دنگ ہے حسن

سارہ خان

وفقہ اللہ
رکن
ہ کو ٹھی یہ بنگلہ یہ مال ودولت
یہ ہی رہ گئی اب امنگ ہے حسن
ہر کوئی مست ملنگ ہے حسن
احساس کی دیوار گرادی سب نے
ہر کوئی یہاں پہ تنگ ہے حسن
اپنی اپنی سوچ و فکر ہے سب کی
اپنی اپنی سب کی ترنگ ہے حسن
کیوں آتا ہے تو اس کے پاس روز
اس کے ہاتھوں میں سنگ ہے حسن
یہ الفت یہ محبت یہ شعرو شاعری
یہ خود اپنے آپ سے جنگ ہے حسن
نہ جانے کہاں کٹ کر گر جاے
یہ زندگی بھی اک پتنگ ہے حسن
ہم تو جیتے ہیں اپنی مرضی سے
اس لئے یہ دنیا دنگ ہے حسن​
حسن خان کی ڈائری کا ایک ورق شاعر حسن خان 2010 جنوری 5
 

بنت حوا

فعال رکن
وی آئی پی ممبر
نہ جانے کہاں کٹ کر گر جاے
یہ زندگی بھی اک پتنگ ہے حسن
ہم تو جیتے ہیں اپنی مرضی سے
اس لئے یہ دنیا دنگ ہے حسن
 

مفتی ناصرمظاہری

کامیابی توکام سے ہوگی نہ کہ حسن کلام سے ہوگی
رکن
احساس کی دیوار گرادی سب نے
ہر کوئی یہاں پہ تنگ ہے حسن
تنگ نہیں بلکہ جنگ ہے حسن،ننگ ہے حسن،پلنگ(پ کے زیرکے ساتہ)ہے حسن۔؟؟؟؟؟
 
Top