

    1۔سنت کتنی رکعتیں ہیں آٹھ یا بیس (کیونکہ مجھے بعض مقلدین نے کہا ہے کہ سنت تو آٹھ رکعتیں ہی ہیں)۔ یعنی جس پر لفظ سنت کا اطلاق کیا جاسکے وہ کتنی رکعتیں ہیں۔

    2۔تعداد تراویح آٹھ صحیح یا بیس؟


    نوٹ:
    اس بنیادی باتوں میں ایک اور اہم بات کا اضافہ فرمالیں کہ
    ’’ہر وہ عمل جس کو ہم ثواب کی نیت سے اداء کرتے ہیں اسی موضوع پر بات کرتے ہوئے ماخذ شریعت سے دلیل صرف اسی پر طلب کی جائے گی۔ ‘‘ یہ بات اس وجہ سے کہہ رہا ہوں کہ بعد میں ایسا نہ ہو کہ آپ بھی باقی مقلدین کی طرح جب لاجواب ہوجائیں تو پھر کہنا شروع ہوجائیں کہ
    ٭ دلیل کی تعریف مع اقسام بحوالہ قرآن وحدیث پیش کریں
    ٭ الغزالی پر تقلید نہ سمجھنا قرآن وحدیث میں کہاں آیا ہے وغیرہ وغیرہ

    تو بھائی جان پلیز اس طرح کے سوالات سے کلی پرہیز کرنا۔
  6. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    آپکو اصولوں میں جو کالا کالاسا دکھائی دے رہا ہے وہ ذرا فورم ممبران اور مجھے دکھا دیں ؟^o^||3
  7. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جناب عامی آدمی صاحب اگر دکھایا تو نہ آپ کوبرداشت ہوگا اورنہ آپ کی برادری کو اس لیے یہ بات موضوع از خارج ہے۔
    کتنا اچھا ہوتا کہ آپ اس بے مقصد بات کو گھسیٹنےکے بجائے موضوع پر ہی بات کرتے۔
    امید ہےکہ اب ان فضول باتوں کو بیچ میں نہیں لائیں گے۔ اگر میری پوسٹ پر کوئی اعتراض ہے بیان کیجیے ورنہ پھر بسم اللہ پڑھ کر دلیل پیش کیجیے۔
  8. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    نقص بتا دو شاباش
  9. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    آپ نے دلیل دینی ہے یا نہیں ؟ ماقبل پوسٹ میں بھی یہی لکھا گیا کہ حضور اس بات کو دفع کرو کیونکہ یہ بات موضوع از خارج ہے۔ یا پھر اگر اسی طرح ہی آپ نے ٹائم پاس کرنا ہے تو پھر کسی اور جگہ ٹائم پاس کریں علمی بحث کےلیے کسی اور کو موقع دیں۔شکراً
  10. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    محترم عام آدمی صاحب
    مجھے آپ کی طرف سے طے کردہ اصول میں کچھ گڑ بڑ نظر آرہی تھی۔(اب یہ گڑ بڑ کیا تھی یا دوسرے الفاظ میں کالا کالا سا کھا تھا یہ کیا ہے۔ پلیز اس بات کے پیچھے مت پڑ جانا ) اس لیے میں نے ان الفاظ میں اصول لکھا ہے۔

    اصول:
    ’’ دلائل ماخذ شریعت (قرآن،حدیث،اجماع، قرآن وحدیث سے مستنبط قیاس) سے بحوالہ صحت وضعف کاخیال رکھتے ہوئے پیش کیے جائیں گے۔ اور پھر اسی پر ہی قارئین خود فیصلہ کرلیں گے۔ کہ حق پہ کون ہے۔‘‘

    اگر آپ اس اصول جو کہ مختصر کے ساتھ جامع بھی ہے متفق ہیں تو پھر ان دو باتوں میں سے کسی پر دلیل ذکر کردیں


    1۔ قیام اللیل (نماز تراویح) کے 20 رکعات سنت پر دلیل ذکر کریں
    یا
    2۔قیام اللیل (نماز تراویح) کے آٹھ رکعات سنت نہ ہونے پر دلیل ذکر کریں


    نوٹ
    دلیل پہلے قرآن سے، پھر احادیث کی کتب سے طبقات کی ترتیب کو سامنے رکھتے ہوئے، پھراجماع سے اور پھرقیاس سے ذکر کی جائے گی۔
  11. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    عام آدمی صاحب شاباش ہمت کرو یار
  12. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    الحمد للہ ہم اہل سنت والجماعت احناف اصولی لوگ ہیں۔ اصولی بات کرتے ہیں اور اصولوں پر قائم رہتے ہیں۔ اس لئےآپ سے گذارش ہے کہ غیر مقلد بےاصولی فرقے کی طرح ہمیں بے اصولی پر نہ اکسائیں۔ کیونکہ ہم آپ کی یہ حسرت پوری نہیں کر سکتے۔ اگر آپ کو بحث کا شوق ہے اور صرف بحث برائے بحث کرنا چاہتے ہیں تو میری طرف سے ابھی سے معذرت !! آج دین آپ جیسے کج بحثوں اور بے اصولوں کا تحتہ مشق بنا ہو ہے اور یہی دین کےحفیف سمجھے جانے کاسبب بنا ہے اور بن رہا ہے۔ آپ سےبات تب ہی ہوگی جب آپ اللہ اور اسکے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے تائید یافتہ اصولوں پر بات کرنے کیلئے تیار ہو جائیں۔ یا آپ اللہ اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے تائید یافتہ اصول کا نقص بتا دیں۔ تاکہ آپ سے پہلے اصول پر بات ہو جائے۔
    میں نے ۴ اصول ذکر کئے ہیں۔ پہلے اصول میں دلائل کا تعین کیا ہے جبکہ بقیہ ۳ اصول اختلاف کا فیصلہ کرنے کی کسوٹی ہے۔ یہ وہ اصول ہیں جو میں نے خود سے نہیں گھڑے بلکہ اللہ اور اسکے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے متعین کردہ ہیں دیکھئے اختلاف کی صورت میں اللہ کا فیصلہ ہے
    اصول نمبر۲:: فَإِن تَنَازَعْتُمْ فِي شَيْءٍ فَرُدُّوهُ إِلَى اللَّهِ وَالرَّسُولِ إِن كُنتُمْ تُؤْمِنُونَ بِاللَّهِ وَالْيَوْمِ الْآخِرِ
    سورہ نساء 59
    پھر اگر آپس میں کوئی چیز میں جھگڑا کرو تو اسے الله اور اس کے رسول کی طرف پھیرو اگر تم الله اور قیامت کے دن پر یقین رکھتے ہو یہی بات اچھی ہے اور انجام کے لحاظ سے بہت بہتر ہے۔

    اصول نمبر۳: فانہ من یعش منکم بعدی فسیرٰی اختلافاً کثیرا فعَلَیْکُمْ بِسُنَّتِی وَ سُنَّۃِ الْخُلَفَائِ الرَّاشِدِیْنَ وَ عَضُّوْا عَلَیْہَا بِالنَّوَاجِذِ۔
    پس جو شخص تم میں سے میرے بعد زندہ رہے گا عنقریب وہ بہت زیادہ اختلافات دیکھے گا پس تم میری سنت کو اور ہدایت یافتہ خلفاء راشدین کی سنت کو لازم پکڑو اور اسے مضبوطی سے پکڑ لو۔
    اسکے مقابلے آپ نفس کی اتباع میں نفسانی خواہش سے گھڑے ہوئےاصولوں سے فیصلہ کرانا چاہتے ہیں۔

    کیا آپ کو اللہ کا خوف نہیں؟ اللہ تعالٰی کا یہ فرمان عالیشان آپ بھول گئے؟
    أَرَأَيْتَ مَنِ اتَّخَذَ إِلَـٰهَهُ هَوَاهُ
    فرقان ۴۳
    کیا تم نے اس شخص کو دیکھا جس نے اپنا خدا اپنی خواہشات نفسانی کو بنا رکھا ہے۔
    اور
    أَفَرَأَيْتَ مَنِ اتَّخَذَ إِلَـٰهَهُ هَوَاهُ وَأَضَلَّهُ اللَّهُ عَلَىٰ عِلْمٍ وَخَتَمَ عَلَىٰ سَمْعِهِ وَقَلْبِهِ وَجَعَلَ عَلَىٰ بَصَرِهِ غِشَاوَةً فَمَن يَهْدِيهِ مِن بَعْدِ اللَّهِ
    سورہ جاثیہ ۲۳
    بھلا آپ نے اس کو بھی دیکھا جو اپنی خواہش کا بندہ بن گیا اور الله نے باوجود سمجھ کے اسے گمراہ کر دیا اور اس کے کان اور دل پر مہر کر دی اور اس کی آنکھوں پر پردہ ڈال دیا پھر الله کے بعد اسے کون ہدایت کر سکتا ہے
  13. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    انشاء اللہ قارئین دیکھ لیں گے کہ اصولوں پر کون قائم رہ کر بات کرتا ہے اور کون اصولوں سے فرار اختیار کر رہا ہے۔ اس لئے یہ فیصلہ قارئین خود ہی کر لیں گے۔ باقی یہ کہ بحث کا فیصلہ اللہ اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے متعین اصولوں سے انحراف کر کےکہیں اور سے کرانا جبکہ ان کے بارے بد گمان بھی ہو کہ سو فیصد مقلدین ہیں اور جانبداری کا اندیشہ بھی قوی ۔۔۔
    اللہ اور رسول کے ان فرمودات کی روشنی میں آپکا یہ اصول مردود ہے۔

    وَمَا كَانَ لِمُؤْمِنٍ وَلَا مُؤْمِنَةٍ إِذَا قَضَى اللَّهُ وَرَسُولُهُ أَمْرًا أَن يَكُونَ لَهُمُ الْخِيَرَةُ مِنْ أَمْرِهِمْ ۗ وَمَن يَعْصِ اللَّهَ وَرَسُولَهُ فَقَدْ ضَلَّ ضَلَالًا مُّبِينًا
    سورہ ۱حزاب ۳۶
    اور کسی مومن مرد اور مومن عورت کو لائق نہیں کہ جب الله اور اس کا رسول کسی کام کا حکم دے تو انہیں اپنے کام میں اختیار باقی رہے اور جس نے الله اور اس کے رسول کی نافرمانی کی تو وہ صریح گمراہ ہوا

    ایمان کا تقاضہ ہے کہ اپنے باطل خواہش کی پیروی نہ کیجائے۔اللہ اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے احکامات کےہوتے ہوئے ایمان والوں سے ان کا اختیار لے لیا گیا ہے۔ اس لئے اب جو بھی اللہ و رسول کے فرامین کے ہوتے ہوئے نفس کی خواہش اختیار کریگا وہ اپنےایمان کے بارے میں غور کرے۔ اور ایسے گمراہ کی گمراہی کا کیا ٹھکانہ جس کو اللہ گمراہ قرار دے۔ اس لئے جناب آپ اپنے اصولوں کی دعوت ہمیں نہ دیں۔

    فلا وربک لا يومنون حتي يحکموک فيما شجر بينہم ثم لا يجدوا في انفسہم حرجا مما قضيت ويسلموا تسليما
    النساء: 65
    پس آپ کے رب کی قسم ! وہ لوگ مومن نہیں ہو سکتے جب تک آپ کو اپنے اختلافی امور میں اپنا فیصل نہ مان لیں پھر جو فیصلے آپ ان میں کریں ان سے اپنے دل میں کوئی تنگی اور ناخوشی نہ پائیں اور پورے طور سے اسے تسلیم کریں

    یہ اصولوں سے متعلق ضروری گذارشات تھیں۔ اصولوں پر اتفاق کے بعد موضوع سے متعلقہ امور پر بات کی جائے گی انشاء اللہ۔
  14. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جی جی آپ اصولی ہیں۔ جب بحث ہوگی تو پھر دیکھوں گا کہ آپ کتنے اصولی ہیں اور کہاں تک اپنے اصولوں کے ساتھ چلتے ہو

    آپ کا درس توبہت مضحکہ خیز ہے اس لیے کہ آپ کو اتنا بھی نہیں معلوم کہ جب میں نے کہا

    ’’ دلائل ماخذ شریعت (قرآن،حدیث،اجماع، قرآن وحدیث سے مستنبط قیاس) سے بحوالہ صحت وضعف کاخیال رکھتے ہوئے پیش کیے جائیں گے۔ اور پھر اسی پر ہی قارئین خود فیصلہ کرلیں گے۔ کہ حق پہ کون ہے۔‘‘

    کاکیامطلب ہے۔حالانکہ صاف اور واضح انداز میں عبارت لکھی گئی ہے۔ کوئی احتمال واشکال نہیں ہے۔
    اور پھر ہمیں بےاصولی فرقہ کہہ رہے ہو؟ محترم آئینہ دکھایا تو برا مان جاؤ گے اس لیے خاموش ہی رہتا ہوں۔ اور آئندہ اس طرح کی فضول باتیں اپنے پاس ہی رکھنا۔ ورنہ اچھائی کی خیر مت رکھنا

    بحث برائے بحث میں تب تک نہیں کرتا جب تک بات دلائل سے ہوتی رہے۔ لیکن کسی جگہ میں دلیل کامطالبہ کروں اور آپ اپنا فلسلفہ پیش کرتے چلے جائیں اور بار بار مجھے ہی طعنہ دیتے جائیں کہ آپ بحث برائے بحث کررہے ہیں ایسی صورت میں کام نہیں چلے گا۔ ان شاءاللہ

    محترم ابھی سے متنبہ کررہا ہوں کہ لایعنی باہر کی بکواسات اپنے پاس ہی رکھیں۔ شکریہ۔ یہ سب جو دین کےپرخچے اڑ رہےہیں تقلیدی بیماری کی وجہ سے ہیں۔ آگےمت بولنا

    محترم عزیز میں نے کب آپ کےبیان کردہ اصولوں کو غلط کہا پس کچھ انداز تبدیل کرکے ان کواپنے الفاظ میں بیان کیا ہے۔ اگر آپ کو میری بیان کردہ ایک لائن میں کچھ تحفظات ہیں تو بیان کریں۔ ورنہ پھر موضوع سے باہر کی باتیں کسی اور جگہ جاکر کریں

    میں نےبھی چار ذکر کیے ہیں اساسی ماخذ شریعت دو قرآن وحدیث اور ذیلی ماخذ شریعت قرآن وحدیث کےتابع اجماع اورقیاس
    بھائی میں نےبھی خود سےنہیں گھڑے تھے۔ آپ میرے بیان شدہ اصول میں کوئی کج فہمی دیکھتے ہیں تو بیان کریں ورنہ بات شروع کرو

    میں اس بات پر حیران ہوں کہ آپ کی پیش کردہ آیات کامیری اس بات بیان شدہ بات سے کیا تعلق ؟ میں نے بہت غور وفکر کیا لیکن مجھے کوئی مناسبت نظر نہیں آئی۔ شیخ الکل ذرا یہ بتانا پسند فرمائیں گے کہ کس مناسبت سے میرے ان الفاظ پر آپ نے آیات کوٹ کیں؟
  15. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جی محترم بھائی قارئین خود دیکھ لیں گے۔ان شاءاللہ آپ بات تو شروع کریں۔تاکہ اسی رمضان میں ہم سنت کےمطابق نماز تراویح اداء کریں۔

    اچھا جی یعنی فیصلہ قارئین کریں گے۔ اور وہ بھی سب مقلدین۔محترم قارئین میں صرف الغزالی کے قارئین نہیں آتے بلکہ ہر وہ بندہ جو بھی کسی حوالے سے اس بحث کو پڑھے گا وہ بھی اس میں شامل ہے۔ جب بحث الغزالی پر سیو ہوتی رہے گی تو ان شاءاللہ قارئین پڑھ کر خود فیصلہ کرتےجائیں گے۔

    دیکھیں محترم ہر وہ عمل جو ہم ثواب وعتاب کی نیت سے کرتے ہیں اس کا فیصلہ ماخذ شریعت سے ہی ہوگا۔ اور دلائل کس طرف قوی اور کس طرف بودی تاویلات ہیں وہ سب پر عیاں ہوجائے گا۔ان شاءاللہ

    جزاک اللہ خیرا یہی بات تو اہل حدیث کے منہج میں ہے۔ کہ تقلید میں آکر بیان شدہ وہ سب اقوال وافعال جو سراسر قرآن وحدیث کے خلاف ہیں ان باطل خواہشات کی پیروی نہ کرو بلکہ قرآن وحدیث ہمارے پاس ہیں۔ ان سے استفادہ کرو

    جزاک اللہ بہت عمدہ بات ہے۔ اور مجھے امید ہے کہ آپ اور پھر اپنے ساتھ اپنے مقلدین کو بھی اس پر عمل کروائیں گے۔ ان شاءاللہ
    جب احکامات کے ہوتے ہوئے ایمان والوں سے اختیار لے لیا گیا ہے تو پھر آپ لوگ وہ تمام مسائل کیوں مانتے چلے جاتے ہو جو قرآن واحادیث کے خلاف ہیں۔ ان خلاف کو دلیل کے مطابق ڈالنے کےلیے قرآن وحدیث کی عبارات تک کا مفہوم بدل دیا جاتا ہے۔وائے؟

    جزاک اللہ بہت عمدہ بات ہے۔ اسی بات کو پھیلانے کےلیے تو اہل حدیث سرگرم عمل رہتے ہیں۔ اہل حدیث کچھ نہیں چاہتے بس صرف اتنا چاہتے ہیں کہ اطیعوا اللہ واطیعوالرسول والے بن جاؤ

    بہت بڑھیا لطیفہ چھوڑا ہے۔ میں نے اپنے کون سے اصول بیان کیے ہیں اور کن اصولوں کی آپ کو دعوت دی ہے ذرا بتانا پسند فرمائیں گے حضور؟

    محترم میری بیان کردہ ایک لائن سب بیماریوں کاعلاج تھی پتا نہیں آپ کس بیماری میں مبتلا ہوکر بحث برائے بحث کرتے چلے جارہے ہیں اور ابھی تک اصول بھی طے نہیں کرپائے۔
  16. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    ضدی غیر مقلد سے پالا پڑا ہے۔ جس کے نہ خود کوئی اصول ہیں اور نہ وہ کسی اصول کا پابند ہے۔ یہاں تک کہ قرآن و سنت کے اصول کو بھی اپنی ضد کی بھینٹ چڑھایا ہوا ہے۔
  17. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    واہ بہت خوب جناب یہ مناسب نہیں لکھا آپ نے بلکہ یوں لکھیں کہ اصلی حنفی صاحب آپ کا واسطہ ایک ضدی اور ہٹ دھرم مقلد سے ہے۔۔ جس کو اتنا تک بھی نہیں معلوم کہ ماخذ شریعت کیا اور کون کون سے ہیں؟ اور اگر کوئی کہے کہ

    ’’ دلائل ماخذ شریعت سے بحوالہ صحت وضعف کاخیال رکھتے ہوئے پیش کیے جائیں گے۔ اور پھر اسی پر ہی قارئین خود فیصلہ کرلیں گے۔ کہ حق پہ کون ہے۔‘‘


    تو حضور کا جواب یہ ہوتا ہے کہ ’’اپنے اصولوں کی دعوت ہمیں نہ دیں۔‘‘ یعنی ماخذ شریعت کی طرف دعوت اپنے اصولوں کی طرف دعوت ہے۔ واہ واہ بہت خوب۔

    ہذا بہتان عظیم۔۔ہاتوا برہانکم ان کنتم صادقین

    ہذا بہتان عظیم ۔۔ ہاتوا برہانکم ان کنتم صادقین

    نوٹ
    جناب اور کتنا ٹائم ضائع کرو گے ؟
  18. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    نوٹ

    جب تک آپ ضد پر قائم رہتے ہیں%*-{
  19. اصلی حنفی

    اصلی حنفی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    139
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    قبلہ میں ضد پر قائم ہوں یا پھر آپ میں بات کرنے کی ہمت نہیں ہے ؟ جو اصول تم نے بیان کیے وہ میں نےبیان کیے ۔

    اچھا چل بتا کہ آپ کے بیان کردہ اور میرے بیان کردہ اصول میں کیا فرق ہے سوائے دلائل بیان کیے؟

    محترم کچھ الفاظ کا ردو بدل کیا ہے۔ آپ موضوع پہ بات کریں اب آپ کے پاس کوئی جواز باقی نہیں رہا کہ مزید ٹائم ضائع کریں ۔
  20. عام آدمی

    عام آدمی وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    37
    موصول پسندیدگیاں:
    1
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    آپ میرے پہلے اصل سے متفق ہیں جبکہ باقی کے تین اصول جو اختلاف کا فیصلہ کرنے کی کسوٹی ہیں۔ ان کو ڈھٹائی سے جھٹلا رہے ہیں۔ کیوں؟؟؟؟؟ چلیں ان کا نقص ہی بتا دیں؟؟

اس صفحے کو مشتہر کریں