کیا میرے سوا اس شہر میں معصوم ہیں سارے

'اردو شاعری' میں موضوعات آغاز کردہ از بنت حوا, ‏دسمبر 13, 2013۔

  1. بنت حوا

    بنت حوا فعال رکن وی آئی پی ممبر

    پیغامات:
    4,572
    موصول پسندیدگیاں:
    452
    صنف:
    Female
    جگہ:
    Pakistan
    قصّے میری الفت کے جو مرقوم ہیں سارے
    آ دیکھ ترے نام سے موسوم ہیں سارے

    بس اس لئے ہر کام ادھورا ہہی پڑا ہے
    خادم بھی میری قوم کی مخدوم ہیں سارے

    اب کون میرے پاؤں کی زنجیر کو کھولے
    حاکم میری بستی کےبھی محکوم ہیں سارے

    شاید یہ ظرف ہے جو خاموش ہوں اب تک
    ورنہ تو ترے عیب بھی معلوم ہیں سارے

    سب جرم میری ذات سے منسوب ہیں محسن
    کیا میرے سوا اس شہر میں معصوم ہیں سارے​
  2. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,688
    موصول پسندیدگیاں:
    772
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    سب جرم میری ذات سے منسوب ہیں محسن
    کیا میرے سوا اس شہر میں معصوم ہیں سارے​
  3. محمدداؤدالرحمن علی

    محمدداؤدالرحمن علی منتظم۔ أیده الله منتظم رکن افکارِ قاسمی

    پیغامات:
    6,259
    موصول پسندیدگیاں:
    1,702
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    سر جی آپ تو معصوم سے بچے ہیں

اس صفحے کو مشتہر کریں