کتوں نے پھربھونکناشروع کردیاہے

سٹیٹس
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔

مفتی ناصرمظاہری

کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی
رکن
ہمارے الغزالی فورم کامقصدصرف یہ ہے کہ اپنے لوگوں کوگمراہ فرقوں اورگمراہ لوگوں سے بچائیں۔یہ سطوراس لئے لکھنے کی ضرورت پیش آئی کہ اب الغزالی فورم پربعض نطفہ بے تحقیق فرقوں کے گرگے جعلی ونقلی ناموں سے رجسٹرہوکرہم خدام احناف کوطیش دلاناچاہتے ہیں تاکہ طیش میں آکرہم اپنے مقصداصلی سے ہٹ کران کے اوٹ پٹانگ جواب دینے میں اپنی صلاحیتوں کوصرف کردیں۔شیطان اورشیطانی ٹولہ نے ہمیشہ سے یہی چاہاہے اوراس کی ذریت اب اس کام کوخوبصورت ناموں کالیبل لگاکرکام کررہی ہے۔
میری تمام حنفی بھائیوں سے درخواست ہے کہ کتے کے بھونکنے کاجواب دیاجاتاہے نہ ہی کاٹنے کا،راہی کواپنی منزل پرپہنچنے کی دھن اورلگن ہونی چاہئے بس۔
ہمیں بھی اپنے کام کوجاری رکھناچاہئے اورکتوں کی آوازوں پرکان نہیں دھرناچاہئے۔اب دیکھنایہ ہے کہ میری اس تحریرکامخاطب کون خودکوسمجھتاہے اوراپنے بھونکنے میں شدت پیداکرتاہے۔ویسے مجھے بھونکنے والے کتے بھی پسندہیں اورکاٹ کھاناتوان کی عادت ہے۔
 

تعاقب

وفقہ اللہ
رکن
ناصر صاحب جی
اتنا چراغ پا کیوں ہیں ۔جواب دینے کی طاقت نہیں یا حق بات کڑوی لگی۔کتاب الحیل کا تعاقب جن محدثین نے کیا ان کے بارے مٰیں کیا خیال ہے ۔حق احناف کی طرح بے پر آپ بھی اڑائیے ۔میں سمجھتا تھا چراغوں مین کچھ تیل ہوگا یہاں تو پتی ہی سو کھی ہے۔
 

مزمل شیخ بسمل

وفقہ اللہ
رکن
تعاقب نے کہا ہے:
واہ جناب محمد بن عبد اللہ الشافعی متعصب۔ابن حبان، العقیلی، ابن عدی کی فہرست میں کتب کانام نہیں۔شیخ جی یہ بات عبد اللہ بن مبارک کہہ رہے ہیں۔خطیب نے صرف نقل کیا ہے ۔اور آپ نے گنہگار خطیب کو ٹہرادیا ۔اور ابن مبارک کے بارے میں لب سی لئے ۔یہ تو آپ ثابت کریں کہ امام ابو حنیفہ کی یہ کتاب نہیں ۔عبد اللہ بن مبارک نے غلط کہا۔کاش ادھر ادھر کی باتوں سے گریز کرکے سچی اور سیدھی بات لکھتے۔جو شائد بس میں نہیں۔

اب یہ تو تم نے ایسی بات کردی ہے کہ جس سے سوائے جہالت کے کچھ نہیں نظر آتا۔

ذرا یہ بتاؤ کے ایک ضعیف راوی کسی صحابی سے نبی کی کوئی بات نقل کرے تو اسے مانو گے؟ لگتا ہے تم نے ابھی حدیث کی الف بھی نہیں پڑھی تو تمہیں سمجھاتا ہوں کے بیٹا! کسی خبر کے سچا ہونے کے لئے تمام راویوں کا قوی اور ثقہ ہونا ضروری ہے۔ یہ بات سمجھ آئی؟ٍ
مثلا کوئی شیعہ (کافر) راوی اگر حضرت امام حسین یا حضرت علی سے متعے روایت کرے گا تو مانو گے؟ نہیں نا؟ پھر اگر کوئی شیعہ کہے کہ تم نے شیعہ راوی کو طعن کیا ہے اور حضرت علی کے بارے میں لب سی لئے تو کیا کہوگے؟
جب خبر دینے والا ہی ضعیف ہے تو اس سے کیا توقع کہ وہ حضرت علی پر سچ بول رہا یا جھوٹ؟
اسی طرح ابن مبارک پر سچ بولا گیا یا جھوٹ اس کا فیصلہ تو راوی ہی کرینگے نا؟
جب اس خبر کے راوی ضعیف ہیں اور محدثین ان پر کلام کرتے ہیں تو کیا معلوم کہ عبد اللہ بن مبارک نے ایسا کہا بھی یا نہیں؟
لیکن کاپی پیسٹ کا طعنہ ہمیں دینے والے بچوں والے اصول بھی نہ جانیں تو کیا کہا جائے۔ جہلاء سے بحث میں بالکل مزا نہیں آتا یار۔ اپنے کسی عالم کو لاؤ جو کچھ جانتا ہو۔ شکاری بھائی تو ہمارے فقہ حنفی والے بھی کسی سوال کا ایک بھی جواب نہ دے سکے الٹا یہ احمقانہ سوال داغ دیا جس کی سند ہی صحیح نہیں۔ اس پر سات حوالے ایک ہی راوی ربیع بن نافع کے حق میں لکھ دیئے ہیں باقی راویوں کا ذکر ہی نہیں کیا۔ اب اسے کیا کہیں؟
 
سٹیٹس
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
Top