کیا زمانہ تھا کہ ہم روز ملا کرتے تھے

'پسندیدہ کلام' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد نبیل خان, ‏دسمبر 4, 2013۔

  1. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    کیا زمانہ تھا کہ ہم روز ملا کرتے تھے

    کیا زمانہ تھا کہ ہم روز ملا کرتے تھے
    رات بھر چاند کے ہمراہ پھرا کرتے تھے
    جہاں تنہائیاں سر پھوڑ کے سو جاتی ہیں
    ان مکانوں میں عجب لوگ رہا کرتے تھے
    کر دیا آج زمانے نے انہیں بھی مجبور
    کبھی یہ لوگ مرے دکھ کی دوا کرتے تھے
    دیکھ کر جو ہمیں چپ چاپ گزر جاتا ہے
    کبھی اس شخص کو ہم پیار کیا کرتے تھے
    اتفاقاتِ زمانہ بھی عجب ہیں ناصر
    آج وہ دیکھ رہے ہیں جو سنا کرتے تھے

    شاعر ناصر کاظمی
  2. بنت حوا

    بنت حوا فعال رکن وی آئی پی ممبر

    پیغامات:
    4,572
    موصول پسندیدگیاں:
    452
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    :->~~ :->~~ :->~~ :->~~

اس صفحے کو مشتہر کریں