کیا کبھی My Status کا اردو میں ترجمہ کرکے دیکھا ہے؟

'اصلاح معاشرہ' میں موضوعات آغاز کردہ از محمدداؤدالرحمن علی, ‏ستمبر 24, 2020۔

  1. محمدداؤدالرحمن علی

    محمدداؤدالرحمن علی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ Staff Member منتظم اعلی رکن افکارِ قاسمی

    پیغامات:
    6,569
    موصول پسندیدگیاں:
    1,785
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    کیا کبھی My Status کا اردو میں ترجمہ کرکے دیکھا ہے؟

    یقیناََ نہیں؟؟؟

    کیونکہ اگر ترجمہ کیا ہوتا اور آپ اس کے مفہوم سے آشنا ہوتے تو آپ کبھی بھی Status پر گانے اور ناچتی لڑکیوں کی TikTok نہ لگاتے۔
    دراصل Status انگریزی کا لفظ ہے اور اردو میں اس کو درجہ یا عام الفاظ میں حیثیت کہتے ہیں۔اس طرح My Status کا مطلب ہوا میری حیثیت۔
    اور جب آپ اسٹیٹس پر گانے اور ناچتی لڑکیوں کی ویڈیو لگاتے ہیں تو اصل میں آپ اپنی اوقات اور حیثیت کو
    متعارف کروا رہے ہوتے ہیں۔

    سب سے بڑی بات اس میں یہ ہیکہ آپکا لگایا گیا گانا یا فحش فوٹو جتنے لوگ دیکھیں گیں ان دیکھنے والوں کے بقدر آپکے نامہ اعمال میں گناہ درج کردیے جاتے ہیں مثال کے طور پر آپکا
    سٹیٹس 20 بندوں نے دیکھا تو 20 گناہ ان 20 بندوں کو جہاں مل رہے ہیں وہیں پر اپ اکیلے کو انکے 20 اکھٹے گناہ پہنچ رہے ہیں چاہے آپ کوئی ایسی جاری برائی چھوڑ کر قبر میں بھی چلیں جائیں وہاں پر بھی آپکے گناہوں میں مسلسل اضافہ ہوتا رہے گا اس لیے اس گناہ جاری سے بچنے کے بھرپور کوشش کیجیے !
    اگر کسی کو میری بات بری لگی ھو دل آزاری ھوئی ھو تو میں آپ سے معذرت خواہ ہوں

    اللہ کریم ھمیں نیکی کرنے اور نیکی کو پھلانے کی توفیق بخشے آمین ثمہ آمین جزاک اللہ خیر کثیرا​
    زنیرہ عقیل نے اسے پسند کیا ہے۔
  2. زنیرہ عقیل

    زنیرہ عقیل ناظم۔ أیده الله ناظم رکن

    پیغامات:
    322
    موصول پسندیدگیاں:
    120
    صنف:
    Female
    سمجھنے والوں کے لیے ایک نصیحت ہے
    اللہ آپ کو جزائے خیر دے
    آمین
    محمدداؤدالرحمن علی نے اسے پسند کیا ہے۔
  3. احمدقاسمی

    احمدقاسمی منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ منتظم اعلی

    پیغامات:
    3,888
    موصول پسندیدگیاں:
    932
    صنف:
    Male
    جگہ:
    India
    "اگر کسی کو میری بات بری لگی ھو دل آزاری ھوئی ھو تو میں آپ سے معذرت خواہ ہوں" سبحان اللہ ۔ کرتے ہیں قتل ہاتھ میں تلوار بھی نہیں۔
    ماشاء اللہ بڑی عمدہ نصیحت ہے۔ جزاک اللہ
    محمدداؤدالرحمن علی نے اسے پسند کیا ہے۔
  4. زنیرہ عقیل

    زنیرہ عقیل ناظم۔ أیده الله ناظم رکن

    پیغامات:
    322
    موصول پسندیدگیاں:
    120
    صنف:
    Female
    جو شخص ان ذرائع مثبت استعمال کرے گا تو خود بھی اجر پائے گا اور جتنے لوگ اس کے فعل سے متاثر ہوکر نیکی کریں گے ان کا اجر بھی اسے ملے گا۔ اسی طرح جو شخص کسی برائی کا آغاز کرتا ہے تو اسے بھی گناہ ہوگا اور جو لوگ اس کی وجہ سے اس برائی میں ملوث ہوں گے، ان کا گناہ بھی اسی کے سر ہوگا۔ جب کہ بعد میں نیکی یا گناہ کرنے والوں کے اپنے اجر یا گناہ میں بھی کوئی کمی نہ ہوگی۔

    حضرت جریر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا:

    ’’جس نے کوئی اچھا طریقہ جاری کیا، پھر اس پر عمل کیا گیا تو اس کے لیے اپنا ثواب بھی ہے اور اسے عمل کرنے والوں کے برابر ثواب بھی ملے گا؛ جب کہ ان کے ثواب میں کوئی کمی (بھی) نہ ہوگی۔ اور جس نے کوئی برا طریقہ جاری کیا، پھر وہ طریقہ اپنایا گیا تو اس کے لیے اپنا گناہ بھی ہے اور ان لوگوں کے گناہ کے برابر بھی جو اس پر عمل پیرا ہوئے بغیر اس کے کہ ان کے گناہوں میں کچھ کمی ہو‘‘۔

    (جامع ترمذی، 5 / 43، رقم : 2675)

    لہٰذا ہمیں ان ذرائع کا مثبت استعمال کرنا چاہیے کہ جس سے اپنا اور دوسروں کا بھلا ہو نہ کہ اپنی عاقبت بھی برباد ہو اور دوسروں کی آخرت بھی تباہ ہو۔ کسی بھی شے کا استعمال اسے اچھا یا برا بناتا ہے، فی نفسہ وہ اچھی یا بری نہیں ہوتی۔ اگر اچھے لوگ سوشل میڈیا کا استعمال ترک کردیں گے تو برے لوگ تو بھرپور طریقے سے استعمال کر رہے ہیں، وہ تو اسے نہیں چھوڑیں گے۔ لہٰذا کوشش یہ کریں کہ اپنی مثبت اور درست شرکت کے ذریعے لوگوں کو شعور دیں اور انہیں نیک راستے پر چلانے کی کوشش کریں۔
    محمدداؤدالرحمن علی نے اسے پسند کیا ہے۔

اس صفحے کو مشتہر کریں