عُجب کا نہایت موثر علاج

'اصلاح معاشرہ' میں موضوعات آغاز کردہ از مفتی رضوان یونس،, ‏اکتوبر 2, 2012۔

  1. مفتی رضوان یونس،

    مفتی رضوان یونس، وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    129
    موصول پسندیدگیاں:
    5
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    بکھرتے موتی - ملفوظات حضرت مولانا حکیم محمد اختر صاحب دامت برکاتہ
    مرتبہ: سید عشرت جمیل میر
    عُجب کا نہایت موثر علاج

    غرض ظاہری و باطنی گناہوں سے بچنے کی ہر وقت فکر رہنی چاہیے۔ بعض دفعہ آدمی ظاہری گناہوں سے بچتا ہے۔ لیکن باطنی گناہ میں مبتلا ہوجاتا ہے مثلاً چندہ اور اہتمام کا کام تو دیانت سے کیا مخلوق میں واہ واہ ہوگئی اور عجب پیدا ہوگیا کہ واقعی میں بڑا اچھا کام کرتا ہوں میں بھی کچھ ہوں۔ بس سمجھ لو کہ کام خراب ہوگیا۔ جب آدمی اپنے آپ کو اچھا سمجھتا ہے تو اﷲ کی نظر میں برا ہوتا ہے۔ اس لیے جب مخلوق تعریف کرے یا دل تعریف کرے تو سالک کو کیا کرنا چاہیے؟ دشمن خارجی ہو یا داخلی دونوں سے ہوشیار رہنا چاہیے اور داخلی اور خارجی دونوں دفاع مضبوط رکھناچاہیے۔ جب دل تعریف کرے تو داخلی دفاع کو مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔ اس وقت یہ سوچنا چاہیے کہ میں پیشاب پاخانے سے بدتر ہوں، مجھ سے اچھا وہ کتا ہوگا بلکہ پاخانے کا کنستر مجھ سے اچھا ہوگا اگر میرا خاتمہ خراب ہوگیا۔ کیونکہ اس غلاظت سے حساب کتاب نہیں ہوگا۔ جب تک خاتمہ بالخیر نہیں ہوجاتا اس وقت تک اپنے آپ کو کیسے اچھا سمجھ لوں کیوں کہ خاتمہ پر ہی اچھا یا برا ہونا منحصر ہے اور مجھے ابھی اپنے خاتمہ کا علم نہیں کہ کیا مقدر ہے۔ ہاں جس دن خاتمہ صحیح ہوجائے گا اس دن سمجھ لوں گا کہ میں اچھا تھا اگر آج اپنے آپ کو اچھا سمجھ لوں اور خدانخواستہ خاتمہ خراب ہوجائے تو کیا میں حقیقت میں اچھا ہوں گا اور کیا یہ اپنے آپ کو اچھا سمجھنا مجھے اﷲ کی نظر میں اچھا کرے گا۔ اس لئے جب تک خاتمہ بالخیر نہیں ہوجاتا اس وقت تک میں پیشاب پاخانہ سے کتے اور سور سے بدتر ہوں۔ اسی طرح جب مخلوق تعریف کرے تو گویا خارجی دشمن حملہ آور ہوا ہے۔ اس لیے خارجی دفاع کو مضبوط رکھنے کی ضرورت ہے۔ اس وقت اپنے اﷲ سے یوں کہو کہ اے اﷲ آپ کی ستاری ہے کہ آپ نے میرے عیوب کو مخلوق سے چھپا دیا۔ اگر ان عیوب میں سے کسی ایک عیب کی آپ پردہ دری فرمادیں تو لوگ مجھ سے بات کرنا بھی پسند نہ کریں۔ میرے اندر تو ہزاروں عیوب ہیں یہ آپ کا کرم ہے کہ آپ نے لوگوں سے ان کو چھپادیا۔ اے اﷲ بھلائیاں آپ کو زیبا ہیں برائیاں ہم کو لائق ہیں۔ جس طرح پیٹ کے اندر پاخانہ چھپا ہوا ہے اگر پیٹ میں کوئی سوراخ ہوجائے تو لاکھ عطر لگائوں لوگ تعفن سے قریب نہ پھٹکیں آپ نے نیکی کا یہ تھوڑا سا عطر لگادیا اور میرے عیوب کے پاخانہ کو جو میرے اندر موجود ہے چھپا دیا۔ ہر بیماری کا علاج اپنے اﷲ سے مشغول ہوجانا ہے۔ شیطان نے تو تمہارے کان میں پھونک ماری تھی دشمنی سے کہ اﷲ سے دور ہوجائے وہ دشمنی ذریعۂ قرب بن گئی پیر کے راستہ بتانے سے۔ کیونکہ اگر دل کی تعریف کرنے سے یا مخلوق کی تعریف سے خوش ہو کر تم اپنے آپ کو اچھا سمجھ لیتے تو شیطان کامیاب ہوجاتا لیکن تم نے اپنے آپ کو اور حقیر کرلیا اور اﷲ سے مشغول ہوگئے۔ شیطان نے جو دشمنی کرنی چاہی تھی وہ ذریعۂ قرب ہوگئی۔

    اﷲ والے کسی کی تعریف سے متاثر نہیں ہوتے اسی لیے انہیں قطب کہتے ہیں۔ قطب ستارہ اپنی جگہ سے ہلتا نہیں۔ نہ مخلوق کی تعریف ان پر اثر انداز ہوتی ہے نہ برائی۔ مدح و ذم ان کے لیے برابر ہوتی ہے۔ حضرت جنید بغدادی اپنے مریدوں کے ساتھ ایک بازار سے گزر رہے تھے کہ ایک بڑھیا نے انہیں مکار کہا۔ حضرت جنید بغدادی نے فرمایا کہ صرف اس بڑھیا نے جنید کو صحیح پہچانا ہے۔ حضرت حاجی امداد اﷲ صاحب فرمایا کرتے تھے کہ امداداﷲ پر اﷲ کی ستاری ہے ورنہ یہ علماء مجھ سے بیعت ہوسکتے تھے؟ اﷲ والوں کی نظر اپنے کمالات پر نہیں ہوتی اپنے عیوب پر ہوتی ہے وہ اپنے آپ کو دنیا کی ہر شے سے حقیر سمجھتے ہیں۔ شیخ سعدی فرماتے ہیں ؎

    ببانگ دھل ہولم از دور بود

    بغیب اندرم عیب مستور بود

    میرے ڈھول کی آواز سے میرا رعب و ہیبت دور دور پہنچ گیا ہے لیکن میرے اندر کا جو پول نظر نہیں آرہا اس کی بدولت میرا عیب پوشیدہ ہوگیا ہے۔ ڈھول کے اندر پول ہوتا ہے۔ میرا رعب و ہیبت مثل ڈھول کی آواز کے ہے کہ آواز تو دور دور جارہی ہے لیکن اندر سے خالی ہے عیب دار ہے۔ کیونکہ وہ نظر نہیں آرہا ہے اس لئے عیب پوشیدہ ہوگیا۔

    ۳؍شعبان المعظم ۱۳۸۹؁ھ، مطابق ۱۳؍ اکتوبر ۱۹۶۹؁ء
  2. محمد نبیل خان

    محمد نبیل خان وفقہ اللہ رکن

    پیغامات:
    8,479
    موصول پسندیدگیاں:
    704
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    اللہ والوں کی نظر اللہ ہی پہ ہوتی ہے
    جزاک اللہ خیرا
  3. مولانانورالحسن انور

    مولانانورالحسن انور رکن مجلس العلماء رکن مجلس العلماء

    پیغامات:
    1,760
    موصول پسندیدگیاں:
    395
    صنف:
    Male
    جگہ:
    Pakistan
    جزاک اللہ ،،،،،،،،،،،،

اس صفحے کو مشتہر کریں