اپنے نفس کو مٹانا یہی سلوک کا حاصل ہے

محمد ارمغان

وفقہ اللہ
رکن
ایک اللہ والے فرماتے ہیں کہ :۔
کبھی بُرائی بڑے خفیہ طریقہ سے دِل میں آ جاتی ہے خود انسان کو پتہ نہیں چلتا کہ میرے دِل میں تکبر ہے۔ کبھی آدمی کے دِل میں بڑائی ہوتی ہے اور زبان پر تواضع ہوتی ہے کہ میں تو کچھ بھی نہیں۔حضرت تھانوی رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں کہ بعض لوگ اپنے منہ سے اپنی خوب حقارت بیان کرتے ہیں کہ میں کچھ نہیں ہوں صاحب۔ حقیر نا چیز بندہ ہوں۔ لیکن اگر کوئی کہہ دے کہ واقعی آپ کچھ نہیں ہیں۔ آپ حقیر بھی ہیں اور ناچیز بھی ہیں تو پھر دیکھئےان کا چہرہ فق ہو جاتا ہے کہ نہیں اور دِل میں ناگواری محسوس ہوگی۔ یہی دلیل ہے کہ یہ دِل میں پنے آپ کو حقیر نہیں سمجھتا۔ حضرت فرماتے ہیں کہ بعض لوگوں کو زبانی تواضع بھی تکبر سے پیدا ہوتی ہے کہ اس کو اپنی بڑائی کا ذریعہ بناتے ہیں تاکہ لوگوں میں خوب شہرت ہو جائےکہ فلاں صاحب بڑے متواضع ہیں اپنے کو کچھ نہیں سمجھتے۔ اس تواضع اور خاکساری کا منشاء تکبر اور حبِ جاہ ہے۔ چنانچہ اگر لوگ اس کی تعظیم نہ کریں تو اس کو ناگواری ہوتی ہے یہی دلیل ہے کہ یہ تواضع اللہ کے لیے نہیں تھی ورنہ لوگوں کی تعظیم اور عدم تعظیم اس کے لیے برابر ہوتی۔
اس لیے بہ بڑائی بہت دِن کے بعدد ِل سے نکلتی ہے، تکبر کامرض بہت مشکل سے جاتا ہے۔ اسی بڑائی کو نکالنے کے لیے بزرگانِ دین ، مشائخ اور اللہ والوں کی صحبت اُٹھانی پڑتی ہے۔۔۔۔۔۔۔۔
یہ بڑی عظیم الشان نعمت ہے کہ جس کا نفس مٹ جائے۔حضرت خواجہ صاحب رحمۃ اللہ علیہ حکیم الامت مجدد الملت حضرت تھانوی رحمۃ اللہ علیہ خدمت میں جب حاضر ہوئے تو ایک پرچہ پر اپنی حاضری کا مقصد ایک شعر میں لکھ کر بھیج دیا وہ شعر یہ تھا
نہیں کچھ اور خواہش آپ کے دَر پر میں لایا ہوں
مٹا دیجیے مٹا دیجیے میں مٹنے ہی کو آیا ہوں​
اپنے نفس کو مٹانا یہی سلوک کا حاصل ہے۔۔۔۔۔۔۔ اَبھی کس بات پر اپنے کو بڑا سمجھیں، اَبھی کس منہ سے اپنی تعریف کریں، کیا منہ ہے ہمارا کہ دُنیا میں اپنی تعریف کریں۔ اَبھی تو فیصلہ کا انتظار ہے۔
ہم ایسے رہے یا کہ ویسے رہے
وہاں دیکھنا ہے کہ کیسے رہے​
حضرت حکیم الامت تھانوی فرماتے ہیں کہ یہ نعمت صوفیاء کے اندر خاص ہوتی ہے کہ بزرگوں کی صحبت میں رَہ کر اپنے نفس کو مٹاتے چلے جاتے ہیں۔ بہت کچھ ہوتے ہیں لیکن اپنے کو کچھ نہیں سمجھتے۔ حضرت مولانا محمد احمد صاحب شعر ہے
کچھ ہونا مِرا ذلت و خواری کا سبب ہے
یہ ہے مِرا اعزاز کہ میں کچھ بھی نہیں ہوں​
خواجہ عزیز الحسن صاحب مجذو ب فرماتے ہیں
ہم خاک نشینوں کو نہ مسند پہ بٹھاؤ
یہ عشق کی توہین ہے عزاز نہیں ہے​
۔۔۔۔۔۔۔لکھنے کو تو اس موضوع پر بہت ہے ، مگر یہ کافی ہے۔ اللہ تعالیٰ اس کی حقیقت ہمارے قلوب میں اُتار کر ہم سب کو عمل کی توفیق عطا فرمائے۔
احقر کے متعلق چند اراکین الغزالی میں جو غلط فہمیاں پیدا ہو گئیں ہیں کہ یہ اپنے آپ کو نمایاں کرنے، چُھپانے کے بجائے چھاپنے اور تجسس پیدا کرنے کی کوشش میں ہے، تو احقر ان سب سے برأت کا اظہار کرتا ہے کہ ایسا ہرگز نہیں ہے لیکن پھر بھی بشر ہونے کے ناطے دُعاء کرتا ہوں کہ اگر ایسا قبیح و مذموم و لعین مقصد احقر کا رہا ہو تو اللہ معاف فرما دے آئندہ میری حفاظت فرمائے اور میرے دوستوں کے دِلوں میں پیدا ہونے والی غلط فہمیوں کو دُور فرما دے۔ احقر یہاں کچھ سیکھنے اور نفع اُٹھانے آیا ہے نہ کہ نفع دینے اور سکھانے۔اُمید ہے احقر کی یہ عرض گزشتہ تمام خطاؤں اور غلط فہمیوں کو دُور کردے گی
 

محمد نبیل خان

وفقہ اللہ
رکن
حضرت خواجہ صاحب رحمۃ اللہ علیہ حکیم الامت مجدد الملت حضرت تھانوی رحمۃ اللہ علیہ خدمت میں جب حاضر ہوئے تو ایک پرچہ پر اپنی حاضری کا مقصد ایک شعر میں لکھ کر بھیج دیا وہ شعر یہ تھا
نہیں کچھ اور خواہش آپ کے دَر پر میں لایا ہوں
مٹا دیجیے مٹا دیجیے میں مٹنے ہی کو آیا ہوں

واہ ۔ سبحان اللہ
جزاک اللہ خیرا
 

محمد نبیل خان

وفقہ اللہ
رکن
احقر کے متعلق چند اراکین الغزالی میں جو غلط فہمیاں پیدا ہو گئیں ہیں کہ یہ اپنے آپ کو نمایاں کرنے، چُھپانے کے بجائے چھاپنے اور تجسس پیدا کرنے کی کوشش میں ہے، تو احقر ان سب سے برأت کا اظہار کرتا ہے کہ ایسا ہرگز نہیں ہے

حضرت ! اللہ کریم آپ کو جزائے خیر عطاء فرمائے آمین
مجھ سمیت اکثر بلکہ غالب گمان سب معزز اراکین آپ سے حسن ظن رکھتے اور آپ کو انتہائی معزز اور محترم سمجھتے ہیں اللہ کرے آپ ایسے ہی ہوں آمین ۔ اگر آپ کو کسی بات سے اشبہ ہوا ہے تو ہم معزرت چاہتے ہیں ۔ اللہ کریم ہم سب کا حامی و ناصر ہو آمین
 

مفتی ناصرمظاہری

کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی
رکن
ارمغان صاحب میراووٹ آپ ہی کے حق میں ہے کوئی کچھ سمجھتارہے فکرنہ کریں ہاں بندہ اپنے کوآپ کوہمیشہ حقیراورراہ حق کافقیر خیال کرتارہے تواللہ نے چاہابیڑہ اسی سے پارہوجائے گا،آپ اللہ والے ہیں کہیں اللہ والوں سے کسی کوبدظنی ہوتی ہے؟آپ کسی بہکاوے میں مت آئیں،آپ کی تحریریں مفید،آپ کانظریہ قابل انقیاد،آپ کی آرالاجواب،آپ کے تبصرے بے مثال آپ کی نسبت جاندار،شاندار،آبداربلکہ تابدارہے۔کیوں آپ زمانے کی آہٹ پرکان دھرتے ہیں ،کسی کی کھسرپھسر،کسی کے نقد،کسی کے جارحانہ تیور،کسی کے دل آزارکمنٹس،کسی کے حوصلہ شکن کلمات، شاہین صفت جیالوں کے پائے استقامت میں تزلزل پیداکرسکے ہیں ؟کبھی نہیں۔طریق اورطریقت میں پیچ وخم ہوتے ہی ہیں،ایصال الی المطلوب کےلئے ہمارے بڑوں نے جان جوکھم محنتیں کی ہیں تب کہیں جاکرباغ وبہارلاسکے ہیں۔
مجھ سمیت اکثر بلکہ غالب گمان سب معزز اراکین آپ سے حسن ظن رکھتے اور آپ کو انتہائی معزز اور محترم سمجھتے ہیں اللہ کرے آپ ایسے ہی ہوں آمین ۔ اگر آپ کو کسی بات سے شبہ ہوا ہے تو ہم معذرت چاہتے ہیں ۔ اللہ کریم ہم سب کاناصرومددگار ہو۔ آمین
 

مفتی رضوان یونس،

وفقہ اللہ
رکن
السلام علیکم ورحمتہ اللہ
محترم ومکرم آنجناب کے متعلق اگر بالفرض چند اراکین کو غلط فہمی لاحق ھو بھی گئی ھو تو کیا پریشانی کیونکہ ’اپنے نفس کو مٹانا یہی سلوک کا حاصل ہے‘
اور عزیزم آپ اطمنانِ خاطر رکھیں مجھ ناچیز سمیت تمام احباب بشمول انتظامیہ کے قلوب میں جناب کی بے انتہاء ادب واحترام ھے
اور جب جناب مفتی ناصرمظاہری صاحب دامت برکاتہم کا آپ کے حق میں ووٹ ھے تو سمجھ لیجیے کہ آپ کا ادب واحترام تو ویسے ہی ھم پر لاگو ھو جاتا ھے قطع نظر اس بات کے کہ ناکارہ آپ کے شکوہ سے قبل بھی آپ سے محبت رکھتا ھے اور تمام اراکین بھی
مجھ سمیت اکثر بلکہ غالب گمان سب معزز اراکین آپ سے حسن ظن رکھتے اور آپ کو انتہائی معزز اور محترم سمجھتے ہیں اللہ کرے آپ ایسے ہی ہوں آمین ۔ اگر آپ کو کسی بات سے شبہ ہوا ہے تو ہم معذرت چاہتے ہیں ۔ اللہ کریم ہم سب کاناصرومددگار ہو۔ آمین
 

محمد ارمغان

وفقہ اللہ
رکن
جزاکم اللہ خیرا۔ آپ سب حضرات کی محبت ہے جس کی وجہ سے یہاں آتا ہوں ملاقات کرنے۔ اللہ تعالیٰ احقر کےبارے میں آپ حضرات کے نیک گمان کو مبارک فرمائے اور ہم سب کو ایسا بنا دے کہ اُس کو پسند آ جائیں۔
 
Top