مولانااطہرحسینؒ

مفتی ناصرمظاہری

کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی
رکن
مولانااطہرحسینؒ:روحانی باتیں،نورانی تذکرے
احقرنے عرض کیاکہ حضرت حکیم الامت مجددالملت تھانویؒدارالعلوم دیوبندسے فارغ تھے ان کی ہزاروں کتابوں میں سے جومقبولیت ’’بہشتی زیور‘‘کوحاصل ہے اس کی نظیرنہیں ملتی ،اسی طرح قطب الاقطاب حضرت مولانا حضرت مولانامحمدزکریاکاندھلوی مہاجرمدنیؒمظاہرعلوم سے فارغ تھے ان کی بھی ایک کتاب ’’فضائل اعمال‘‘کوعلمی اورعوامی سطح پرجومقبولیت حاصل ہے وہ بھی بے نظیرہے،فرمایاکہ اوراسی طرح ندوۃ العلماء کے نامورفاضل حضرت مولاناسیدابوالحسن علی حسنی ندوی کی عربی کتاب’’ماذاخسرالعالم بانحطاط المسلمین‘‘کوہرطبقہ نے جس طرح پسندیدگی کی نظرسے دیکھااس کی بھی نظیرنہیں ملتی ،چنانچہ ان تینوں کتابوں کے دنیاکی مختلف زبانوں میں تراجم شائع ہورہے ہیں،فضائل اعمال دنیاکی سوسے زائدزبانوں میں الحمدللہ شائع ہوچکی ہے۔اسی ذیل میں فرمایاکہ فضائل اعمال کااصل نام ’’تبلیغی نصاب‘‘حضرت ؒنے رکھاتھابعدمیں ان کے متعلقین نے’’ فضائل اعمال‘‘نام رکھ دیاجواصل میں میرے ایک کتابچہ کاپہلے ہی سے نام تھاجس کااردونام ’’بخشش کے وعدے‘‘ہے،یہ کتاب حضرت کی حیات میں ہی شائع ہوچکی تھی۔
 
Top