حضرت مفتی مظفرحسین کا کمال تواضع واظہارکرامت

مفتی ناصرمظاہری

کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی
رکن
حضرت مفتی مظفرحسین کا کمال تواضع واظہارکرامت
ایک مرتبہ حضرت کے ساتھ سفر میں تھا بندہ اورحضرت کے ساتھ مولانازاہدصاحب اوران کے برادرقاری محمد سعید صاحب تڑفوی ناظم مدرسہ جڑبی رات کو قیام ان کے مدرسہ میں کیا صبح کو سرہندپہنچ گئے ،مزارسے فراغت کے بعد قریب ہی میں مسجدہے اس میں بیٹھے اس علاقہ کی ایک مشہورمعروف جگہ ہے فتح گڈھ اس میں ایک عمارت کے اندر سناہے کہ زندہ سکھوںکوشامل کیا گیا (چنوادئے گئے )اس دورمیں وہاںدیسی حلوہ جاری رہتاہے تو گویاکہ وہ تاریخی اعتبارسے قابل دید جگہ ہے اسی کی بناء پر مولانامحمد زاہد صاحب ومولانارئیس الدین صاحب نے اس جگہ جانے کی اجازت طلب کی حضرت نے انکارکردیا تو انہوں نے جوازپردلائل پیش کئے جن کوسماعت کرکے فرمایا کہ ظلمت کی جگہ جانا ہی جائزنہیں ہے دونوںنے سکوت اختیارکیا بعدہ واپسی کاارادہ کیا درمیان سفرکسی جگہ کچھ اشیاء خریدنے لگے تو ایک سکھ نے حضر ت کو دیکھ کر بڑی مہمان نوازی کی جس سے تذکرہ ہونے لگاکہ کرامت ہے چونکہ ناواقف شخص تھا بعدہ ٗ مدرسہ تشریف لائے دفترمیں آپ نے غسل کرنے کاارادہ کیا ،صابون تولیہ وگھڑابھرکررکھ دیاگیا پھر حضرت کو پان دیدیاگیا تو حضرت نے فرمایاکہ صابون تولیہ لے آؤتاکہ میری وجہ سے کسی کوگراں نہ ہوجو آئے غسل کرسکے پریشان نہ ہو۔
 
Top