فوت ہو گیا

احمدقاسمی

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
فوت ہو گیا
دکھ کے ساتھ اطلاع ۔جناب محمد داؤ الرحمن علی ( عالی جاہ ) کا کل مو با ئل "فوت" ہو گیا ۔دعا کریں مغموم کےوالد صاحب جلد نظر کرم یا گرم فرماکر مو با ئل کی دکان پر قدم رنجہ۔۔۔۔۔ یا جیب ہلکی فرمائیں۔عالی جاہ گہرے صدمہ میں ہیں ۔
 
Last edited:
ت

تمر

خوش آمدید
مہمان گرامی
فوت ہو گیا
دکھ کے ساتھ اطلاع ۔جناب محمد داؤ الرحمن علی ( عالی جاہ ) کا کل مو با ئل "فوت" ہو گیا ۔دعا کریں مغموم کےوالد صاحب جلد نظر کرم یا گرم فرماکر مو با ئل کی دکان پر قدم رنجہ۔۔۔۔۔ یا جیب ہلکی فرمائیں۔عالی جاہ گہرے صدمہ میں ہیں ۔
انا للہ وانا لیہ راجعون
خدا بدلہ جمیل یا جمیلہ عطا فرمائے ۔ہم آپ کے اس دکھ عظیم میں ہزار بار ساتھ ہیں ۔
یا خدا تو کسی کو غریبی نہ دے ۔موت دیدے مگر بد نصیبی نہ دے
 

احمدقاسمی

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
انا للہ وانا لیہ راجعون
خدا بدلہ جمیل یا جمیلہ عطا فرمائے ۔ہم آپ کے اس دکھ عظیم میں ہزار بار ساتھ ہیں ۔
یا خدا تو کسی کو غریبی نہ دے ۔موت دیدے مگر بد نصیبی نہ دے
مجھے لگتا ہے آپ کے علاوہ منتظم اعلیٰ کے دکھ میں کوئی شریک نہیں ۔ شریک حیات کی دعا دیجئے۔
میری نماز جنازہ پڑھائی غیروں نے
مرےتھے جن کے لیے وہ رہے وضو کرتے
 

زنیرہ عقیل

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
محترم کو والد محترم سے ہمیں پوری ہمدردی ہے کیوں کہ جواں سال بیٹے کے ہاتھ میں موبائل نہ ہونا انتہائی کربناک پہلو ہے اور ان کے جیب میں ہنستے کھیلتے اور رنگوں سے بھرپور رقم کو اس ناگہانی آفت کے بعد ہجرت کرنی ہوگی کسی دوکاندار کی جیب کی طرف جس کا دکھ ہمیں بھی ہے کاش بروقت یہ رقم ہماری مٹھائی میں خرچ ہوجاتی تو بیٹے کے موبائل کے غم کا سدباب کرنے میں ضایع نہ ہوتے۔ ہم محترم کے والد کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور امید کرتے ہیں کہ بیٹے پر سختی کی جائے گی اور بے جا استعمال اور خراب کرنے پر اور 3310 کی سزا دی جائے گی
 

مولانانورالحسن انور

رکن مجلس العلماء
رکن مجلس العلماء
3310 ۔کیا؟؟؟؟
3310 پرانے وقت کا نہایت ملنسار شریف طبع نہایت سادہ ۔۔۔۔۔ نوکیا خاندان کا ایک عظیم سپوت تھا ۔۔ کیا بات تھی ۔۔۔۔سب اسی کی چاہت رکھتے تھے ۔۔۔ جس کا اسکے ساتھ تعلق بن جاتا وہ اپنی سانسوں سے بھی عزیز ہی نہیں عزیز تر رکھتا ۔۔۔ 3310 کی شرافتوں کا ایک زمانہ قائل رہا بڑے بڑے صلحاء امت فقہا ء عظام ۔۔ قراٰ حضرات کی گہری تعلق داری تھی ۔۔۔۔ اور 3310 ۔۔۔ بے چارہ اتنا معصوم ۔۔۔ سبحان اللہ اس کی شرافت پر مجھ جیسا گناہگار کیا لب کشائی کرے ۔۔۔ اسکی عظمت رفتہ کو لکھتے ہوے ہاتھ کانپ رہے ہیں آنکھوں کے سامنے اسکی معصوم سی شبیہ آرہی ہے اسکی ان وفاوں اور پاکیزہ اداوں کے دھندلے چشم ترکے سامنے ابھر رہے ہیں اور ماضی کے جھرونکوں میں جھانکنے لگا ہوں ۔۔۔ کتنا پاک تھا بے چارہ 3310 نہ نیٹ سے دوستی ۔۔۔ نہ گانوں سے تعلق ۔۔۔ انتا صاف جیسے تبلیغی جماعت میں سال لگا کر آیا ہو ۔۔۔۔۔۔ اور مجھے سلطان معظم کے چہیتے لاڈلے پیارے موبائیل کی فوتگی کا غم غم ہجراں مھسوس ہو رہا ہے ۔۔۔ سلطان معظم نےکتنی چاہتوں سے اپنے نازک چنبیلی ہاتھوں میں اسے پکڑا ہو گا ۔۔۔ رات کی تاریکی میں اسے اٹھ اٹھ کر دیکھتے ہوں ۔۔ موبائیل سو تو نہیں کیا۔۔۔ کیا قربت کے وہ لمحات ہونگے جب شب تنہائی اور رضائی کے اندھیروں میں موبائیل مغمومہ کو آن کر کے کسی دل جلے کے میسج پڑھتے ہوں گے ۔۔۔ اور موبائیل کو فرت محبت سے اپنے گلابی ہونٹوں سے چومتے ہونگے ۔۔۔ آہ بے چارہ موبائیل ۔۔۔۔۔۔کتنی خلوتوں کی رفاقت اسے نصیب رہی
آئی ہوگی کسی کو ہجر میں موت
مجھ کو تو نیند بھی نہیں آتی
نیند اب کیسے آے کسی پیاری کی جدائی کہاں سونے دیتی ہے
بن تمہارے کبھی نہیں آئی
کیا مری نیند بھی تمہاری ہے
اب تو سلطان معظم موبائیل کی جدائی میں یہ گنگناتے ہوں گے

آج پھر نیند کو آنکھوں سے بچھڑتے دیکھا
آج پھر یاد کوئی چوٹ پرانی آئی
میں اورمیری رضائی اور تنہائی ۔۔۔ہاے میرے موبائیل تیری یاد بہت آئی
اب میں شب کی تنہائی میں کسے پیار سے دیکھوں گا
میرے زخمی دل کو تیری طرح کون جانتا ہے
ذرا سی آہٹ پر میں جاگ جاتا ہوں
بیقراری میں ہر سمت دیکھتا رہتا ہوں
شاید کہ تو لوٹ آیا میری محبت میں
یہ دلاسہ اپنے دل کو دیتا رہتا ہوں
آجا اب آہی جا دلبے قرار کو تیرے دیدار سے قرار آے
وگرنہ ہم نے بھی دنیا ہی چھوڑ جانے کا پروگرام بنا رکھا ہے
ایک تو ہی تو تھا میری تنہائی اور میرے رازوں کا آمین
تیرا خیال تیرا تصور میں نے دل و دماغ میں سجا رکھا ہے
تیرے جانے سے تو بیگم بھی مجھے اب اچھی نہیں لگتی
وہ بھی طعنے دے رہی ہے روزتیری اس بے وفائی کے
میں مانتا ہوں میں تیری مھبت کے لائق نہیں اے موبائیل
مگر میری جیب کسی اور کو لانے کی اجازت نہین دیتی
 

احمدقاسمی

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
اور 3310 ۔۔۔ بے چارہ اتنا معصوم ۔۔۔ سبحان اللہ اس کی شرافت پر مجھ جیسا گناہگار کیا لب کشائی کرے ۔۔۔ اسکی عظمت رفتہ کو لکھتے ہوے ہاتھ کانپ رہے ہیں آنکھوں کے سامنے اسکی معصوم سی شبیہ آرہی ہے اسکی ان وفاوں اور پاکیزہ اداوں کے دھندلے چشم ترکے سامنے ابھر رہے ہیں اور ماضی کے جھرونکوں میں جھانکنے لگا ہوں ۔۔۔ کتنا پاک تھا بے چارہ 3310 نہ نیٹ سے دوستی ۔۔۔ نہ گانوں سے تعلق ۔۔۔ انتا صاف جیسے تبلیغی جماعت میں سال لگا کر آیا ہو
واہ واہ کیا خوب ترجمانی ہے! ۔مرحوم 3310 کو اپنی قسمت پر ناز ہو گا ۔ کسنے ایسا مرثیہ لکھا ہوگا؟ کاش نوکیا کمپنی کی نظر کرم سے یہ مر ثیہ گذرجاتا ۔ اللہ کرے زور قلم اور ہو زیادہ
 

محمدداؤدالرحمن علی

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
فوت ہو گیا
دکھ کے ساتھ اطلاع ۔جناب محمد داؤ الرحمن علی ( عالی جاہ ) کا کل مو با ئل "فوت" ہو گیا ۔دعا کریں مغموم کےوالد صاحب جلد نظر کرم یا گرم فرماکر مو با ئل کی دکان پر قدم رنجہ۔۔۔۔۔ یا جیب ہلکی فرمائیں۔عالی جاہ گہرے صدمہ میں ہیں ۔
عالی جاہ کو نیا موبائل مل گیا تھا
 

محمدداؤدالرحمن علی

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
3310 پرانے وقت کا نہایت ملنسار شریف طبع نہایت سادہ ۔۔۔۔۔ نوکیا خاندان کا ایک عظیم سپوت تھا ۔۔ کیا بات تھی ۔۔۔۔سب اسی کی چاہت رکھتے تھے ۔۔۔ جس کا اسکے ساتھ تعلق بن جاتا وہ اپنی سانسوں سے بھی عزیز ہی نہیں عزیز تر رکھتا ۔۔۔ 3310 کی شرافتوں کا ایک زمانہ قائل رہا بڑے بڑے صلحاء امت فقہا ء عظام ۔۔ قراٰ حضرات کی گہری تعلق داری تھی ۔۔۔۔ اور 3310 ۔۔۔ بے چارہ اتنا معصوم ۔۔۔ سبحان اللہ اس کی شرافت پر مجھ جیسا گناہگار کیا لب کشائی کرے ۔۔۔ اسکی عظمت رفتہ کو لکھتے ہوے ہاتھ کانپ رہے ہیں آنکھوں کے سامنے اسکی معصوم سی شبیہ آرہی ہے اسکی ان وفاوں اور پاکیزہ اداوں کے دھندلے چشم ترکے سامنے ابھر رہے ہیں اور ماضی کے جھرونکوں میں جھانکنے لگا ہوں ۔۔۔ کتنا پاک تھا بے چارہ 3310 نہ نیٹ سے دوستی ۔۔۔ نہ گانوں سے تعلق ۔۔۔ انتا صاف جیسے تبلیغی جماعت میں سال لگا کر آیا ہو ۔۔۔۔۔۔ اور مجھے سلطان معظم کے چہیتے لاڈلے پیارے موبائیل کی فوتگی کا غم غم ہجراں مھسوس ہو رہا ہے ۔۔۔ سلطان معظم نےکتنی چاہتوں سے اپنے نازک چنبیلی ہاتھوں میں اسے پکڑا ہو گا ۔۔۔ رات کی تاریکی میں اسے اٹھ اٹھ کر دیکھتے ہوں ۔۔ موبائیل سو تو نہیں کیا۔۔۔ کیا قربت کے وہ لمحات ہونگے جب شب تنہائی اور رضائی کے اندھیروں میں موبائیل مغمومہ کو آن کر کے کسی دل جلے کے میسج پڑھتے ہوں گے ۔۔۔ اور موبائیل کو فرت محبت سے اپنے گلابی ہونٹوں سے چومتے ہونگے ۔۔۔ آہ بے چارہ موبائیل ۔۔۔۔۔۔کتنی خلوتوں کی رفاقت اسے نصیب رہی
آئی ہوگی کسی کو ہجر میں موت
مجھ کو تو نیند بھی نہیں آتی
نیند اب کیسے آے کسی پیاری کی جدائی کہاں سونے دیتی ہے
بن تمہارے کبھی نہیں آئی
کیا مری نیند بھی تمہاری ہے
اب تو سلطان معظم موبائیل کی جدائی میں یہ گنگناتے ہوں گے

آج پھر نیند کو آنکھوں سے بچھڑتے دیکھا
آج پھر یاد کوئی چوٹ پرانی آئی
میں اورمیری رضائی اور تنہائی ۔۔۔ہاے میرے موبائیل تیری یاد بہت آئی
اب میں شب کی تنہائی میں کسے پیار سے دیکھوں گا
میرے زخمی دل کو تیری طرح کون جانتا ہے
ذرا سی آہٹ پر میں جاگ جاتا ہوں
بیقراری میں ہر سمت دیکھتا رہتا ہوں
شاید کہ تو لوٹ آیا میری محبت میں
یہ دلاسہ اپنے دل کو دیتا رہتا ہوں
آجا اب آہی جا دلبے قرار کو تیرے دیدار سے قرار آے
وگرنہ ہم نے بھی دنیا ہی چھوڑ جانے کا پروگرام بنا رکھا ہے
ایک تو ہی تو تھا میری تنہائی اور میرے رازوں کا آمین
تیرا خیال تیرا تصور میں نے دل و دماغ میں سجا رکھا ہے
تیرے جانے سے تو بیگم بھی مجھے اب اچھی نہیں لگتی
وہ بھی طعنے دے رہی ہے روزتیری اس بے وفائی کے
میں مانتا ہوں میں تیری مھبت کے لائق نہیں اے موبائیل
مگر میری جیب کسی اور کو لانے کی اجازت نہین دیتی
زبردست ترجمانی
ویسے 3310 ابھی بھی زندہ ہے،کسی نہ کسی حال میں
 

محمدداؤدالرحمن علی

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
محترم کو والد محترم سے ہمیں پوری ہمدردی ہے کیوں کہ جواں سال بیٹے کے ہاتھ میں موبائل نہ ہونا انتہائی کربناک پہلو ہے اور ان کے جیب میں ہنستے کھیلتے اور رنگوں سے بھرپور رقم کو اس ناگہانی آفت کے بعد ہجرت کرنی ہوگی کسی دوکاندار کی جیب کی طرف جس کا دکھ ہمیں بھی ہے کاش بروقت یہ رقم ہماری مٹھائی میں خرچ ہوجاتی تو بیٹے کے موبائل کے غم کا سدباب کرنے میں ضایع نہ ہوتے۔ ہم محترم کے والد کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور امید کرتے ہیں کہ بیٹے پر سختی کی جائے گی اور بے جا استعمال اور خراب کرنے پر اور 3310 کی سزا دی جائے گی
اس میں ہم نے والد محترم کو زحمت نہیں دی خود ہی 'مہم موبائل' چلاکر نیا موبائل حاصل کیا۔:p
 

مولانانورالحسن انور

رکن مجلس العلماء
رکن مجلس العلماء
واہ واہ کیا خوب ترجمانی ہے! ۔مرحوم 3310 کو اپنی قسمت پر ناز ہو گا ۔ کسنے ایسا مرثیہ لکھا ہوگا؟ کاش نوکیا کمپنی کی نظر کرم سے یہ مر ثیہ گذرجاتا ۔ اللہ کرے زور قلم اور ہو زیادہ
شکریہ حضور ان محبتوں کا
 

مولانانورالحسن انور

رکن مجلس العلماء
رکن مجلس العلماء
اس میں ہم نے والد محترم کو زحمت نہیں دی خود ہی 'مہم موبائل' چلاکر نیا موبائل حاصل کیا۔:p
مبارک ہو بھی۔۔ اب میں سمھجا یہ دوسری تیسری کا شور ۔۔ مو بائل کی صورتم میں ظاہر ہوئی
 

زنیرہ عقیل

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
3310 ۔کیا؟؟؟؟
3310 پرانے وقت کا نہایت ملنسار شریف طبع نہایت سادہ ۔۔۔۔۔ نوکیا خاندان کا ایک عظیم سپوت تھا ۔۔ کیا بات تھی ۔۔۔۔سب اسی کی چاہت رکھتے تھے ۔۔۔ جس کا اسکے ساتھ تعلق بن جاتا وہ اپنی سانسوں سے بھی عزیز ہی نہیں عزیز تر رکھتا ۔۔۔ 3310 کی شرافتوں کا ایک زمانہ قائل رہا بڑے بڑے صلحاء امت فقہا ء عظام ۔۔ قراٰ حضرات کی گہری تعلق داری تھی ۔۔۔۔ اور 3310 ۔۔۔ بے چارہ اتنا معصوم ۔۔۔ سبحان اللہ اس کی شرافت پر مجھ جیسا گناہگار کیا لب کشائی کرے ۔۔۔ اسکی عظمت رفتہ کو لکھتے ہوے ہاتھ کانپ رہے ہیں آنکھوں کے سامنے اسکی معصوم سی شبیہ آرہی ہے اسکی ان وفاوں اور پاکیزہ اداوں کے دھندلے چشم ترکے سامنے ابھر رہے ہیں اور ماضی کے جھرونکوں میں جھانکنے لگا ہوں ۔۔۔ کتنا پاک تھا بے چارہ 3310 نہ نیٹ سے دوستی ۔۔۔ نہ گانوں سے تعلق ۔۔۔ انتا صاف جیسے تبلیغی جماعت میں سال لگا کر آیا ہو ۔۔۔۔۔۔ اور مجھے سلطان معظم کے چہیتے لاڈلے پیارے موبائیل کی فوتگی کا غم غم ہجراں مھسوس ہو رہا ہے ۔۔۔ سلطان معظم نےکتنی چاہتوں سے اپنے نازک چنبیلی ہاتھوں میں اسے پکڑا ہو گا ۔۔۔ رات کی تاریکی میں اسے اٹھ اٹھ کر دیکھتے ہوں ۔۔ موبائیل سو تو نہیں کیا۔۔۔ کیا قربت کے وہ لمحات ہونگے جب شب تنہائی اور رضائی کے اندھیروں میں موبائیل مغمومہ کو آن کر کے کسی دل جلے کے میسج پڑھتے ہوں گے ۔۔۔ اور موبائیل کو فرت محبت سے اپنے گلابی ہونٹوں سے چومتے ہونگے ۔۔۔ آہ بے چارہ موبائیل ۔۔۔۔۔۔کتنی خلوتوں کی رفاقت اسے نصیب رہی
آئی ہوگی کسی کو ہجر میں موت
مجھ کو تو نیند بھی نہیں آتی
نیند اب کیسے آے کسی پیاری کی جدائی کہاں سونے دیتی ہے
بن تمہارے کبھی نہیں آئی
کیا مری نیند بھی تمہاری ہے
اب تو سلطان معظم موبائیل کی جدائی میں یہ گنگناتے ہوں گے

آج پھر نیند کو آنکھوں سے بچھڑتے دیکھا
آج پھر یاد کوئی چوٹ پرانی آئی
میں اورمیری رضائی اور تنہائی ۔۔۔ہاے میرے موبائیل تیری یاد بہت آئی
اب میں شب کی تنہائی میں کسے پیار سے دیکھوں گا
میرے زخمی دل کو تیری طرح کون جانتا ہے
ذرا سی آہٹ پر میں جاگ جاتا ہوں
بیقراری میں ہر سمت دیکھتا رہتا ہوں
شاید کہ تو لوٹ آیا میری محبت میں
یہ دلاسہ اپنے دل کو دیتا رہتا ہوں
آجا اب آہی جا دلبے قرار کو تیرے دیدار سے قرار آے
وگرنہ ہم نے بھی دنیا ہی چھوڑ جانے کا پروگرام بنا رکھا ہے
ایک تو ہی تو تھا میری تنہائی اور میرے رازوں کا آمین
تیرا خیال تیرا تصور میں نے دل و دماغ میں سجا رکھا ہے
تیرے جانے سے تو بیگم بھی مجھے اب اچھی نہیں لگتی
وہ بھی طعنے دے رہی ہے روزتیری اس بے وفائی کے
میں مانتا ہوں میں تیری مھبت کے لائق نہیں اے موبائیل
مگر میری جیب کسی اور کو لانے کی اجازت نہین دیتی
واہ بہت خوب
 

زنیرہ عقیل

منتظم اعلی۔ أیدہ اللہ
Staff member
منتظم اعلی
مثل مشہور ہے " سونا کسے آدمی بسے ۔ کھرے کھوٹے کا پتہ چلتا ہے ۔ اپن بھائی کا گھر تو بسنے دیں پھر سیرت بھی دیکھ لیں گے ۔
لیکن آپ جو چار چار کا ورد جاری رکھے ہوئے ہیں تو جو پہلی ہونے والی ہوگی وہ بھی بھاگ جائےگی
 
Top