پرفیوم کے استعمال کا حکم

'بحث ونظر' میں موضوعات آغاز کردہ از احمدقاسمی, ‏دسمبر 9, 2012۔

  1. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,631
    موصول پسندیدگیاں:
    791
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    پرفیوم کے استعمال کا حکم​
    سوال: کہتے ہیں کہ پرفیوم میں الکحل ہوتی ہے کیا ہم اس کو استعمال کر سکتے ہیںَ۔

    جواب: جو الکحل انگور ، کھجور یا منقی سے تیار ہوا ہو اور وہ مسکر ہو یا اس کی شراب سے تیار ہوا ہو وہ ناپاک ہے اور اس کا استعمال خارجی وداخلی کسی بھی صورت میں جائز نہیں ہے اور جو الکحل مذکور بالا اشیاء کے علاوہ مثلا شہد، آلو ، پٹرول اور گنے کے رس وغیرہ سے یا اس کی شراب سے تیار ہو اہو وہ ناپاک نہہیں ہے اس کا استعامل بطورِ تلزز کے حرام ہے اور پرفیون وغیرہ کے خارجی طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے ـ “فی الدر المختار مع الشامی (۶۔۴۵۲) اربعۃ انواع الاول )نبیذ التمر والذبیب ان ادنی طبخۃ) یحل شربہ )( وان اشتد) وھذا (اذ اشرب منہ (بلا لھو وطرب ) فلو شرب للھو فقیلہ وکثیرہ حرام (وما یشکر)۔۔۔۔۔۔ (والثالث) (نبیذ العسل والتین والبر والشعیر والذرۃ) یحل سواء (طبخ اولا) بلا لھو وطرب۔۔۔۔۔۔ اذا قصد بہ استمراء الطعام والتداوی والتقویٰ علیٰ طاعۃ اللہ تعالیٰ ولو للھولا یحل اجماعا“
    وفی المبسوط للسرخسی )24۔15 وھذہ الاسربۃ لیست فی معنی الخمر من کل وجہ بدلیل حکم الحدود حکم النجاسۃ۔

    الکحل سے تیار شدہ اشیاء کے استعمال کا حکم اس بات پر موقوف ہے کہ الکحل کس چیز سے تیار شدہ اس میں شامل ہے ؟ ہماری تحقیق یہ ہے کہ آجکل عموما کیمیاوی الکحل پر فیوم اور سینٹ میں استعمال ہوتا ہے ان میں کھجور یا انگور یا کشمش کا بنا ہوا الکحل شامل نہیں ہوتا اس لئے کہ وہ قیمتی ہوتا ہے لہذا ان پر فیومز کا استعمال سے شرعا کوئی حرج نہیں۔(محمد رضوان لطیف غفرلہ۔اشرف الفتاوی ص 65 تا 66)
  2. بنت حوا

    بنت حوا فعال رکن وی آئی پی ممبر

    پیغامات:
    4,572
    موصول پسندیدگیاں:
    458
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    جزاک اللہ خیرا
  3. أضواء

    أضواء وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    2,522
    موصول پسندیدگیاں:
    23
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Saudi Arabia
    جزاك الله خيرا
  4. talibilm

    talibilm وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    19
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    تو کیا بازار میں فروخت کیا جانے والا پرفیوم استعمال کیا جاسکتا ہے؟
  5. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,631
    موصول پسندیدگیاں:
    791
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    بمبئی کے ایک عطر تاجر جو مفتی بھی ہیں ان کی کتاب جو اسی موضوع پر تھی اس میں پڑھا تھا ان کی تحقیق بھی مسئلہ بالا کی تحقیق کے مطابق تھی ۔اور ظاہر بھی الکحل (یعنی شراب ) اتنی سستی بھی نہیں کہ بازاروں میں ملنے والے کم داموں کے پرفیوم میں آمیزش کریں۔جبکہ اس سے سستا کیمیاوی الکحل اس کا بدل بھی آچکا ہے ۔
  6. شکیل یونس

    شکیل یونس وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    147
    موصول پسندیدگیاں:
    0
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    شکریہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اس صفحے کو مشتہر کریں